உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Jagdeep Dhankhar: جگدیپ دھنکھر بنے ہندوستان کے 14 ویں نائب صدر! صدر دروپدی مرمو نے دلایا حلف

    NDA نے جگدیپ دھنکھڑ کو ہی کیوں بنایا نائب صدارتی امیدوار؟

    NDA نے جگدیپ دھنکھڑ کو ہی کیوں بنایا نائب صدارتی امیدوار؟

    نائب صدر پانچ سال کی مدت پوری کرتا ہے لیکن مدت ختم ہونے سے قطع نظر، جب تک جانشین اپنا عہدہ سنبھال نہیں لیتا، وہ عہدے پر برقرار رہ سکتا ہے۔ اس مدت کے دوران نائب صدر کے پاس صدر کے تمام اختیارات، استثنیٰ اور مراعات ہیں اور وہ صدر کو قابل ادائیگی مراعات اور الاؤنسز حاصل کرتے ہیں۔

    • Share this:
      مغربی بنگال (West Bengal) کے سابق گورنر جگدیپ دھنکھر (Jagdeep Dhankhar) نے جمعرات کو ہندوستان کے 14ویں نائب صدر (Vice President of India) کے طور پر حلف لیا۔ صدر دروپدی مرمو (Droupadi Murmu) نے راشٹرپتی بھون میں ایک مختصر تقریب میں 71 سال دھنکھر  کو حلف دلایا۔

      دھنکھر نے بھگوان کے نام پر ہندی میں حلف لیا۔ وزیر اعظم نریندر مودی (Narendra Modi) اور دھنکھر کے پیشرو ایم وینکیا نائیڈو (M Venkaiah Naidu) اس تقریب میں موجود معززین میں شامل تھے۔ جمعرات کو ہندوستان کے 14 ویں نائب صدر کے طور پر حلف لینے والے جگدیپ دھنکھر کے کلیدی کرداروں میں سے ایک راجیہ سبھا یعنی ریاستوں کی کونسل کی سربراہی ہوگی۔

      یہ بھی پڑھئے: پاکستان کے وزیرخزانہ کا فیصلہ-30 ارب کا اضافی ٹیکس لگے گا

      نائب صدر پانچ سال کی مدت پوری کرتا ہے لیکن مدت ختم ہونے سے قطع نظر، جب تک جانشین اپنا عہدہ سنبھال نہیں لیتا، وہ عہدے پر برقرار رہ سکتا ہے۔ اس مدت کے دوران نائب صدر کے پاس صدر کے تمام اختیارات، استثنیٰ اور مراعات ہیں اور وہ صدر کو قابل ادائیگی مراعات اور الاؤنسز حاصل کرتے ہیں۔

      یہ بھی پڑھئے: خاتون نے KFC سے کیا آرڈر، ڈیلیوری کیلئے پہنچی پاکستانی لڑکی، جانئے پھر کیا ہوا

      نائب صدر کی سرکاری ویب سائٹ کے مطابق آئین اس بارے میں خاموش ہے کہ نائب صدر کے فرائض کون انجام دیتا ہے، جب عہدہ کی میعاد ختم ہونے سے پہلے دفتر میں کوئی جگہ خالی ہوجاتی ہے، یا جب نائب صدر ہندوستان کے صدر کے طور پر کام کرتا ہے۔ آئین میں واحد شق راجیہ سبھا کے چیئرپرسن کے طور پر نائب صدر کے کام کے حوالے سے ہے، جو اس عہدہ کی خالی ہونے کی مدت کے دوران راجیہ سبھا کے ڈپٹی چیئرپرسن یا ایوان بالا کے کسی دوسرے رکن کے ذریعہ انجام دیا جاتا ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: