உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہشت گرد مسعود اظہر کے معاملہ پر ہندوستان نے چین کی قیادت کو دیا دو ٹوک جواب

    نئی دہلی: ہندستان نے پاکستان کے ساتھ تعلقات میں دہشت گردی کو اہم موضوع بتاتے ہوئے کہا ہے کہ اس نے جیش محمد کے سرغنہ مولانا مسعود اظہر پر پابندی لگانے کی تجویز پر چین کے ویٹو کے فیصلہ کو اس کی قیادت کے سامنے اعلی سطح پر اٹھایا ہے۔

    نئی دہلی: ہندستان نے پاکستان کے ساتھ تعلقات میں دہشت گردی کو اہم موضوع بتاتے ہوئے کہا ہے کہ اس نے جیش محمد کے سرغنہ مولانا مسعود اظہر پر پابندی لگانے کی تجویز پر چین کے ویٹو کے فیصلہ کو اس کی قیادت کے سامنے اعلی سطح پر اٹھایا ہے۔

    نئی دہلی: ہندستان نے پاکستان کے ساتھ تعلقات میں دہشت گردی کو اہم موضوع بتاتے ہوئے کہا ہے کہ اس نے جیش محمد کے سرغنہ مولانا مسعود اظہر پر پابندی لگانے کی تجویز پر چین کے ویٹو کے فیصلہ کو اس کی قیادت کے سامنے اعلی سطح پر اٹھایا ہے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی: ہندستان نے پاکستان کے ساتھ تعلقات میں دہشت گردی کو اہم موضوع بتاتے ہوئے کہا ہے کہ اس نے جیش محمد کے سرغنہ مولانا مسعود اظہر پر پابندی لگانے کی تجویز پر چین کے ویٹو کے فیصلہ کو اس کی قیادت کے سامنے اعلی سطح پر اٹھایا ہے۔
      خارجہ سکریٹری ایس جے شنکر نے کارینگی انڈیا کے افتتاح کے موقع پرکہا کہ پاکستان اپنے آپ میں ایک الگ زمرہ ہے۔ ہمیں اس کے ساتھ رشتوں میں تمام الجھنوں کے باوجود اپنی تمام تر توجہ دہشت گردی پر ہی قائم رکھی ہے جب تک ہم دہشت گردی کا مسئلہ نہیں سلجھا لیتے تب تک یہ کہنا مشکل ہے کہ پاکستان کے ساتھ تعلقات معمول پر آسکتے ہیں۔ ڈاکٹر جے شنکر نے کہا کہ دہشت گردی جیسے پیچیدہ معاملہ پر بین الاقوامی عام رائے بنانا ایک کٹھن امتحان ہے اور اس کے نتیجہ کا انتظار ہے۔
      پٹھان کوٹ حملہ کے سازشی اور جیش محمد کے سرغنہ مسعود اظہر پر پابندی لگانے سے متعلق اقوام متحدہ سلامتی کونسل کی تجویز پر چین کے ویٹو کا ذکر آنے پر خارجہ سکریٹری نے کہا کہ ہندوستان نے اس معاملہ کو اعلی سطح پر اٹھایا ہے اور کارینگی انڈیا کے قیام کو سراہتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس کے توسط سے مشترکہ مقاصد حاصل کرنے کی کوشش کی جائے گی۔ ہندوستانی سفارتکاری کامقصد اپنے اہم شریکوں کو یہ باور کرانا ہے کہ ہندوستانی معیشت کے استحکام میں ہی ان کے سفارتی مفادات ہیں۔ ہمارے دو طرفہ تعلقات کے بڑھتے دائروں نے ہندوستان کے وقار اور اعتبار کو مضبوط کیا ہے۔
      First published: