ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

فارغین مدارس شرعی واجبات اوراخلاقی عظمت پرخصوصی توجہ دیں: محمد رحمانی مدنی

جامعہ اسلامیہ سنابل کے 31 ویں بیچ کے مابین تفویض اسناد کے پروگرام میں علماء ودانشوران ملت نے شرکت کرکے خطاب کیا۔ اس دوران 57 فضلا اور 31 حفاظ کو اعزاز سے سرفراز کیا گیا۔

  • Share this:
فارغین مدارس شرعی واجبات اوراخلاقی عظمت پرخصوصی توجہ دیں:  محمد رحمانی مدنی
جامعہ اسلامیہ سنابل میں تقریب تقسیم اسناد میں مہمان خصوصی مولانا امراللہ رحمانی کو مومنٹو پیش کرتے ہوئے ادارہ کے ذمہ داران: تصویر نیوز 18 اردو


جامعہ اسلامیہ سنابل میں منعقد ہونے والے فارغین فضلاء وحفاظ کے مابین تقسیم اسناد کے پروگرام میں صدارتی خطاب کرتے ہوئے مولانا محمد رحمانی سنابلی  مدنی نے کہا کہ ملت وجماعت کے قائدین اور ہم سب کی ذمہ داری ہے کہ مدارس کے فارغین علماءاور فضلاءکے لیے کو ئی مضبوط لائحہ عمل تیار کر یں اور ان کی معاش کا ایسا وسیلہ اور ذریعہ فراہم کریں کہ یہ فارغین دربدرکی ٹھوکریں نہ کھاتے پھریں۔

صدراجلاس نے علم دین کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ والدین اور قوم وملت کے حقوق وواجبات کو جس طرح مدارس کے فضلاءسمجھتے ہیں او ر اس کی انجام دہی پرقدرت رکھتے ہیں اتنی عمدگی کے ساتھ بڑی بڑی یونیورسٹیوں اور کالجوں کے سند یافتہ حضرات انجام نہیں دے سکتے۔

مولانا محمد رحمانی مدنی نے فارغین طلبہ کو نصیحت کرتے ہوئے کہاکہ اخلاقیات اسلام کا ایک مستقل باب ہے، اس جانب خصوصی توجہ دینا دعوت کے میدان میں بے انتہاضروری ہے۔  انہوں نے مزید کہا کہ والد گرامی مولاناعبدالحمید رحمانی رحمہ اللہ کو عقیدہ ومنہج کے دفاع میں اپنا اسوہ اور نمونہ بنائیں۔ خود کو اساتذہ سے جو ڑ کر رکھیں، منبر ومحراب سے اپنارشتہ مضبوط رکھیں اور آپ حضرات نے جو کچھ سیکھاہے اس کو اپنی عملی زندگی میں نافذ کریں۔

طلبا نے دکھائے اپنی صلاحیتوں کے جوہر


قبل ازیں پروگرام کا آغاز فرحان اسلم محمد اسلم متعلم اولی متوسطہ کی تلاوت کلام پاک سے ہوا۔ اس کے بعد محمد شعیب فضل الرحمن متعلم ثانیہ عالیہ نے خطبہ استقبالیہ پیش کیا۔ پھر لبیب احمد شبیراحمد ، عبدالعظیم محمد اسماعیل او رمحمد عمر خالد نے علی الترتیب عربی،اردو اورانگریزی زبانوںمیں اپنی طرف سے اور اپنے فارغین ساتھیوں کی جانب سے تاثراتی کلمات پیش کئے۔ اس کے بعدعمید جامعہ مولانانثار احمد سنابلی ، مدنی نے تقسیم اسانید کا سلسلہ شروع کیا۔ دہلی اور بیرون دہلی سے تشریف لائے علماءودانشوران اور ذمہ داران مرکز وجامعہ کے ہاتھوں یہ سلسلہ تکمیل کو پہنچا۔

علما اور حفاظ کو اعزازواسناد سے نوازا گیا


واضح رہے کہ یہ پروگرام جامعہ اسلامیہ سنابل سے فارغ ہونے والے علماءاورمعہد عثمان بن عفان لتحفیظ القرآن الکریم جوگابائی سے حفظ قرآن کی تکمیل کرنے والے حفاظ وقراءکے اعزاز میں ہرسال منعقد ہوتاہے۔ اس مرتبہ فضلاءکی تعداد 57جب کہ حفاظ کی تعداد کل 31 تھی۔

 باعمل عالم بن کر قوم وملت کی خدمت کریں 


اجلاس کے مہمان خصوصی بانی مرکز علامہ عبدالحمید رحمانی رحمہ اللہ کے ہم سبق ساتھی مولاناامراللہ رحمانی حفظہ اللہ کو مرکز کے جوائنٹ سکریٹری اسماعیل رحمانی کے بدست مومنٹو پیش کیاگیا۔

جامعہ اسلامیہ سنابل کے تقسیم اسناد تقریب میں مہمان خصوصی کو مومنٹو پیش کرتے ہوئے ادارے کے ذمہ دارن: تصویر نیوز 18 اردو۔

اس موقع سے مہمان خصوصی نے اپنے خطاب میں کہا کہ تعلیم وتربیت انسانی زندگی پر گہرا اثر مرتب کرتے ہیں۔ فارغین جامعہ کو نصیحت کرتے ہوئے کہاکہ عملی کوتاہی سے دور رہ کر باعمل عالم بن کر قوم وملت کی خدمت کرناہوگا۔ انہوں مزید کہا کہ جس مقام پر آپ ہیں وہ صدق وصفا ،امانت ودیانت کا متقاضی ہے ۔آپ نے بتایاکہ مدارس کے قیام کا بنیادی مقصد ایسے علماءوفضلاءپیدا کرناہے جو علم وعمل میں ایسا نمونہ ہوں جویاد گار ہو۔

معاشرہ میں انفرادی مقام بنائیں


 جامعہ ملیہ اسلامیہ کے ڈپٹی رجسٹرار رضوان لطیف خان نے اپنے خطاب میں کہاکہ ہمیں معاشرہ میں انفرادی مقام بنانا ہوگا۔ ہماراماضی انتہائی تابناک رہاہے ۔ اس ضمن میں مسلم سائنسدانو ں اوران کےعظیم کارناموں کاتذکرہ کیا۔ مزید کہاکہ موجودہ دورمیں مسلمان تعلیم کے میدان میں بہت پیچھے ہے حالانکہ یہ کبھی رہنماہوا کرتاتھااورآج دوسروں کی رہنمائی کامحتاج ہے ۔


قیادت اور سیادت ہر میدان میں نوجوانوں کا اہم رول 


  ابوالکلام آزاد اسلامک اویکننگ سنٹر کے جنرل سکریٹری مولانا عاشق علی اثری نے جوانی کی اہمیت کس قدر مسلم ہے اس پر تفصیل سے روشنی ڈالی۔ اس ضمن میں اصحاب کہف کی مثال دے کر فارغین جامعہ کو بتایاکہ قیادت اور سیادت ہر میدان میں نوجوانوں کاہی اہم رول رہا ہے۔ آپ سبھی نوجوانی کی عمر میں ہیں۔ قوم وملت کی دینی اور سیاسی قیادت آپ کی منتظر ہے آپ خود کو اس لائق بنائیں اور اپنے سلف کے طریقہ پر چل کر زندگی گزارنے کاعہد کریں۔


سوشل میڈیا کا بہت زیادہ استعمال مضر


 ڈاکٹر قطب الدین سنابلی نے کہا کہ ٹیکنالوجی کتابوں کا بدل کبھی بھی نہیں ہو سکتی ہے۔ خود کو موثر بنائیں، پہلے خود پڑھیں پھر دوسروں کو بتائیں۔ انہوں نے کہا کہ اہل وطن کے ساتھ اچھے مراسم قائم کریں یہ چیز ملک وملت کے حق میں مفید ثابت ہوگی۔ ڈاکٹر قطب الدین نے سوشل میڈیاکی خطرناکی سے آگاہ کرتے ہوئے طلبہ کو نصیحت کی کہ اس کااستعمال کم سے کم کریں۔ خودکو کتابوں سے جوڑ کر رکھیں۔

مہمان نے کی طلبا کی حوصلہ افزائی



اس موقع پرمرکزی جمعیت اہلحدیث ہند کے ناظم عمومی مولانامحمد ہارون سنابلی، شیخ ذکی صاحب ایشیاوالے،الحکمہ فاونڈیشن کے چیر مین حکیم ضیاءالدین احمد، جامعہ ریاض العلوم کے ناظم اعلی محمد عامر بستوی، معروف عالم دین مولاناعبدالوہاب جامعی وغیرہ نے خطاب کیا۔ اس پروگرام میں ہندوستان کے مختلف علاقوں کی سرکردہ شخصیات اوراہم ذمہ داران نےبھی شرکت طلبہ کی حوصلہ افزائی کی۔ ان میں سید احمد، سید عبدالعظیم، دہلی کے مختلف علاقوں سے شفاعت عالم، ڈائرکٹر ایچ آر اے گروپ،ارشد کمال، منظر عالم، شہاب الدین انصاری، مولانا مسعود احمد،مولانا عبدالحق،سعود احمد،محمد یحیی، صحافی ندیم احمد سنابلی،محمد اسلم سنابلی اور ان کےعلاوہ ہریانہ وغیرہ کے بہت سے احباب نے شرکت کرکے اپنی خوشی کا اظہار کیا۔ اخیر میں جامعہ اسلامیہ سنابل کے مدیر مولانا وسیم احمد سنابلی ریاضی نے تمام حاضرین کا شکریہ اداکیا اور اس کے بعد ناظم جلسہ نے پروگرام کے اختتام کا اعلان کیا۔ پروگرام کی نظامت کا فریضہ جامعہ اسلامیہ سنابل کے سینئر استاذمولاناعبد البرسنابلی مدنی نے انجام دیا ۔



First published: Aug 12, 2018 10:18 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading