உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پی او کے میں گھات لگا کر بیٹھے ہیں دہشت گرد، دراندازی میں پاکستانی فوج کر رہی ہے مدد: ہندوستانی آرمی

    فائل فوٹو

    ہندوستان نے پاکستان ہائی کمشنر کے ایک سینئر افسر کو طلب کرکے جموں و کشمیر میں لائن آف کنٹرول پر سندربنی علاقے میں پاکستانی دہشت گردوں کو ہندوستان میں داخل کرانے کی کوششوں کی سخت مذمت کی

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      ہندوستان نے پاکستان ہائی کمشنرکے ایک سینئرافسرکو طلب کرکے جموں وکشمیرمیں لائن آف کنٹرول پرسندربنی علاقے میں پاکستانی دہشت گردوں کو ہندوستان میں داخل کرانے کی کوششوں کی سخت مذمت کی ہے اورسیکورٹی فورسز کے ہاتھوں مارے گئے دو پاکستانی جنگجوؤں کی لاشوں کو لے جانے کیلئے کہا ہے۔ وزارت خارجہ نے آج یہاں ایک بیان میں یہ اطلاع دی۔ بیان کے مطابق 21 اکتوبر کو سندربني علاقے میں دراندازی کی کوشش کے دوران ہندوستانی فوجیوں پر خطرناک حملے پر باضابطہ طور پر زبردست احتجاج درج کرایا ہے۔
      موصولہ اطلاعات کے مطابق دو پاکستانی مسلح درانداز مڈبھیڑمیں ہندوستانی سیکورٹی فورسز کے ہاتھوں مارے گئے ہیں۔ پاکستان سے کہا گیا ہے کہ پاکستان حکومت اپنے شہریوں کی لاشوں کو اپنے قبضہ میں لے۔

      بیان میں کہا گیا ہے کہ وزارت خارجہ نے پاکستان کی جانب سے اكساوے کی اس کارروائی کی سخت مذمت کی اور کہا کہ اس واقعہ سے صاف ہو گیا ہے کہ پاکستان دہشت گردی کو مسلسل بڑھاوا دے رہا ہے اوراس کی حمایت کررہا ہے اورامن کے لئے تعمیری رابطہ کو فروغ دینے کے اس کے دعوے جھوٹے ہیں۔
      بیان کے مطابق وزارت خارجہ نے پاکستان سے یہ بھی کہا ہے کہ کنٹرول لائن اوربین الاقوامی سرحد پرپاکستانی سیکورٹی فورسزکی جانب سے بغیرکسی اكساوے کے جنگ بندی کی خلاف ورزی کے واقعات بڑھ رہے ہیں۔ اس سال 2018 میں جنگ بندی کی خلاف ورزی کے اب تک 1591 واقعات ہوچکے ہیں۔ پاکستان دوطرفہ عزائم کا احترام کرتے ہوئے اپنے کنٹرول لائن والےعلاقے سے ہندوستان کے خلاف کسی بھی قسم کی دہشت گردی کو فروغ دینا بند کر دینا چاہئے۔
      First published: