ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

بلاد حرمین شریفین کی حفاظت ہم سب کا دینی،ایمانی اور اخلاقی فریضہ : مولانا اصغرعلی سلفی

بلاد حرمین شریفین کی حفاظت ہم سب کا دینی ، ایمانی اور اخلاقی فریضہ ہے ۔اگرکوئی اس میں فتنہ وفساد اور دہشت پھیلانے، اس کی حرمت وتقدس سے کھلواڑکرنے اوروہاں کے امن وشانتی کوغارت کرنے کی کوشش کرتا ہے تووہ اللہ تعالیٰ کا باغی اوردنیا کے تمام مسلمانوں کا مجرم ہے۔

  • Pradesh18
  • Last Updated: Nov 05, 2016 03:31 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
بلاد حرمین شریفین کی حفاظت ہم سب کا دینی،ایمانی اور اخلاقی فریضہ : مولانا اصغرعلی سلفی
بلاد حرمین شریفین کی حفاظت ہم سب کا دینی ، ایمانی اور اخلاقی فریضہ ہے ۔اگرکوئی اس میں فتنہ وفساد اور دہشت پھیلانے، اس کی حرمت وتقدس سے کھلواڑکرنے اوروہاں کے امن وشانتی کوغارت کرنے کی کوشش کرتا ہے تووہ اللہ تعالیٰ کا باغی اوردنیا کے تمام مسلمانوں کا مجرم ہے۔

نئی دہلی ۔ ’’ بلاد حرمین شریفین کی حفاظت ہم سب کا دینی ، ایمانی اور اخلاقی فریضہ ہے ۔اگرکوئی اس میں فتنہ وفساد اور دہشت پھیلانے، اس کی حرمت وتقدس سے کھلواڑکرنے اوروہاں کے امن وشانتی کوغارت کرنے کی کوشش کرتا ہے تووہ اللہ تعالیٰ کا باغی اوردنیا کے تمام مسلمانوں کا مجرم ہے‘‘ ۔ ان خیالات کا اظہار مولانا اصغرعلی امام مہدی سلفی ناظم عمومی مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند نے کیا۔ موصوف مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے زیراہتمام اورصوبائی جمعیت اہل حدیث ہریانہ کے زیرانتظام رہپوہ، میوات، ہریانہ میں مورخہ ۳؍نومبر ۲۰۱۶ء کو منعقدہ تحفظ حرمین شریفین کانفرنس میں افتتاحی وکلیدی خطاب فرما رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ بڑے افسوس کی بات ہے کہ اسلام اور مسلمان دشمن طاقتوں کے آلہ کارحوثی باغی بعض حکومتوں کے اشارے پربلاد حرمین شریفین مملکت سعودی عرب کے خلاف سازشیں کرتے رہتے ہیں ۔ حالیہ دنوں حوثیوں کے ذریعہ مکہ مکرمہ کو نشانہ بنا کر جومیزائل چھوڑا گیا وہ اسی سلسلہ کی ناپاک کڑی ہے۔اس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔


ناظم عمومی نے کہا کہ عالم اسلام کو بلاد حرمین شریفین کے خلاف سازشیں رچنے والوں اور وہاں فتنہ وفساد برپا کرنے کی کوشش کرنے والوں کے خلاف پوری یکجہتی کے ساتھ کارروائی کرنی چاہیے تاکہ اس کی حرمت وتقدس کوپامال کرنے کی آئندہ کوئی جرأت نہ کرسکے۔ ناظم عمومی نے کہا کہ فتنہ ودہشت کی کاشت کرنے والی حکومت اوراس کی پیدا وار دہشت گرد تنظیموں کواپنے مذموم کرتوت پر مسلمانان عالم سے معافی مانگنی چاہیے اور فتنہ و فساد کا سلسلہ بند کرنا چاہئے۔ مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے ناظم شعبہ تنظیم اور صوبائی جمعیت اہل حدیث مغربی یوپی کے ناظم مولانا محمد ہارون سنابلی نے کہا کہ تحفظ حرمین شریفین ایک خالص دینی وایمانی مسئلہ ہے ۔اللہ تعالیٰ نے اس سرزمین کو محترم بنایا ہے اس کی کسی درجہ بھی بے حرمتی کرنا حرام ہے ۔ جو قدم بھی اس کے خلاف اٹھے گا اللہ تعالیٰ ابرہہ کی طرح اسے برباد کردے گا۔ مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند نے یہ کانفرنس بروقت منعقد کی ہے اس کے لیے وہ لائق مبارک باد ہے۔ صدرکانفرنس مولانا جمیل احمد مدنی مفتی مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند نے کہا کہ مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کی موجودہ قیادت سماج کے ہرطبقہ کے لیے خواہ وہ طلبہ ہوں، یا اساتذہ، ائمہ ہوں یا دعاۃ یا عام آدمی سب کی اصلاح وتربیت اوررہنمائی کے لیے نوع بنوع پروگراموں کا انعقاد کرتی رہتی ہے اور وقت کے سلگتے مسائل اورچیلنجزسے عوام کو آگاہ کرتی رہتی ہے اس کے لیے ہم ان کے شکر گزار ہیں اورتحفظ حرمین شریفین کانفرنس کے انعقاد پرانھیں دلی مبارک باد پیش کرتے ہیں۔ نیزانہوں نے بلاد حرمین شریفین مملکت سعودی عرب کی حمایت کے لیے عوام خواص کو تلقین کی اورکہا کہ اس کے لیے ہرطرح کا تعاون پیش کریں۔


ڈاکٹر محمد شیث ادریس تیمی میڈیا کوآرڈینٹرمرکزی جمعیت اہل حدیث ہند نے کانفرنس کی نظامت کرتے ہوئے تمام حاضرین کا خیر مقدم کیا اور کہا کہ اللہ کے پہلے گھرخانہ کعبہ کو نشانہ بنا کر حوثیوں کے ذریعہ ناکام میزائل حملہ قابل مذمت ہے۔ ان نام نہاد تنظیموں اورافراد کو اب ہوش کے ناخن لینا چاہئے جواب تک فتنہ وفساد کی کاشت کرنے والے اس ملک کی بلاوجہ حمایت کرتے رہے ہیں جس کی تیار کردہ حوثی تنظیم نے یہ ناپاک جرأت تک کرڈالی ۔انہوں نے کہا کہ ہم امن و شانتی کے داعی ہیں ۔ دہشت گردی عصر حاضر کا سب سے بڑا ناسور ہے جس سے پورا عالم اسلام اور پوری انسانیت جوجھ رہی ہے۔ داعش اور حوثی باغی دہشت گرد ہیں۔ مکہ مکرمہ پر ناکام میزائل حملہ پری پلاننگ معلوم ہوتا ہے۔ ایک طرف داعش سعودی عرب اور ترکی کو دھمکی دے رہا ہے اور دوسری طرف حوثی باغی بلا د حرمین شریفین پر میزائل داغ رہا ہے۔


اس اہم موقع پر مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے زیر نگرانی اورصوبائی جمعیت اہل حدیث ہریانہ کے زیراہتمام طلبہ مدارس میوات کے مابین تقریری مقابلہ کا بھی انعقاد کیا گیا جس میں کامیاب ہونے والے طلبہ کے مابین نقد انعامات اور تحائف تقسیم کیے گئے۔ مولانا عبدالرحمن سلفی کے کلمات تشکر اور دعا پر کانفرنس کا اختتام عمل میں آیا۔اس کانفرنس میں علاقے کی اہم شخصیات موجود تھیں۔

First published: Nov 05, 2016 03:29 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading