ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

جامعہ میں فائرنگ کرنے والے نابالغ ملزم کا بجرنگ دل کنکشن، فوٹو وائرل

جامعہ میں گولی چلانے والے نابالغ ملزم کی بجرنگ دل کے میرٹھ کے شریک کنوینر کے ساتھ تصویر وائرل ہو رہی ہے جس سے ملزم کے بجرنگ دل سے کنکشن ہونے کے امکان کو مسترد نہیں کیا جا سکتا۔

  • Share this:
جامعہ میں فائرنگ کرنے والے نابالغ ملزم کا بجرنگ دل کنکشن، فوٹو وائرل
جامعہ میں فائرنگ کرنے والا ملزم: فائل فوٹو

بلند شہر۔ دہلی (Delhi) کے جامعہ ملیہ اسلامیہ میں گولی چلانے والے نابالغ ملزم نے اپنے فیس بک پروفائل پر خود کو رام بھکت بتا رکھا ہے۔ اب بجرنگ دل (Bajrang Dal) کے میرٹھ کے شریک کنوینر کے ساتھ دہلی گولی واقعہ کے ملزم کے ساتھ تصویر وائرل ہو رہی ہے۔ جس سے ملزم کے بجرنگ دل سے کنکشن ہونے کے امکان کو مسترد نہیں کیا جا سکتا۔ حالانکہ بجرنگ دل کے میرٹھ ڈویژن کے شریک کنوینر پروین بھاٹی نے وائرل فوٹو پر صفائی دی ہے۔


وہیں، سی اے اے امن احتجاج میں شامل لوگوں پر گولی چلانے والے ملزم کی تصویر کو لے کر بجرنگ دل کے لیڈر نے تسلیم کیا ہے کہ تصویر میں وہ ملزم رام بھکت کے ساتھ ہیں۔ مگر وہ یہ بھی دعویٰ کر رہے ہیں کہ ملزم پر بجرنگ دل کی کوئی ذمہ داری نہیں ہے، نہ تو پہلے تھی اور نہ ہی اب ہے۔ ملزم کے گلے میں موجود آئی ڈی کارڈ کو لے کر بجرنگ دل کے لیڈر پروین بھاٹی نے دعویٰ کیا کہ پروگرام میں داخلہ کے وقت کارڈ بنتا ہے۔ کسی پروگرام میں ملزم نے شرکت کی ہو گی۔ انہوں نے اس تصویر کو کافی پرانا بتایا۔


گرفتار نابالغ نے کہا : جامعہ نگر میں فائرنگ کرنے کا کوئی افسوس نہیں ، لینا چاہتا تھا بدلہ


بتا دیں کہ جمعرات کو شہریت ترمیمی قانون (CAA) اور قومی شہریت رجسٹر (NRC) کے خلاف جامعہ ملیہ اسلامیہ سے راج گھاٹ تک نکالے جانے والے احتجاجی مارچ کے دوران ملزم نوجوان نے اچانک بھیڑ سے نکل کر طمنچہ لہرانا شروع کر دیا تھا اور پھر فائرنگ کر دی تھی۔ اس کی چلائی گولی سے جامعہ کے طالب علم شاداب فاروق زخمی ہو گئے تھے جنہیں بعد میں اسپتال میں بھرتی کرایا گیا۔ پولیس نے اس کے فورا بعد ملزم کو گرفتار کر لیا تھا۔

جمعہ کو گولی چلانے والے اس نوجوان کو جوینائل جسٹس بورڈ کے سامنے پیش کیا گیا جہاں سے اسے 14 دن کی نگرانی میں بھیجا گیا ہے۔

 
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Feb 01, 2020 12:26 PM IST