ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

جموں و کشمیر :  کپواڑہ کے مژھل سیکٹر میں برفانی تودہ گرنے سے 3 فوجی اہلکار شہید ، ایک زخمی

شمالی کشمیر کے سرحدی ضلع کپواڑہ میں لائن آف کنٹرول (ایل او سی) کے مژھل سیکٹر میں جمعہ کی شام برفانی تودے کی زد میں آنے سے تین فوجی اہلکار جاں بحق ہوئے۔

  • UNI
  • Last Updated: Feb 02, 2018 09:03 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
جموں و کشمیر :  کپواڑہ کے مژھل سیکٹر میں برفانی تودہ گرنے سے 3 فوجی اہلکار شہید ، ایک زخمی
کشمیر: فائل فوٹو

سری نگر:  شمالی کشمیر کے سرحدی ضلع کپواڑہ میں لائن آف کنٹرول (ایل او سی) کے مژھل سیکٹر میں جمعہ کی شام برفانی تودے کی زد میں آنے سے تین فوجی اہلکار جاں بحق ہوئے۔ اس حادثہ میں ایک فوجی اہلکار کے زخمی ہونے کی اطلاع ہے۔ فوجی ذرائع کے مطابق برفانی تودہ گرآنے کا واقعہ ایل او سی کے مژھل سیکٹر میں کلاروس کے مقام پر پیش آیا‘۔ انہوں نے بتایا کہ علاقہ میں موجود چار فوجی اہلکار برفانی تودے کی زد میں آکر لاپتہ ہوگئے تھے۔ فوجیوں نے فوری طور پر بچاؤ مہم شروع کی۔ تین فوجیوں کو مردہ حالت جبکہ ایک کو زندہ حالت میں برآمد کیا گیا‘۔

فوجی ذرائع نے بتایا کہ زخمی فوجی اہلکار کو علاج ومعالجہ کے لئے فوجی اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ مژھل سیکٹر میں گذشتہ دو دنوں کے دوران بھاری برف باری ہوئی۔ انتظامیہ نے پہلے برفانی تودے گرآنے کی وارننگ جاری کردی تھی۔

جنوری کے پہلے ہفتے میں سادھا ٹاپ پر برفانی تودے گرآنے کے دو مختلف واقعات میں بارڈر روڑس آرگنائزیشن (بی آر او) کے ایک افسر سمیت 11 افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔ سال 2017 کے 25 جنوری کو شمالی کشمیر کے ضلع بانڈی پورہ کے گریز سیکٹر میں دو فوجی چوکیوں اور فوج کی ایک گشتی پارٹی کے بھاری برکم برفانی تودوں کی زد میں آنے سے کم از کم 14 فوجی اہلکار شہید ہوگئے تھے۔

اس کے بعد 7 اپریل کو خطہ لداخ کے بٹالک سیکٹر میں ایک فوجی چوکی کے برفانی تودے کی زد میں آنے سے تین فوجی اہلکار شہید جبکہ 2 دیگر کو زخمی حالت میں بچالیا گیا تھا ۔ سال 2016 میں خطہ لداخ میں واقع دنیا کے بلند ترین میدان جنگ سیاچن میں ایک فوجی کیمپ کے برفانی تودے کی زد میں آنے سے 11 فوجی اہلکار لقمہ اجل بنے تھے۔

First published: Feb 02, 2018 09:03 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading