ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

بھدرواہ کے 6،319 غریب خاندان پردھان منتری کلیان یوجنا کے تحت وعدہ شدہ راشن کے ہیں منتظر

پردھان منتری غریب کلیان انا یوجنا (PMGKY) کے تحت 26 کروڑ کے ریلیف پیکیج کے کے طور پر مرکزی حکومت نے 23 اپریل کو 80 کروڑ لوگوں کے لئے مفت اناج کا اعلان کیا تھا تاکہ اس لاک ڈاؤن کے دوران ان کی مشکلات کو کم کیا جاسکے۔

  • Share this:
بھدرواہ کے 6،319 غریب خاندان  پردھان منتری کلیان یوجنا کے تحت وعدہ شدہ راشن کے ہیں منتظر
پردھان منتری غریب کلیان انا یوجنا (PMGKY) کے تحت 26 کروڑ کے ریلیف پیکیج کے کے طور پر مرکزی حکومت نے 23 اپریل کو 80 کروڑ لوگوں کے لئے مفت اناج کا اعلان کیا تھا تاکہ اس لاک ڈاؤن کے دوران ان کی مشکلات کو کم کیا جاسکے۔

جموں کشمیر کے سب ضلع بھدرواہ میں لاک ڈاؤن کا چوتھا ہفتہ جاری ہے۔اس کے بعد مرکزی سرکار کی طرف سے اعلان کیا گیا ہے۔ پردھان منتری غریب کلیان انا یوجنا (PMGKY) کے تحت 26 کروڑ کے ریلیف پیکیج کے کے طور پر مرکزی حکومت نے 23 اپریل کو 80 کروڑ لوگوں کے لئے مفت اناج کا اعلان کیا تھا تاکہ اس لاک ڈاؤن کے دوران ان کی مشکلات کو کم کیا جاسکے۔ جموں کشمیر کے کئی ضلعوں میں اس علان کے بعد مفت راشن تقسیم کیا گیا جس سے لوگ کافی خوش دکھائی دے رہے ہیں اور سرکار کا شکریہ بھی ادا کر رہے ہیں لیکن جموں کشمیر کے سب ضلع بھدرواہ میں6319غریب خاندان ابھی بھی مفت راشن ملنے کا انتظار کر رہے ہیں۔


پردھان منتری غریب کلیان انا یوجنا (Pradhan Mantri Garib Kalyan Yojana) کے تحت غریبوں کو مئی اور جون کے مہینوں میں ، ہر مہینے 2 کلو گندم اور 3 کلو چاول ملے گا۔ بھدرواہ کے راشن ڈیلرز اور ناقص راشن کارڈ ہولڈروں نے الزام لگایا کہ اسسٹنٹ ڈائریکٹر ایف سی ایس اور سی اے ڈوڈہ شوہاب لطیف کی جانب سے اتوار (09 مئی) تک مثبت طور پر راشن تقسیم کرنے کی یقین دہانی کے باوجود بھدرواہ کے 5314 بی پی ایل خاندان اور 1005 انتیودیا خاندانوں کو راشن میسر کرانا تھا۔ اس اسکیم کے تحت اناج لینے کے لئے منگل وار تک تقریباً 6319 گھرانوں میں خشک راشن دینا تھا لیکن ابھی تک ان کو راشن میسر نہیں کرا پائے ہیں۔

ان میں سے زیادہ تر خاندان روزانہ اجرت کمانے والے ہیں جن کے پاس کرفیو کے دوران آمدنی کا کوئی ذریعہ نہیں ہے۔ سرکاری راشن کی عدم موجودگی میں ، یہ خاندان اپنے کھانے کے لئے خیراتی اداروں پر منحصر ہیں۔

راشن ڈیلرز ، پی آر آئی ممبران ، بی پی ایل اور اے اے وئی راشن کارڈ ہولڈرز نے وزیر اعظم کو ان کے لئے مفت راشن کی منظوری پر اظہار تشکر کرتے ہوئے الزام عائد کیا کہ سرکاری عدم دلچسپی کی وجہ سے انہیں عید تہوار آنے کے باوجود اپنا کوٹہ ملنا باقی ہے۔

راشن ڈیلر شبیر احمد نے بتایا پچھلے ایک ہفتے سے میں لگاتار متعلقہ محکمے سے درخواست کر رہا ہوں مجھے راشن فراہم کیا جائے تاکہ میں لوگوں کو مفت راشن تقسیم کر سکوں لیکن وہاں سے مجھے صرف تاریخ مل رہی ہے مگر راشن نہیں مل رہا ہے جس کی وجہ سے مجھے لوگوں کو جواب دینا مشکل ہو رہا ہے۔
راشن کارڈ ہولڈر امران نے بتایا میں تین دنوں سے لگاتار راشن ڈیپو کے چکر کاٹ رہا ہوں جو سرکار نے میرے لئے مفت راشن کا علان کیا ہے میں وہ راشن حاصل کر سکوں۔ لیکن افسوس ناک بات ہے مجھے ہر دن خالی ہاتھ گھر لوٹنا پڑ رہا ہے۔ عید کے پیش نظر ہمیں یہ خوشی ہوئی تھی سرکار نے جو ہمارے لئے مفت راشن کا علان کیا ہے اس سے ہمیں بہت مدد ملے گی۔ لیکن یہاں کے کچھ افسران ہمیں وہ راشن جو سرکار نے مفت دینے کا علان کیا تھا وہ ہمیں دینے کے لئے راضی نہیں ہیں۔

سرپنچ کلساڑی نے بتایا میری پنچایت میں تین راشن سٹور ہیں ان میں سے کسی بھی سٹور میں لوگوں کے لئے سرکار کی طرف سے مفت راشن متعلقہ محکمہ فراہم نہیں کر رہا ہے یہ ایک افسوس ناک بات ہے۔ سرپنچ نے سرکار سے اپیل کی ہے ایسے افسروں کے خلاف سخت سے سخت کاروائی عمل میں لائی جائے۔
اس مسلے کو لے کے جب نیوز18 اُردو نے اے ڈی سی بھدرواہ راکیش کمار سے رابطہ کیا تو انہوں نے بتایا کہ ایف سی ایس اور سی اے (فوڈ سول سپلائی اینڈ کنزیومر افیئرز) کے عہدیداروں کو دو دن کا الٹی میٹم دیا گیا ہے تاکہ اس اسکیم کے تحت ہر گھر کے لئے مفت راشن کی تقسیم کو یقینی بنایا جاسکے اور جو غلط کام کرنے والے عہدیدار ہیں ان کے خلاف کارروائی کا آغاز کیا جائے گا۔
Published by: Sana Naeem
First published: May 12, 2021 10:14 AM IST