ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ممبئی حملوں کے سرغنہ حافظ سعید کا ٹوئٹر اکاؤنٹ آئی ایس آئی کرتی ہے ہینڈل

نئی دہلی : جواہر لال نہرو یونیورسٹی میں ملک مخالف نعروں کے پیچھے پاکستانی دہشت گرد سرغنہ حافظ سعید کی حمایت کے حکومت کے دعوے کے بعد اب انٹیلی جنس ایجنسیوں نے انکشاف کیا ہے کہ اس کے ٹوئٹ اکاؤنٹ کو پاکستان کی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی چلا رہی ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Feb 18, 2016 07:22 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ممبئی حملوں کے سرغنہ حافظ سعید کا ٹوئٹر اکاؤنٹ آئی ایس آئی کرتی ہے ہینڈل
نئی دہلی : جواہر لال نہرو یونیورسٹی میں ملک مخالف نعروں کے پیچھے پاکستانی دہشت گرد سرغنہ حافظ سعید کی حمایت کے حکومت کے دعوے کے بعد اب انٹیلی جنس ایجنسیوں نے انکشاف کیا ہے کہ اس کے ٹوئٹ اکاؤنٹ کو پاکستان کی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی چلا رہی ہے۔

نئی دہلی : جواہر لال نہرو یونیورسٹی میں ملک مخالف نعروں کے پیچھے پاکستانی دہشت گرد سرغنہ حافظ سعید کی حمایت کے حکومت کے دعوے کے بعد اب انٹیلی جنس ایجنسیوں نے انکشاف کیا ہے کہ اس کے ٹوئٹ اکاؤنٹ کو پاکستان کی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی چلا رہی ہے۔


انٹیلی جنس ایجنسیوں سے یہ معلومات حاصل کرنے کے بعد حکومت محتاط ہو گئی ہے اور وہ ٹوئٹر اور یو ٹیوب جیسی سوشل سائٹس سے حافظ سعید کے ٹوئٹ اکاؤنٹ اور یو ٹیوب پر ویڈیو کو بند کرنے کی درخواست کرے گی۔


ہندستانی ایجنسیوں کو پتہ چلا ہے کہ جواہر لال نہرو یونیورسٹی واقعات پر ملک میں اور دارالحکومت دہلی میں خاص طور پر جاری احتجاجی مظاہروں سے پیدا ماحول آئی ایس آئی کے لئے کافی سازگار ہے۔ وہ اس ماحول کا فائدہ اٹھا کر طالب علموں اور دوسرے لوگوں کے جذبات کو بھڑکانے میں مصروف ہے۔


ایجنسیوں کو ایک دلچسپ حقیقت کا پتہ چلا ہے کہ حافظ کے ٹویٹس ہندی میں کئے جا رہے ہیں تاکہ بڑی تعداد میں لوگوں تک بات پہنچائی جا سکے اور آئی ایس آئی کو اس کا فائدہ بھی ملا ہے۔ ایجنسیوں کے مطابق حافظ کے ٹوٹ پر کافی ردعمل ہو رہا ہے اور ان میں اس کے لئے مثبت رائے زیادہ ہیں۔ ذرائع کے مطابق حکومت حافظ کے ٹوئٹ اکاؤنٹ اور یو ٹیوب ویڈیو پر روک لگانے کے لئے متعلقہ کمپنیوں سے جلد درخواست کرنے والی ہے۔


واضح رہے کہ وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے جے این یو تنازع پر ایک اہم بیان دیتے ہوئے کہا تھا کہ اس واقعہ کو حافظ سعید کی حمایت حاصل ہے۔ اس بیان سے سیاسی حلقوں میں ہنگامہ مچ گیا اور اپوزیشن نے حکومت کو گھیرتے ہوئے کہا کہ یہ بہت سنگین معاملہ ہے اور اگر اس کے پاس کچھ ثبوت ہیں تو انہیں سامنے لایا جائے۔

First published: Feb 18, 2016 07:11 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading