உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    India-China Standoff : پینگونگ تسو جھیل کے نزدیک فنگر چار پر پہنچی ہندوستانی فوج : ذرائع

    India-China Standoff : پینگونگ تسو جھیل کے نزدیک فنگر چار پر پہنچی ہندوستانی فوج : ذرائع

    India-China Standoff : پینگونگ تسو جھیل کے نزدیک فنگر چار پر پہنچی ہندوستانی فوج : ذرائع

    India-China Standoff : ذرائع نے بتایا کہ اگست کے آخر میں پینگونگ تسو جھیل کے جنوبی کنارے کے پاس اونچائیوں پر قبضہ کرنے کیلئے یہ آپریشن کئے گئے تھے ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      مشرقی لداخ میں ہندوستان اور چین کے مابین جاری کشیدگی کے درمیان ایک اچھی خبر آئی ہے ۔ ہندوستانی فوج نے پینگونگ تسو جھیل کے کنارے فنگر چار پر چینی فوج کی صورتحال کو دیکھتے ہوئے اونچائیوں پر قبضہ کرلیا ہے ۔ ذرائع کے حوالے سے اس بات کی جانکاری ملی ہے ۔ ذرائع نے بتایا کہ اگست کے آخر میں پینگونگ تسو جھیل کے جنوبی کنارے کے پاس اونچائیوں پر قبضہ کرنے کیلئے یہ آپریشن کئے گئے تھے ۔

      ہندوستانی فوج کے ذرائع نے جانکاری دی ہے کہ ہندوستان اور چین کی افواج نے آج مشرقی لداخ میں بریگیڈ کمانڈر سطح اور کمانڈنگ افسر سطح پر بات چیت کی ۔ بات چیت کا مقصد دونوں فریقوں کے درمیان بات چیت کے راستہ کو کھلا رکھنا ہے ۔ یہ خبر ایسے وقت میں آئی ہے جب ماسکو میں وزیر خارجہ ایس جے شنکرنے اپنے چینی ہم منصب وانگ یی سے بات چیت کی ۔ ایل اے سی کے پاس ہندوستان اور چین کی افواج کے درمیان جھڑپ کے بعد مشرقی لداخ میں سرحد پر کشیدگی کے پیش نظر دونوں وزرائے خارجہ میں بات چیت ہوئی ۔

      غور طلب ہے کہ ہندوستان نے منگل کو کہا تھا کہ چھڑ ، بھالے اور راڈ وغیرہ سے لیس چینی فوجیوں نے مشرقی لداخ میں ریزانگ لا رج لائن کے مکھپاری علاقہ میں واقع ایک ہندوستانی ٹھکانے کی جانب پیر کی شام کو جارحانہ طور پر بڑھنے کی کوشش کی اور ہوا میں گولیاں چلائیں ۔ سرحد پر جاری کشیدگی کے درمیان ایل اے سی پر 45 سال میں پہلی مرتبہ ایسا ہوا ہے جب آتشی اسلحوں کا استعمال کیا گیا ۔

      ایل اے سی پر کشیدگی بڑھنے کے درمیان ذرائع نے کہا کہ چین کی پیپلز لبریشن آرمی کے تقریبا پچاس ساٹھ فوجی پیر کی شام کو تقریبا چھ بجے پینگونگ جھیل علاقہ کے جنوبی ساحل پر واقع ہندوستانی چوکی کی جانب بڑھے ، لیکن وہاں تعینات ہندوستانی فوج کے جوانوں نے پورے حوصلے کے ساتھ ان کا مقابلہ کیا اور انہیں پیچھے ہٹنے پر مجبور کردیا ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: