ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

کیرالہ سیلاب زدگان کے لئے راحتی کاموں میں مصروف ہے جماعت اسلامی ہند

جماعت اسلامی ہند نے ترکی کے اقتصادی بحران پر شدید تشویش کا اظہار کیا

  • Share this:
کیرالہ سیلاب زدگان کے لئے راحتی کاموں میں مصروف ہے جماعت اسلامی ہند
جماعت اسلامی ہند نے ترکی کے اقتصادی بحران پر شدید تشویش کا اظہار کیا

جماعت اسلامی ہند کے نائب امیر نصرت علی نے جماعت اسلامی ہند کے ماہانہ پریس کانفرنس کے دوران کیرالہ کے سیلابی علاقے کے اپنے دورہ کا تاثر بیان کرتے ہوئے بتایا کہ کیرلا میں گزشتہ دنوں سیلابی بارش سے بڑے پیمانے پر جانی و مالی نقصان ہوا ہے۔


سیلاب سے متاثرہ مقامات پربھی ریلف کا کام جاری ہے۔ انہوں نے بتایا کہ سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں جماعت کے مختلف ذیلی ادارے پوری مستعدی سے امدادی کاموں میں فعال کردار ادا کررہے ہیں، جو قابل تعریف اورمستحسن ہے۔ اس موقع پر جماعت اسلامی ہند کے امیر مولانا جلال الدین عمری، سکریٹری جنرل محمد سلیم انجینئر، سکریٹری محمد احمد، میڈیا انچارج ارشد شیخ بھی موجود تھے۔


 جماعت کے 200 کارکن این آرسی کے کاموں میں مصروف


جماعت کے سکریٹری محمد احمد نے بتایا کہ آسام میں ہم نے 200 لوگوں کو ہائر کیا ہے اور وہ این آرسی کے معاملے پر کام کررہے ہیں تاکہ جن 40 لاکھ لوگوں کے نام این آرسی سے باہر ہوگئے ہیں۔  ان کے ناموں کو شامل کیا جاسکے۔ انہوں نے بتایا کہ جماعت اسلامی ہند پوری مضبوطی کے ساتھ وہاں کام کررہی ہے اور وکلا کی مدد سے ہم اس کام کو یقینی بنارہے ہیں۔

پرسنل لا میں مداخلت نہ کریں حکومتیں

امیر جماعت اسلامی مولانا جلال الدین عمری نے یکساں سول کوڈ سے متعلق لاکمیشن کے فیصلے کا استقبال کرتے ہوئے کہا کہ کسی بھی پرسنل لا میں حکومت کو یا لاکمیشن کو مداخلت نہیں کرنی چاہئے۔ ہم نے لا کمیشن سے دلائل کے ساتھ اپنی بات رکھی اور انہوں نے اسے قبول بھی کیا ہے۔

ترکی کا اقتصادی بحران

مولانا عمری نے ترکی کے اقتصادی بحران پر شدید تشویش کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ دیکھا جارہا ہے کہ کچھ طاقتیں ترکی کی معیشت کو جان بوجھ کر گرانا چاہتے ہیں۔ ترکی کی لیرا (کرنسی) میں امریکی ڈالر کے مقابلے تیزی سے گراوٹ آئی ہے۔ لہٰذا جماعت امید کرتی ہے کہ یہ طاقتیں سوجھ بوجھ سے کام لیں گی اورترکی کو مزید دبانے کی کوش سے باز آئیں گی۔ انہوں نے کہا کہ ترکی کے عوام صدر اردگان کے ساتھ کھڑے ہیں اور پسپائی کے لئے ہرگز تیار نہیں ہیں۔

زنا بالجبر کے لئے سزا کا نفاذ

سکریٹری جنرل محمد سلیم انجینئر نے کہا کہ مند سور میں زنا بالجبر کے مجرموں کو 59 دنوں میں تمام قانونی کارروائی مکمل کرتے ہوئے سزائے موت سنانے کا جماعت اسلامی ہند خیر مقدم کرتی ہے۔ اسپیشل  جج  نشا گپتا نے اس معاملے میں جس ہمت و حوصلے کا مظاہرہ کیا ہے وہ قابل تحسین ہے۔ جماعت حکومت ہند کو یہ بات یاد دلانا چاہتی ہے کہ کٹھوا،اناؤ،ہریانہ اور دہلی وغیرہ میں بھی زنا بالجبر کے واقعات ہوئے ہیں۔ ان کے مجرموں کو بھی اس قانون کے تحت سزائے موت سنائی جانی چاہیے۔

 
First published: Sep 01, 2018 09:40 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading