உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کوئی بھی ہندوستانی ڈرون انڈسٹری 120 کروڑروپےکی PLI اسکیم کیلئےدے سکتی ہیں درخواست، کیا ملے گا فائدہ؟

    مستقل میں ڈرون کی سپلائی مقامی ماحولیاتی نظام پر انحصار کرنے والی ہے۔

    مستقل میں ڈرون کی سپلائی مقامی ماحولیاتی نظام پر انحصار کرنے والی ہے۔

    حکومت ڈرون انڈسٹری کو مستقبل میں آمدنی کے ایک اور ذریعہ کے طور پر دیکھتی ہے اور مقامی صنعتوں کے قیام کی وجہ سے اس شعبے کی ترقی میں ایک طویل سفر طے کرنا آسان ہوجائے گا۔ وزارت نے پہلے ہی ڈرون کی درآمد کے ساتھ ساتھ برانڈز کے لیے ڈرون کے پرزہ جات میں رکاوٹیں کھڑی کر دی ہیں۔

    • Share this:
      ہندوستانی حکومت اب ملک کی ڈرون صنعت (drone industry) میں فعال شرکت کی خواہاں ہے اور وہ چاہتی ہے کہ کمپنیاں اس کی خصوصی پیداوار سے منسلک مراعات یا PLI اسکیم کے لیے درخواست دیں جس کا اعلان گزشتہ سال ستمبر میں کیا گیا تھا۔ اس اسکیم سے ڈرون کمپنیوں کو 120 کروڑ روپے کی کل ترغیب حاصل کرنے کا موقع مل رہا ہے جو تین مالی سال کی مدت میں احاطہ کرتا ہے۔ اس کے علاوہ اہم بات یہ ہے کہ ترغیبی فوائد آسانی سے ہندوستانی ڈرون مینوفیکچرنگ سیٹ اپ سے حاصل ہونے والی مجموعی آمدنی کو پیچھے چھوڑ دیتے ہیں۔

      جیسا کہ حکومت نے اپنے بیان میں وضاحت کی ہے کہ ایک مینوفیکچرر کے لیے PLI کل سالانہ اخراجات کے 25 فیصد تک محدود ہوگا۔ بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ قیمت میں اضافے کا حساب ڈرون اور ڈرون اجزا (جی ایس ٹی کے نیٹ) سے ڈرون اور ڈرون اجزاء کی خریداری کی لاگت (جی ایس ٹی کا نیٹ) سے ہونے والی سالانہ فروخت آمدنی کے طور پر لگایا جائے گا۔ اس میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ ڈرون اور ڈرون کے اجزا کی خالص فروخت کے 40 فیصد پر کم از کم ویلیو ایڈیشن کا اصول 50 فیصد کے بجائے، ڈرون کے لیے ایک غیر معمولی علاج ہے۔

      ملازمین کیلئے DA میں اضافہ، اگلے ہفتے فیصلہ ہونے کا امکان، کتنی تنخواہ میں کتنا ہوگااضافہ؟



      حکومت ڈرون انڈسٹری کو مستقبل میں آمدنی کے ایک اور ذریعہ کے طور پر دیکھتی ہے اور مقامی صنعتوں کے قیام کی وجہ سے اس شعبے کی ترقی میں ایک طویل سفر طے کرنا آسان ہوجائے گا۔ وزارت نے پہلے ہی ڈرون کی درآمد کے ساتھ ساتھ برانڈز کے لیے ڈرون کے پرزہ جات میں رکاوٹیں کھڑی کر دی ہیں اور دفاع جیسے خصوصی اداروں کے علاوہ ڈرون کی سپلائی مقامی ماحولیاتی نظام پر انحصار کرنے والی ہے۔

      UP Election Result 2022: مسلم علاقوں میں بھی بی جے پی نے کیا بہترین مظاہرہ، جانیں کہاں کسے ملی جیت



      حکومت ڈرون انڈسٹری کو مستقبل میں آمدنی کے ایک اور ذریعہ کے طور پر دیکھتی ہے اور مقامی کمپنیوں کا قیام اس شعبے کی ترقی میں ایک طویل سفر طے کرتا ہے۔ وزارت نے پہلے ہی ڈرون کی درآمد کے ساتھ ساتھ برانڈز کے لیے ڈرون کے پرزہ جات میں رکاوٹیں کھڑی کر دی ہیں۔ اس کے علاوہ دفاع جیسے خصوصی اداروں کے علاوہ ڈرون کی سپلائی مقامی ماحولیاتی نظام پر انحصار کرنے والی ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: