உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    International Museum Day 2022: انڈین ریلوے کی کیسے ہوئی شروعات؟ جانیے 169 قدیم ریلوے کا سفر

    ہر سال 18 مئی کو عالمی یوم میوزیم منایا جاتا ہے۔

    ہر سال 18 مئی کو عالمی یوم میوزیم منایا جاتا ہے۔

    دہلی کے بعد ہندوستان میں قائم دوسرا ریلوے میوزیم میسور میں تھا۔ 1976 میں قائم ہونے والے میوزیم میں آسٹن ریل موٹر کار، بھاپ کا انجن، میسور کے مہاراجہ کے زیر استعمال شاہی ڈبے، سگنلنگ سسٹم، پینٹنگز اور ریلوے سے متعلق دیگر نمونے رکھے گئے ہیں۔ اس میں بیٹری سے چلنے والی کھلونا ٹرین ہے۔

    • Share this:
      عالمی یوم میوزیم 2022 (International Museum Day 2022): ہندوستانی ریلوے (Indian Railways) نے گزشتہ ماہ ملک کی خدمت کے 169 سال مکمل کر لیے ہیں۔ ہندوستان کی پہلی مسافر ٹرین 16 اپریل 1853 کو بوری بندر سے تھانے تک 34 کلومیٹر کا فاصلہ طے کرتی ہوئی چلی تھی۔ یہ ہندوستان کے لوگوں کے لیے ٹرانسپورٹ کے سب سے پسندیدہ طریقوں میں سے ایک ہے۔ قومی ٹرانسپورٹر صرف ریل نیٹ ورک نہیں ہے، بلکہ یادوں، کہانیوں اور ناقابل فراموش لمحات کا سفر ہے۔ ریلوے کا شاندار ورثہ ملک بھر کے مختلف عجائب گھروں میں اچھی طرح سے محفوظ ہے۔

      آج بین الاقوامی میوزیم ڈے پر یہاں کچھ عجائب گھروں پر ایک نظر ہے جو آپ کو ہندوستانی ریلوے کے 169 سال کے ورثے کا مشاہدہ کرنے کے لیے ضرور جانا چاہیے۔

      نیشنل ریل میوزیم، دہلی:

      دہلی کے نیشنل ریل میوزیم میں ہر سال 5 لاکھ سے زیادہ لوگ جاتے ہیں۔ اس میں ریلوے یارڈ کی ایک نقل ہے جس میں ایک آؤٹ ڈور گیلری ہے جس میں ڈیزل، بھاپ اور الیکٹرک انجن دکھائے گئے ہیں۔ نمائش میں ویگنیں، بکتر بند ٹرینیں، شاہی سیلون اور ریل کاریں بھی ہیں۔

      انڈور گیلری میں ایک انٹرایکٹو ڈسپلے بھی نقل و حمل کے ابتدائی طریقوں سے متعلق کہانیوں کی نمائش کرتا ہے۔ زائرین ٹرین/انجن سمیلیٹر کی سواریوں سے بھی لطف اندوز ہو سکتے ہیں۔

      میسور ریل میوزیم:

      دہلی کے بعد ہندوستان میں قائم دوسرا ریلوے میوزیم میسور میں تھا۔ 1976 میں قائم ہونے والے میوزیم میں آسٹن ریل موٹر کار، بھاپ کا انجن، میسور کے مہاراجہ کے زیر استعمال شاہی ڈبے، سگنلنگ سسٹم، پینٹنگز اور ریلوے سے متعلق دیگر نمونے رکھے گئے ہیں۔ اس میں بیٹری سے چلنے والی کھلونا ٹرین ہے۔

      چینائی ریل میوزیم:

      سال 2002 میں چینائی ریل میوزیم کا افتتاح کیا گیا، چینائی ریل میوزیم میں آزادی سے پہلے کے دور سے لے کر موجودہ جدید ترین انجنوں تک ٹرین کے انجنوں کا ایک مجموعہ موجود ہے۔ ونٹیج کوچز کے ساتھ، میوزیم میں ریل آرٹ ورک کی نمائش کرنے والی ایک وقف آرٹ گیلری ہے۔ زائرین کے لیے میوزیم میں ایک کھلونا ٹرین بھی ہے۔ ایک مائیکرو سٹیم انجن اور 1921 کا بنا ہوا آفس کم ہوم ریلوں پر پرکشش مقامات ہیں۔

      مزید ٖڑھیں: Wheat Export Ban:گیہوں کی برآمدات کھولنے کےلئے ہندوستان پر بڑھا دباؤ، یوروپ کے بعد امریکہ نے بھی کی درخواست

      نارو گیج ریل میوزیم، ناگپور:

      نارو گیج ریل میوزیم اورنج سٹی ناگپور کے آپ کے اگلے سفر پر ضرور جانا چاہیے۔ ڈسپلے پر ایک خوبصورت 1916 Bagnall بھاپ سے چلنے والا انجن ہے، کچھ خوبصورت پینٹنگز جو ہندوستانی ریلوے کے سفر کی نمائش کرتی ہیں اور ستاروں کی کشش ایک کھلونا ٹرین ہے جو میوزیم کے علاقے کو لے جاتی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:

      اقتصادی ترقی کی راہ پر مسلسل گامزن ہندوستان، GST سے ہونے والی آمدنی کا بڑھ رہا ہے دائرہ

      یہ سال 2007 میں کھولا گیا، میوزیم کی سب سے بڑی توجہ 1874 میں بنایا گیا لارڈ لارنس سٹیم انجن ہے۔ ایک گیلری جس میں کلکس، فرنیچر، لائبریری اور ریلوے کے عملے کی جانب سے ماضی سے لے کر حال تک پہنی جانے والی وردیوں کو دکھایا گیا ہے۔ اس میں ونٹیج انجن، آلات اور نادر دستاویزات بھی ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: