உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سبرامنیم سوامی کا جموں و کشمیر میں پی ڈی پی - بی جے پی مخلوط حکومت کی برخاستگی کا مطالبہ

    بی جے پی لیڈر سبرامنیم سوامی نے ہفتہ کو کہا کہ جموں و کشمیر میں محبوبہ مفتی قیادت حکومت کو برخاست کیا جانا چاہئے اور ریاست میں صدر راج نافذ کیا جانا چاہئے

    بی جے پی لیڈر سبرامنیم سوامی نے ہفتہ کو کہا کہ جموں و کشمیر میں محبوبہ مفتی قیادت حکومت کو برخاست کیا جانا چاہئے اور ریاست میں صدر راج نافذ کیا جانا چاہئے

    بی جے پی لیڈر سبرامنیم سوامی نے ہفتہ کو کہا کہ جموں و کشمیر میں محبوبہ مفتی قیادت حکومت کو برخاست کیا جانا چاہئے اور ریاست میں صدر راج نافذ کیا جانا چاہئے

    • Agencies
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی : بی جے پی لیڈر سبرامنیم سوامی نے ہفتہ کو کہا کہ جموں و کشمیر میں محبوبہ مفتی قیادت حکومت کو برخاست کیا جانا چاہئے اور ریاست میں صدر راج نافذ کیا جانا چاہئے ۔ وادی میں جاری کشیدگی پر سوامی نے کہا کہ پی ڈی پی - بی جے پی اتحاد کا تجربہ ناکام ہو گیا ہے اور مظاہرہ کو قابو میں کرنے کے لئے فوجی طاقت ضروری ہے ۔

      انہوں نے کہا کہ شروع میں ہمیں ، بی جے پی حکومت کو لگا کہ چونکہ ہم جموں اور لداخ میں جیتے ہیں اور پی ڈی پی کشمیر میں جیتی ہے، اس لئے ہمیں اس کا استعمال کرنا چاہئے ۔ لیکن مجھ سمیت بہت سے لوگوں کو لگتا ہے کہ یہ تجربہ ناکام رہا ، اس سے محبوبہ مفتی حکومت کو نہ صرف استعفی دینا چاہئے، بلکہ اس حکومت کو برخاست بھی کیا جانا چاہئے ۔

      انڈیا ٹوڈے مائنڈ راکس سربراہ  کانفرنس کے ایک سیشن کے دوران بحث میں سوامی نے مجلس اتحاد المسلمین کے لیڈر اویسی پر بھی نشانہ سادھا  ۔ سوامی نے کہا کہ اگر ہم جدید سائنس کو دیکھیں گے ، تب ہندوستانی مسلمانوں کے آبا و اجداد ہندو تھے ۔ اگر کوئی مسلمان اسے قبول نہیں کرتا ہے ، تو وہ محب وطن نہیں ، بلکہ وہ غدار ہوگا۔ سیشن کے دوران اویسی نے بھی سوامی کو کرارا جواب دیا اور کہا کہ ہندوستانی آئین میں ایسی کوئی مجبوری نہیں ہے کہ کوئی بھارت ماتا کی جے کہے ۔

      اویسی نے کہا کہ قوم پرستی کی بجائے ہندوستان میں ہندو قوم پرستی کو مسلط کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے ۔ کسی کو کوئی خاص نعرہ لگانے کے لئے پابند نہیں کیا جا سکتا ۔ اویسی نے کشمیر اور پاکستان پر مرکز کی پالیسی کو لے کر وزیر اعظم نریندر مودی پر بھی نشانہ سادھا  ۔
      First published: