ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

بریکنگ: جموں۔کشمیر کے ضلع کپواڑہ کیرن سیکٹر میں LOC پر گولہ باری، کسی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں

جموں و کشمیر کے ضلع کپواڑہ کے کیرن سیکٹر میں لائن آف کنٹرول پر جمعہ کے روز ہندوستان اور پاکستان کی افواج کے درمیان گولہ باری کا تبادلہ ہوا تاہم فی الوقت کسی بھی جانی یا مالی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Dec 04, 2020 07:20 PM IST
  • Share this:
بریکنگ: جموں۔کشمیر کے ضلع  کپواڑہ کیرن سیکٹر میں LOC  پر گولہ باری، کسی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں
کپواڑہ میں ایل او سی پر گولہ باری

سری نگر: جموں و کشمیر کے ضلع کپواڑہ کے کیرن سیکٹر میں لائن آف کنٹرول (LOC) پر جمعہ کے روز ہندوستان اور پاکستان کی افواج کے درمیان گولہ باری کا تبادلہ ہوا تاہم فی الوقت کسی بھی جانی یا مالی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔ سری نگر میں قائم فوج کی چنار کور کے آفیشل ٹوئٹر ہینڈل پر ایک ٹوئٹ میں کہا گیا کہ ضلع کپواڑہ  کے کیرن سیکٹر میں ایل او سی پر جمعہ کے روز پاکستانی فوج نے جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے گولہ باری شروع کر دی۔  انہوں نے بتایا کہ پاکستانی فوج نے ہلکے ہتھیاروں سے فائرنگ کرنے کے علاوہ مارٹر گولوں کا بھی استعمال کیا۔


قابل ذکر ہے کہ ہندوستان اور پاکستان کے درمیان سال 2003 میں جنگ بندی معاہدہ طے پانے کے باوجود بھی جموں و کشمیر کے سرحدوں پر طرفین کے درمیان ایک دوسرے کے ٹھکانوں کو نشانہ بنانے کا سلسلہ تواتر کے ساتھ جاری ہے۔


وہیں ملیٹنٹوں نے آج دن دھاڑے اننت ناگ کے ساگم کوکرناگ علاقے میں ڈی ڈی سی امیدوار انیس الاسلام پر گولیاں چلائیں۔ اس حملے میں انیس شدید طور پر زخمی ہوگیے ہیں۔ اسکے بعد انیس کو اننت ناگ کے گورنمنٹ میڈیکل کالج میں داخل کیا گیا۔ واقع کے فوراً بعد سیکورٹی فورسز نے جائے واردات پر پہنچ کر علاقے کا محاصرہ کیا اور حملہ آوروں کی تلاش بڑے پیمانے پر شروع کر دی۔ انیس علاقے میں بحثیت سیاسی و سماجی کارکن گزشتہ کئی برسوں سے سرگرم ہیں۔۔حال ہی میں انہوں نے جموں کشمیر اپنی پارٹی کی ٹکٹ پر ساگم سے کاغذات نامزدگی داخل کئے تھے۔یہ حملہ اس وقت انجام دیا گیا جب اننت ناگ کے دو بلاکوں میں ووٹنگ کا عمل جاری تھا ۔۔کسی ڈی ڈی سی امیدوار پر ملیٹنٹوں کی جانب سے اپنی نوعیت کا پہلا حملہ ہے۔ ادھر سابق وزیراعلی عمر عبداللہ اور جموں کشمیر اپنی پارٹی نے اس حملے کی مذمت کی ہے۔


غور طلب ہے کہ جموں و کشمیر میں ڈی ڈی سی اور پنچایت کے ضمنی انتخابات کے تیسرے مرحلے کے لئے آج ووٹنگ ہوئی ۔ تینتیس نشستوں کے لئے پولنگ ہوئی ۔ ان میں کشمیر کی سولہ اور جموں کی سترہ سیٹیں تھیں ۔۔تین سو پانچ امیدوار میدان میں تھے۔۔ان میں تریپن خواتین امیدوار بھی شامل ہیں۔۔ سرپنچوں کے حوالے سے چھیاسٹھ حلقوں میں پولنگ ہورہی ہے۔ ان میں ایک سو چوراسی امیدوار میدان میں ہیں۔ پنچوں کے حوالے سے تین سو ستائیس حلقوں میں ووٹنگ ہورہی ہے۔ آزادانہ و منصفانہ انتخابات کو یقینی بنانے کے لیے سکیورٹی کے معقول انتظامات کئے گیے ہیں۔
Published by: sana Naeem
First published: Dec 04, 2020 07:20 PM IST