ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ہندوستان کے کیف علی  کو کووڈ 19 انوویشن کیلئے ملا ” ڈائنا ایوارڈ 2021“، نائیجیریا میں ہورہاہے ڈیزائن کا استعمال

کیف کے مطابق ان کا ڈیزائن لاگوس،نائیجیریا میں لاگو کیا جارہاہے ، حکومت ہند، دولت مشترکہ اور اقوام متحدہ اس کی ستائش کررہی ہے اور یہ آب وہوا سے متعلق مسائل کو حل کرنے کے چوٹی کے گیارہ (۱۱) ابھرتے ہ

  • Share this:
ہندوستان کے کیف علی  کو کووڈ 19 انوویشن کیلئے ملا ” ڈائنا ایوارڈ 2021“، نائیجیریا میں ہورہاہے ڈیزائن کا استعمال
کیف کے مطابق ان کا ڈیزائن لاگوس،نائیجیریا میں لاگو کیا جارہاہے ، حکومت ہند، دولت مشترکہ اور اقوام متحدہ اس کی ستائش کررہی ہے اور یہ آب وہوا سے متعلق مسائل کو حل کرنے کے چوٹی کے گیارہ (۱۱) ابھرتے ہ

ہندوستان کے کیف علی کو انوویشن کے میدان میں کرونا وائرس کی روک تھام کے لیے بہترین ڈیزائن تیار کرنے کے لیے دنیا بھر میں معروف ڈائنا ایوارذ2021سے نوازا گیا ہے۔ بیچلر آف آرکیٹیکچر،جامعہ ملیہ اسلامیہ کے چوتھے سال کے طالب علم کیف علی کو کرونا وبا کی وجہ سے بدلتی دنیا میں ان کی اہم اور غیر معمولی تحقیقی خدمات ’Covid-91 Innovation Space Era" کے لیے ڈائنا ایوارڈ سے نوازا گیاہے۔ واضح رہے کہ یہ انعام ویلز کی شہزادی ڈائناکی یاد میں قائم ہوا تھا اور اسی نام کے عطیہ دہندہ ادارے کے زیر اہتمام دیا جاتاہے اور اسے ان کے دونوں لڑکوں ڈیوک آ ف کیمبرج اور ڈیوک آف سوسیکس کی حمایت حاصل ہے۔ یہ ایوارڈ سماجی کام اور انسانی خدمات کے لیے نوجوانوں کودیے جانے والے مؤقر ترین انعامات و اکرامات میں سے ایک ہے۔


شیخ الجامعہ پروفیسر نجمہ اختر نے اس کامیابی پر کیف علی کو مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ یونیورسٹی کو ان پر فخر ہے۔یہ انوویشن و اختراع اور نیا خیال وقت کی ضرورت کے مطابق ہے اس سے یہ بھی پتا چلتاہے کہ اپنی شناخت قائم کرنے کے لیے غیر روایتی انداز میں سوچنا ضروری ہے۔


گزشتہ سال جب کوڈ۔19 وبا نے سب کی توجہ اپنی طرف کھینچ لی تھی اس وقت کیف نے اس بات کی تحقیق شروع کی کہ بیماری کی روک تھام میں آرکیٹیکچر کس طرح معاون ہوسکتاہے۔اس سوال کے جواب کی تلاش میں انھوں نے پائدار پناہگاہ کے حصوں کا ڈیزائن بنایا جو وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے میں معاون ہی نہیں تھا بلکہ مستقبل میں دنیا بھر میں لوگوں کا گھر اور ٹھکانہ بھی بن سکتاہے۔


کیف کے مطابق ان کا ڈیزائن لاگوس،نائیجیریا میں لاگو کیا جارہاہے ، حکومت ہند، دولت مشترکہ اور اقوام متحدہ اس کی ستائش کررہی ہے اور یہ آب وہوا سے متعلق مسائل کو حل کرنے کے چوٹی کے گیارہ (۱۱) ابھرتے ہوئے اسٹارٹ اپس میں سے ایک ہے۔

کیف آرکیٹیکچر کی مدد سے بہتر دنیا کی تعمیر کے لیے پُر امید ہیں اور اقوام متحدہ کے دیرپا ترقی کے مقصد کے تئیں نئی نسل کے اپنے ساتھیوں کو تحریک اور حوصلہ دے رہے ہیں۔
Published by: Sana Naeem
First published: Jun 30, 2021 03:31 PM IST