உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں وکشمیرسے زیادہ قتل پٹنہ میں ہوتے ہیں: گورنرستیہ پال ملک کا متنازعہ بیان

    گورنر ستیہ پال ملک: فائل فوٹو

    گورنر ستیہ پال ملک: فائل فوٹو

    ریاست کے گورنرنے کہا کہ وادی میں پتھربازی کے واقعات میں کمی درج کی گئی ہے۔ ساتھ ہی دہشت گردانہ تنظیموں میں مقامی نوجوانوں کی بھرتیوں میں بھی کمی آئی ہے۔

    • Share this:
      جموں وکشمیر کے گورنرستیہ پال ملک کے ریاست کے لا اینڈ آرڈرکو لے کرمتنازعہ بیان دیا ہے۔ ستیہ پال ملک نے پیرکوکہا کہ جموں وکشمیر میں لا اینڈ آرڈرکسی بھی دوسری ریاست جیسی ہے۔ یہاں اس وقت کوئی قتل عام نہیں مچا ہے۔

      نیوزایجنسی اے این آئی کے مطابق انہوں نے جموں وکشمیرکے لا اینڈ آرڈرکا موازنہ بہارکی دارالحکومت پٹنہ سے کی۔ گورنرستیہ پال ملک نے کہا کہ کشمیر میں ایک ہفتے میں جتنے قتل وغارت گردی ہوتے ہیں، اتنے پٹنہ میں ایک روزمیں ہوتے ہیں۔

      انہوں نے یہ بھی کہا کہ وادی میں پتھربازی کے واقعات میں کمی درج کی گئی ہے۔ ساتھ ہی دہشت گردانہ تنظیموں میں مقامی نوجوانوں کی بھرتیوں (ریکروٹمنٹ) میں بھی کمی آئی ہے۔ واضح رہے کہ ستیہ پال ملک جموں وکشمیرکے گورنربنائے جانے سے قبل بہارکے گورنرتھے۔



      ستیہ پال ملک 23 اگست 2018 کو انہوں نے نریندرناتھ ووہرا کی جگہ لی تھی۔ این این ووہرا 10 سال تک جموں وکشمیرکے گورنررہنے کے بعد ریٹائرہوئے تھے۔ جموں وکشمیرمیں گزشتہ سال جون کے مہینے میں گورنرراج نافذ کیا گیا تھا۔ 20 دسمبرکواس کی میعاد پوری ہونے پرمرکزنے ریاست میں آئندہ 6 ماہ کے لئے صدرراج نافذ کردیا تھا۔
      First published: