ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ہندوستانی فوجیوں نے 3 کلومیٹر اندر گھس کر 30 دہشت گردوں کو مار گرایا

ہندوستانی فوج نے پاک مقبوضہ کشمیر میں تین کلومیٹر اندر گھس کر پانچ اڈوں پر چار گھنٹےکی محدود فوجی کارروائی کرکے کم از کم 30 دہشت گردوں کو ہلاک کردیا ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Sep 29, 2016 04:11 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ہندوستانی فوجیوں نے 3 کلومیٹر اندر گھس کر 30 دہشت گردوں کو مار گرایا
فائل تصویر

نئی دہلی۔  ہندوستانی فوج نے جموں و کشمیر میں کنٹرول لائن کے پار پاک مقبوضہ کشمیر میں تین کلومیٹر اندر گھس کر پانچ اڈوں پر چار گھنٹےکی محدود فوجی کارروائی کرکے کم از کم 30 دہشت گردوں کو ہلاک کردیا ہے۔ فوجی ذرائع نے کل رات ہوئی اس فوجی کارروائی کے بارے میں اطلاع دی کہ اس کارروائی کو رات ساڑھے 12 بجے سے لے کر آج علی الصبح ساڑھے چار بجے کے دوران انجام دیا گیا۔ اس دوران فوج کی اسپیشل فورسیز کی کمانڈو ٹیموں نے پانچ جگہوں پر ہیلی کاپٹر کی مدد سے کنٹرول لائن پار کرکے دہشت گردی کے پانچ لانچ پیڈ پر حملہ کیا۔


ذرائع نے بتایا کہ دنیا کے بہترین کمانڈو کے ذریعہ کی گئی اس کارروائی میں کم از کم 30 سے 35 دہشت گرد اور ان کی مدد کرنے والے لوگ مارے گئے ہیں۔ یہ لانچ پیڈ کنٹرول لائن کے پار پاک مقبوضہ کشمیر میں نصف کلومیٹر سے تین کلومیٹر تک اندر تھے۔ کارروائی میں کئی دہشت گرد تنظیموں کے یہ لانچ پیڈ تباہ ہوگئے ہیں۔


ذرائع نے بتایا کہ یہ کارروائی مکمل طور پر خفیہ رہی اور تمام ہندوستانی کمانڈوز بحفاظت اپنے وطن واپس آگئے۔ کوئی بھی جوان ہلاک نہیں ہوا ہے۔ اس سے قبل فوجی آپریشن ڈائریکٹر جنرل لیفٹیننٹ جنرل رنبیر سنگھ نے وزارت خارجہ کے ترجمان کے ساتھ ایک پریس کانفرنس میں اس محدود کارروائی کے بارے میں اطلاع دیتے ہوئے کہا کہ ہمیں کل بہت پختہ اور خاص اطلاع ملی کہ کچھ دہشت گرد ٹیم کنٹرول لائن کے پاس لانچ پیڈ پر ہندستان میں دراندازی اور جموں و کشمیر اور ملک کے مختلف شہروں میں دہشت گردانہ حملے کے لیے تیار بیٹھے ہیں۔ ہندستانی فوج نے کل رات ان لانچ پیڈ پر محدود فوجی کارروائی کی ہے۔

لیفٹیننٹ جنرل سنگھ نے کہا کہ اس کارروائی کا مقصد ان دہشت گردوں کے ناپاک عزائم کو ناکام کرنا تھا جو ہندوستانی شہریوں کے جان و مال کو نقصان پہنچانا چاہتے تھے۔اس مہم میں بڑی تعداد میں دہشت گرد اور ان کی مدد کرنے والوں کو نقصان پہنچا ہے۔اس طرح کی مہم جاری رکھنے کا ہمارا کوئی ارادہ نہیں ہے۔ تاہم ہمارے فوجی کسی بھی ہنگامی صورت حال سے نمٹنے کے لیے مکمل طور پر تیار ہیں۔

First published: Sep 29, 2016 04:00 PM IST