ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

اب مدرسہ تعلیم میں تبدیلی کی تیاری میں مرکزی حکومت ، بورڈ سے منظوری لینا ہوگا لازمی

فروغ انسانی وسائل کی وزارت مدرسہ تعلیم میں تبدیلی کے منصوبہ پر غور و خوض کررہی ہے۔ اس کے پیچھے وزارت کا مقصد مدارس میں پڑھنے والے طلبہ کو اچھی معیار ی تعلیم فراہم کرنا ہے۔

  • Share this:
اب مدرسہ تعلیم میں تبدیلی کی تیاری میں مرکزی حکومت ، بورڈ سے منظوری لینا ہوگا لازمی
علامتی تصویر ۔ پی ٹی آئی ۔

فروغ انسانی وسائل کی وزارت مدرسہ تعلیم میں تبدیلی کے منصوبہ پر غور و خوض کررہی ہے۔ اس کے پیچھے وزارت کا مقصد مدارس میں پڑھنے والے طلبہ کو اچھی معیار ی تعلیم فراہم کرنا ہے۔ اس منصوبہ کے تحت تعلیمی اداروں کا مدرسہ بورڈ یا پھر اسٹیٹ بورڈ سے الحاق ضروری ہوگا۔

ایچ آر ڈی سے وابستہ ذرائع کے مطابق ریاستی حکومتوں نے اس سلسلہ میں تجاویز بھیج دی ہیں ، جن کا مطالعہ کیا جارہا ہے۔ یہ تجاویز اس منصوبہ کیلئے مقرر کئے گئے پلان پر مبنی ہیں ۔

ذرائع نے بتایا کہ ایس پی کیو ای ایم کا مقصد مدرسہ تعلیم میں اصلاح کرنا ہے اور وہاں زیر تعلیم طلبہ کو ملک کے دیگر طلبہ کی طرح رسمی موضوعات کی تعلیم دینا ہے۔ حکومت کا منصوبہ ہے کہ تعلیمی اداروں کے مدرسہ بورڈ اور اسٹیٹ اسکول بورڈ سے الحاق کو لازمی بنایا جائے ۔

اس تبدیلی کے تحت جی پی ایس کی مدد سے حکومت ملک بھر میں مدارس کی نشاندہی بھی کرے گی ۔ ذرائع نے بتایا کہ اس کیلئے وزارت مدارس کیلئے یونیک آڈینٹیفکیشن کو لازمی بنانے کا منصوبہ بنارہی ہے ، تاکہ جی پی ایس کی مدد سے ان کی لوکیشن کو آسانی کے ساتھ ٹریس کیا جاسکے۔

نیوز 18 ڈاٹ کام کو موصولہ اطلاعات کے مطابق گزشتہ سال وزارت نے ایس پی کیو ای ایم کے تحت آنے والے مدارس سے اپنی جی پی ایس لوکیشن شیئر کرنے کیلئے کہا تھا اور جن مدارس نے جی پی ایس تفصیلات نہیں دی تھیں ، ان کے اساتذہ کی تنخواہیں  روک دی گئی تھیں۔


ارم آغا کی رپورٹ ۔ 
First published: Jun 25, 2018 05:53 PM IST