உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    J&K: گزشتہ 24 گھنٹوں میں 4 دہشت گرد ہلاک، 3 پاکستانی بھی شامل ’زیرو ٹالرنس‘ پالیسی

    جموں وکشمیر: حزب المجاہدین کمانڈر اشرف مولوی کی ہلاکت پولیس اور سیکورٹی فورسز کی بڑی کامیابی

    جموں وکشمیر: حزب المجاہدین کمانڈر اشرف مولوی کی ہلاکت پولیس اور سیکورٹی فورسز کی بڑی کامیابی

    مرکز سرحد پار سے دراندازی کے خلاف زیرو ٹالرنس کی پالیسی پر زور دے رہا ہے اور شاہ نے وکالت کی ہے کہ یہ ضروری تھا تاکہ وزیر اعظم نریندر مودی کے خوشحال اور پرامن جموں و کشمیر کے وژن کو پورا کیا جا سکے۔

    • Share this:
      جموں و کشمیر (Jammu and Kashmir) میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران چار دہشت گرد مارے گئے جب کہ مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ (Amit Shah) نے سرحد پار ڈرون کی بڑھتی ہوئی سرگرمیوں اور چسپاں بموں کے خطرے کے تناظر میں قومی سلامتی کے مشیر اجیت ڈوول کے ساتھ ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ کی۔ پولیس نے بتایا کہ ہلاک ہونے والے افراد میں سے تین پاکستانی تھے، جب کہ چوتھے کی شناخت کی جا رہی ہے۔

      مرکز سرحد پار سے دراندازی کے خلاف زیرو ٹالرنس کی پالیسی پر زور دے رہا ہے اور شاہ نے وکالت کی ہے کہ یہ ضروری تھا تاکہ وزیر اعظم نریندر مودی کے خوشحال اور پرامن جموں و کشمیر کے وژن کو پورا کیا جا سکے۔

      پولیس کے مطابق فوج، مرکزی مسلح پولیس فورس اور جموں و کشمیر پولیس نے بیک وقت آپریشن کیا اور چار دہشت گردوں کو مار گرایا۔ پولیس نے مزید کہا کہ ہتھیاروں کا ایک بڑا ذخیرہ، بشمول AK-56، دستی بم اور گولہ بارود بھی برآمد کیا گیا۔

      نیوز 18 ڈاٹ کام کے شاہ نے وادی کشمیر میں اس سال کی امرناتھ یاترا کی سیکورٹی تیاریوں کے درمیان 15 دنوں میں کم از کم دو اعلیٰ سطحی میٹنگیں کی ہیں۔ منگل کی میٹنگ کا مرکزی ایجنڈا ڈرون اور خود کش کم دھماکے جیسے نئے سیکورٹی چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کے لیے مسلح افواج کی جانب سے ٹیکنالوجی کا بہتر استعمال تھا۔

      ہوم سیکرٹری کی زیر صدارت ایک الگ میٹنگ بھی ہوئی، جس میں نیشنل انویسٹی گیشن ایجنسی، سنٹرل انڈسٹریل سکیورٹی فورس، نیشنل سکیورٹی گارڈ اور بارڈر سکیورٹی فورس کے سربراہان سے بات چیت کی گئی۔ انہوں نے دہشت گردی کے خطرات سے نمٹنے کے لیے ٹیکنالوجی کے استعمال پر بھی تبادلہ خیال کیا۔

      مزید ٖپڑھیں: Remarks on Prophet:خلیجی ممالک کو کیوں اتنی ترجیح دے رہا ہندوستان، جانیے کیا ہیں اقتصادی، سفارتی اور سیاسی نقصانات

      ہفتے کے شروع میں شاہ نے ڈووال اور را کے سربراہ سمنت گوئل کے ساتھ دیگر اعلیٰ حکام کے ساتھ میٹنگ کی تھی۔ انہوں نے مرکز کے زیر انتظام علاقے میں سیکورٹی کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا، جہاں مئی سے ہلاکتوں کا سلسلہ جاری ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      OIC: او آئی سی نے ہندوستان کو بنایا شدید تنقید کا نشانہ، اقوام متحدہ سے ایکشن لینے کی اپیل

      شاہ نے 3 جون کو ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ بھی بلائی تھی تاکہ جموں و کشمیر میں سیکورٹی کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا جا سکے اور سالانہ یاترا کے انتظامات کا جائزہ لیا جا سکے، جو کووڈ-19 وبائی امراض کی وجہ سے دو سال کے وقفے کے بعد منعقد کیا جا رہا ہے۔ .
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: