ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

اب وقت آ گیا ہے کہ پانی کے تحفظ کو ہم اپنی روز مرہ زندگی کا ایک حصہ بنا لیں

ملک کے 15 سے زیادہ بڑے شہروں میں پہلے سے ہی پانی کی قلت کا مسئلہ درپیش ہے اور جس انداز میں ہم جارہے ہیں اس کی تعداد میں اضافہ ہوسکتا ہے۔ اس معاملے میں ہر قطرہ شمار ہوتا ہے اور ہر فرد کے اعمال شمار ہوتے ہیں۔

  • Share this:
اب وقت آ گیا ہے کہ پانی کے تحفظ کو ہم اپنی روز مرہ زندگی کا ایک حصہ بنا لیں
اب وقت آ گیا ہے کہ پانی کے تحفظ کو ہم اپنی روز مرہ زندگی کا ایک حصہ بنا لیں

ہم یہ بات کچھ عرصے سے سن رہے ہیں۔ بھارت تیزی سے ڈے زیرو کی طرف بڑھ رہا ہے: یعنی وہ دن جب ہمیں پانی کے بحران کا سامنا ہو گا۔ اگر یہ ڈراونا نہیں ہے تو اب وقت آ گیا ہے کہ ہم صورتحال کی سنگینی کا جائزہ لیں۔ ملک کے 15 سے زیادہ بڑے شہروں میں پہلے سے ہی پانی کی قلت کا مسئلہ درپیش ہے اور جس انداز میں ہم جارہے ہیں اس کی تعداد میں اضافہ ہوسکتا ہے۔ اس معاملے میں ہر قطرہ شمار ہوتا ہے اور ہر فرد کے اعمال شمار ہوتے ہیں۔


ہمیں واقعتا پانی کے بارے میں بیدار ہونے کی ضرورت ہے اور اپنے آپ میں کچھ ضروری عادات پیدا کرنے کی ضرورت ہے جن میں پانی کی حفاظت کو ہماری روزمرہ کی زندگی کا ایک حصہ بنانا بھی شامل ہے۔ یہاں کچھ ایسی باتیں بتائی جا رہی ہیں جن پر عمل آوری آج کے دن سے ہی ہوسکتی ہے۔


پچھلے کچھ مہینوں نے ہمیں یہ جاننے کی اہمیت کا احساس کرا دیا ہے کہ کیسے کھانا بنایا جائے، اپنے کھانے اور خوارک پر کس طرح قابو پایا جائے کیونکہ ہم باہر سے کھانے کا آرڈر نہیں دے سکتے تھے یا پھر کھانے کے لئے ہم باہر نہیں جا سکتے تھے۔ اپنی غذا میں تبدیلی کرنے یا پھر صحت مند غذا لینے کا یہ صحیح وقت ہوسکتا ہے جو کہ نہ صرف ہماری صحت کے لئے بلکہ پانی کے تحفظ کے لئے بھی کارآمد ہے۔


ہر وہ چیز جو ہم خریدتے ہیں، خواہ یہ جینس کا ایک جوڑا ہو یا ایک جوڑا جوتا ہو ، اسے تیار کرنے اور ایک جگہ سے دوسری جگہ بھیجنے میں پانی کا استعمال ہوتا ہے۔ جینس کے ایک جوڑے کے لئے جو آپ نے آن لائن خریدا ہے اس میں لگ بھگ 10،000 لیٹر پانی استعمال ہوتا ہے! پانی کو لے کر بیدار ہونا ایک سست عمل ہے لیکن یہ ایک ضروری عمل ہے اور آپ کو کبھی نہیں معلوم کہ آپ کی کون سی عادت پانی کے تحفظ میں مدد دے گی۔ شعوری طور پر خریداری کریں اور پانی بچائیں ، یہ اتنا ہی آسان ہے۔ اس کے اختتام پر آپ بہت سارے پیسے اور پانی دونوں کی بچت کریں گے۔

خود کو زیادہ سے زیادہ توانائی کے تئیں محتاط رکھیں اور گھر میں مستعد رہنا بہت ضروری ہے۔ بجلی پیدا کرنے میں پانی کی ضرورت پڑتی ہے۔ اگر اپنے فون کو چارج نہیں کررہے ہیں؟ تو چارجر نکال دیں۔ کیا آپ ہال میں ہیں؟ باورچی خانے میں لائٹ بند کردیں۔ شہر سے باہر جا رہے ہیں؟ مین سوئچ بند کر دیں۔ یہ وہ چھوٹی چھوٹی عادات ہیں جو ہمیں بجلی کی کھپت کو کم کرنے میں مدد دیں گی اور اس کے نتیجے میں بہت سارے پانی کے تحفظ میں مدد مل سکتی ہے۔

 
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Jan 20, 2021 04:47 PM IST