ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ہندستان۔ چین تنازعہ: لداخ میں ہند۔ چین کی فوجیں پیچھے ہٹیں گی: ذرائع

فوج سے منسلک ذرائع نے بتایا کہ کارپس کمانڈر کی سطح کی بات چیت کے بعد لداخ کی گلوان وادی میں ایک عام رضامندی بن گئی ہے۔

  • Share this:
ہندستان۔ چین تنازعہ: لداخ میں ہند۔ چین کی فوجیں پیچھے ہٹیں گی: ذرائع
ہندستان۔ چین تنازعہ: لداخ میں ہند۔ چین کی فوجیں پیچھے ہٹیں گی: ذرائع

نئی دہلی۔ ہندستان۔ چین  (India-China Faceoff) کے درمیان 22 جون کو ہوئی لیفٹننٹ سطح کی بات چیت کامیاب رہی۔ ہندستانی فوج (Indian Army) کے ذرائع نے جانکاری دی ہے کہ اس بات چیت کے بعد دونوں ملکوں میں اپنی فوجیں واپس بلانے پر اتفاق رائے ہو گیا ہے۔ فوج نے کہا کہ یہ بات چیت بہت ہی مثبت اور بہتر ماحول میں ہوئی۔


فوج سے منسلک ذرائع نے بتایا کہ کارپس کمانڈر کی سطح کی بات چیت کے بعد لداخ کی گلوان وادی میں ایک عام رضامندی بن گئی ہے۔ متنازعہ زمین سے دونوں ملکوں کی افواج کی واپسی کے طور طریقے پر بات چیت ہوئی۔ جس کے بعد فیصلہ کیا گیا کہ مشرقی لداخ کی جھڑپ والی جگہ سے دونوں فوجیں پیچھے ہٹیں گی۔


مشرقی لداخ میں چوشل سیکٹر کے چینی حصے میں واقع مولڈو میں پیر کی صبح تقریبا 11:30 بجے یہ میٹنگ شروع ہوئی تھی۔ یہ میٹنگ بارہ گھنٹے تک چلی۔ اس میں ملک کی اعلیٰ فوجی قیادت نے مشرقی لداخ میں صورت حال کا تفصیلی جائزہ لیا۔ مولڈو میں ہوئی بات چیت میں ہندستانی فریق کی قیادت 14 ویں کور کے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل ہریندر سنگھ نے کی جبکہ چینی فریق کی قیادت تبت ملٹری ڈسٹرکٹ کے کمانڈر کر رہے تھے۔


ہندستان اور چین کی افواج کے درمیان ایل اے سی پر پندرہ جون کی رات پرتشدد جھڑپ ہوئی تھی جس میں 20 ہندستانی جوان شہید ہو گئے تھے۔ رپورٹ کے مطابق، اس جھڑپ میں چین کے بھی 35 سے زیادہ فوجی مارے گئے ہیں۔ حالانکہ، چین نے ابھی تک اپنے مارے گئے فوجیوں کی تعداد نہین بتائی ہے۔

اس بیچ فوجی سربراہ جنرل منوج مکند نروانے منگل کو لیہہ کے دورے پر ہیں۔ جنرل نروانے یہاں زمینی سطح پر سرحد کی سیکورٹی کا جائزہ لیں گے۔ ساتھ ہی فوج کی 14 کور کے افسروں کے ساتھ ہوئی میٹنگ کی پیش رفت کو لے کر تبادلہ خیال کریں گے۔
First published: Jun 23, 2020 01:45 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading