ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں۔کشمیر: پتھر کی کان وبال جان، کسی بھی وقت بڑے حادثےکا خدشہ، مقامی لوگوں میں خوف و ہراس: ویڈیو یہاں دیکھیں

لوگوں کا کہنا ہے کہ اس پہاڑی کے اوپری حصہ میں ابھی بھی کافی شِگاف پڑے ہوئے ہیں اور اگر انتظامیہ نے جنگی بنیادوں پر اقدامات نہیں اٹھائے تو کوئی بڑا حادثہ ہو سکتا ہے۔ 

  • Share this:
جموں۔کشمیر: پتھر کی کان وبال جان، کسی بھی وقت بڑے حادثےکا خدشہ، مقامی لوگوں میں خوف و ہراس: ویڈیو یہاں دیکھیں
حال ہی میں پہاڑ کا ایک بڑا حصہ گرگیا

جموں۔کشمیر کے ضلع بارہمولہ کے سوپور قصبہ کے ہردوشیواہ نامی گاؤں میں پتھر کی کان سے پسیاں گر آنے سے نزدیکی گاؤں میں خوف و دہشت کا ماحول پیدا ہوا ہے۔ اس واقعے میں اگرچہ کوئی مالی وجانی نقصان نہیں ہوا تاہم لوگ چاہتے ہیں کہ اس مقام پر کانکنی پر روک لگادی جائےتاکہ لوگوں کے مال و جان کی حفاظت ممکن ہوسکے۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ اس پہاڑی کے اوپری حصہ میں ابھی بھی کافی شِگاف پڑے ہوئے ہیں اور اگر انتظامیہ نے جنگی بنیادوں پر اقدامات نہیں اٹھائے تو کوئی بڑا حادثہ ہو سکتا ہے۔

سوپور قصبے سے چند کلومیٹر کی دوری پر واقع ہرد شیوا ہ گاوں میں اُس وقت خوف و دہشت کا ماحول برپا ہوا جب گزشتہ دنوں اس پتھر کی کان سے اس پہاڑ کا ایک بڑا حصہ اچانک ڈھ گیا۔ اس کان کے نزدیک رہنے والے لوگ محفوظ مقامات کی طرف بھاگنے لگے اور خوش قسمتی سے کوئی جانی و مالی نقصان نہیں ہوا۔


مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ یہ پتھر کی کان انکےلیے وبال جان بن چکی ہے اور کسی بھی وقت ایک بڑے حادثے کا باعث بن سکتی ہے۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ جب تک کانکنی کا کام لوگ ہاتھوں سے کرتے تھے تب تک ایسا کوئی حادثہ پیش نہیں آیا لیکن جب سے اس جگہ بھاری مشینوں سے پتھر نکالنے کا سلسلہ شروع ہوا تب سے اس پہاڑ کے نزدیک رہنے والے لوگوں کی زندگی اجیرن بن چکی ہے۔

پتھر کی کان سے انسانی جان و مال کو لا حق خطرے کے پیش نظر سرکار نے کچھ برس قبل اس جگہ سے پتھر نکالنے پر پوری طرح سے پابندی عائد کردی تھی تاہم کچھ خود غرض عناصر چوری چھپے مشینوں کی مدد سے اس پہاڑی سے پتھر نکالنے کے کام میں سرگرم عمل تھے جو متعلقہ محکمہ جات کے علم میں رہنے کے بغیر ناممکن تھا۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ اس کان سے پتھر نکالنے کے کام پر روک لگا دی جائے۔

Published by: sana Naeem
First published: Sep 18, 2020 09:40 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading