ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

وزیر اعظم مودی سے ملاقات کے بعد اے ایم یو کے مسائل جلد حل ہونے کی امید

الہ آباد : علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے اقلیتی کردار اور اس کی شاخوں کے تعلق سے پیدا شدہ مسائل کو لے کر یونیورسٹی کے ذمہ دران کی وزیر اعظم سے ملا قات کے بعد ایک امید پیدا ہوئی ہے ۔ یونیورسٹی کے ذمہ داران کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی نے اے ایم یو کے مسائل کو غور سے سنا اور انہوں نے جلد ہی اس مسئلے کو حل کرنے یقین دہانی کرائی ہے ۔

  • ETV
  • Last Updated: Mar 07, 2016 06:15 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
وزیر اعظم مودی سے ملاقات کے بعد اے ایم یو کے مسائل جلد حل ہونے کی امید
الہ آباد : علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے اقلیتی کردار اور اس کی شاخوں کے تعلق سے پیدا شدہ مسائل کو لے کر یونیورسٹی کے ذمہ دران کی وزیر اعظم سے ملا قات کے بعد ایک امید پیدا ہوئی ہے ۔ یونیورسٹی کے ذمہ داران کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی نے اے ایم یو کے مسائل کو غور سے سنا اور انہوں نے جلد ہی اس مسئلے کو حل کرنے یقین دہانی کرائی ہے ۔

الہ آباد : علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے اقلیتی کردار اور اس کی شاخوں کے تعلق سے پیدا شدہ مسائل کو لے کر یونیورسٹی کے ذمہ دران کی وزیر اعظم سے ملا قات کے بعد ایک امید پیدا ہوئی ہے ۔ یونیورسٹی کے ذمہ داران کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی نے اے ایم یو کے مسائل کو غور سے سنا اور انہوں نے جلد ہی اس مسئلے کو حل کرنے یقین دہانی کرائی ہے ۔

الہ آباد میں منعقدہ ایک تعلیمی پرو گرام میں شرکت کرنے آئےعلی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے پرو وائس چانسلر سید احمد علی نے اے ایم یو کے مسائل جلد حل ہونے کی امید ظاہر کی ۔ احمد علی کا کہنا تھا کہ وزیراعظم سے یونیورسٹی کے ذمہ داران کی ملا قات کے بعد سے کافی امیدیں وابستہ ہو گئی ہیں۔

حکومت کی طرف سے اے ایم یو کی شاخوں کو غیر قانونی قراردینے کے مسئلے پر سید احمد علی کا کہنا تھا کہ اے ایم یو کی شاخوں کا قیام صدر جمہوریہ کی منظوری کے بعد عمل میں آیا تھا ۔ ان کہنا ہے کہ اگر حکومت نے اے ایم یو کی شاخوں کی تعمیر کے لئے فنڈ فراہم نہ کیا ، تو اس کی توسیع کا پوار منصوبہ تعطل کا شکار ہو جائے گا۔

اے ایم یو کے تعلق سے مرکزی حکومت کے حالیہ رویے سے مسلمانوں خاص طور سے علیگ برادری میں سخت تشویش پیدا ہو گئی ہے ۔لیکن اے ایم یو کے ذمہ داروں کی وزیر اعظم کی ملاقات سے مسلم یونیورسٹی کے مسائل حل ہونے کی امید پیدا ہو گئی ہے ۔

First published: Mar 07, 2016 06:15 PM IST