ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

جیلوں میں بند ہندوستانی قیدیوں کی تصدیق کرنے سے پاکستان کا انکار

پاکستانی حکومت اپنی جیلوں میں قید ہندوستانی شہریوں کی تصدیق کے لیے دو طرفہ رضامندی کے تحت حکومت ہند کی مشترکہ تصدیق کی اجازت نہیں دے رہی ہے اور نہ( نہ) ہی وہ 54 جنگی قیدیوں سمیت 74 لاپتہ ہندوستانی سیکورٹی فورس کی پاکستان میں ہونے کی بات قبول کر رہی ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Dec 07, 2016 05:44 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
جیلوں میں بند ہندوستانی قیدیوں کی تصدیق کرنے سے پاکستان کا انکار
پاکستانی حکومت اپنی جیلوں میں قید ہندوستانی شہریوں کی تصدیق کے لیے دو طرفہ رضامندی کے تحت حکومت ہند کی مشترکہ تصدیق کی اجازت نہیں دے رہی ہے اور نہ( نہ) ہی وہ 54 جنگی قیدیوں سمیت 74 لاپتہ ہندوستانی سیکورٹی فورس کی پاکستان میں ہونے کی بات قبول کر رہی ہے۔

نئی دہلی : پاکستانی حکومت اپنی جیلوں میں قید ہندوستانی شہریوں کی تصدیق کے لیے دو طرفہ رضامندی کے تحت حکومت ہند کی مشترکہ تصدیق کی اجازت نہیں دے رہی ہے اور نہ( نہ) ہی وہ 54 جنگی قیدیوں سمیت 74 لاپتہ ہندوستانی سیکورٹی فورس کی پاکستان میں ہونے کی بات قبول کر رہی ہے۔ خارجہ امور کے وزیر مملکت جنرل (ریٹائرڈ) وی کے سنگھ نے لوک سبھا میں وقفہ سوال کے دوران ایک سوال کے جواب میں کہا کہ اس وقت پاکستانی جیلوں میں 57 ہندوستانی سول قیدی بند ہیں جن میں سے تین قیدیوں کے بارے میں ابھی پاکستان نے تصدیق نہیں کی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ ایک اور معاہدے میں دونوں ممالک نے ایک دوسرے کی اپنی اپنی جیلوں کے معائنے کی اجازت دی ہے۔ ہندوستان نے اپنی جیلوں کا پاکستانی وفد سے معائنہ کرا لیا ہے لیکن کئی بار کی درخواست کرنے کے باوجود حکومت پاکستان نے اجازت نہیں دی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ہندوستان کے 54 قیدی سمیت 74 شہری سرحد پار لاپتہ ہوئے ہیں لیکن حکومت پاکستان ان کے اپنے یہاں ہونے کی بات قبول نہیں کر رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ پڑوسی ملک سرحد پر اچانک دوسری طرف چلے جانے کو انسانی غلطی کی بجائے سازش کے طور پر دیکھتا ہے۔ اسی طرح سے ماہی گیروں کی سمندر میں اچھی مچھلی کے لالچ میں آبی حدود پار کرکے جانے پر پکڑ لیا جاتا ہے۔ اس کا پتہ کافی دیر سے چل پاتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہندوستان اور پاکستان کے درمیان تعلقات میں تعطل آنے کے باوجود قیدیوں کے سلسلے میں دو طرفہ سمجھوتہ ٹھیک طرح سے کام کر رہا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ سال 2016 میں ہندوستان نے پاکستان کے 10 سول قیدیوں اور نو ماہی گیروں کو رہا کیا ہے جبکہ پاکستان نے 190 ماہی گیروں اور دو سول قیدیوں کو رہا کیا ہے۔ یکم جولائی کی صورت حال کے مطابق ہندوستانی جیلوں میں پاکستان کے 270 سول قیدی اور 37 ماہی گیر بند ہیں ۔

جنرل سنگھ نے کہا کہ پاکستان اور ہندوستان کے ماہی گیروں کے ایک دوسرے کے سکیورٹی اہلکار کی طرف سے پکڑے جانے کے سلسلے میں اس سال ہندوستانی کوسٹ گارڈ اور پاکستانی میري ٹائم فورس کے درمیان ایک مذاکراتی میٹنگ منعقد کی گئی تھی۔ اس کا فائدہ ہوا ہے۔

First published: Dec 07, 2016 05:44 PM IST