உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مہنگائی کی بڑھتی مار! کیا RBI پھر اگست میں شرح سود میں کرے گا اضافہ ؟ جانئے تفصیلات

    آر بی آئی نے دسمبر 2020 میں HDFC بینک کے خلاف بھی ایسی ہی کارروائی کی-

    آر بی آئی نے دسمبر 2020 میں HDFC بینک کے خلاف بھی ایسی ہی کارروائی کی-

    انڈیا ریٹنگز اینڈ ریسرچ کے پرنسپل اکانومسٹ سنیل کمار سنہا نے کہا کہ اجناس کی قیمتیں حال ہی میں اپنی حالیہ قیمت سے نیچے آئی ہیں، اس سے افراط زر میں کمی آئے گی، لیکن روپے کی کمزوری ان فوائد کو ختم کر سکتی ہے۔

    • Share this:
      ہندوستان میں مہنگائی میں کمی کا رجحان ظاہر ہورہا ہے جس کے تازہ ترین جون کے اعداد و شمار پچھلے مہینے کے مقابلے میں قدرے کم آرہے ہیں، تجزیہ کاروں کا خیال ہے کہ ریزرو بینک آف انڈیا (RBI) کی جانب سے مانیٹری سختی جاری رکھنے اور اگلے ماہ شرح میں اضافے کی توقع ہے۔ افراط زر کی شرح اب بھی 6 فیصد کے ہدف سے اوپر ہے۔ جون میں خوردہ مہنگائی 7.01 فیصد رہی۔ یہ لگاتار چھٹواں مہینہ ہے، جب افراط زر آر بی آئی کی ہدف کی حد سے زیادہ رہا ہے۔

      بنیادی افراط زر جس میں خوراک اور ایندھن کے حصے شامل ہیں، یہ جون میں 6 فیصد رہی۔ جون میں اشیائے خوردونوش کی افراط زر 7.75 فیصد رہی جو کہ پچھلے مہینے میں 7.97 فیصد تھی۔ قومی شماریاتی دفتر (NSO) کے تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق مئی کے 18.26 فیصد سے ماہ کے دوران سبزیوں میں مہنگائی کی شرح کم ہو کر 17.37 فیصد ہو گئی۔ جب کہ 'دالیں اور مصنوعات' کے لیے یہ (-)0.42 فیصد کے مقابلے میں (-)1.02 فیصد پر آ گیا۔

      مزید پڑھیں: Gujarat:بھاری بارش کےسبب سیلاب جیسے حالات، اب تک 69کی موت، تصویروں میں دیکھئے تباہی کامنظر

      اپریل میں افراط زر کی شرح 7.79 فیصد تھی جو مئی میں گر کر 7.04 فیصد اور اب جون میں 7.01 فیصد پر آ گئی ہے۔

      مزید پڑھیں: ریا چکرورتی کی بڑھی مشکلیں، NCB نے لگایا الزام، اس معاملے میں بنایا ملزم

      انڈیا ریٹنگز اینڈ ریسرچ کے پرنسپل اکانومسٹ سنیل کمار سنہا نے کہا کہ اجناس کی قیمتیں حال ہی میں اپنی حالیہ قیمت سے نیچے آئی ہیں، اس سے افراط زر میں کمی آئے گی، لیکن روپے کی کمزوری ان فوائد کو ختم کر سکتی ہے۔ جولائی 2022 سے بنیادی اثر بھی ناگوار ہو جائے گا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: