ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

واٹس ایپ کشمیریوں کو کر رہا ہے گروپ سے باہر، یہ ہے بڑی وجہ

رپورٹ کے مطابق، وادی میں میسیجنگ پلیٹ فارم کے صارفین واٹس ایپ گروپوں سے غائب ہونے لگے ہیں۔ لوگ حیران ہیں کہ کیوں ان کے نام گروپ سے ہٹ رہے ہیں۔

  • Share this:
واٹس ایپ کشمیریوں کو کر رہا ہے گروپ سے باہر، یہ ہے بڑی وجہ
جموں وکشمیر میں پچھلے 120 دنوں سے انٹرنیٹ خدمات بند ہیں( فائل فوٹو)۔

نئی دہلی۔ جموں وکشمیر سے آرٹیکل 370 منسوخ ہوئے چار مہینے سے زیادہ کا وقت گزر چکا ہے۔ حکومت کا دعویٰ ہے کہ زیادہ تر خدمات کو پھر سے شروع کیا جا چکا ہے لیکن انٹرنیٹ پر پابندی اب بھی لگی ہوئی ہے۔ اس بیچ خبر آ رہی ہے کہ جن واٹس ایپ گروپ سے کشمیری جڑے ہیں ان کے نام خود ہی واٹس ایپ گروپ سے ہٹتے جا رہے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق، وادی میں میسیجنگ پلیٹ فارم کے صارفین واٹس ایپ گروپوں سے غائب ہونے لگے ہیں۔ لوگ حیران ہیں کہ کیوں ان کے نام گروپ سے ہٹ رہے ہیں۔ وادی سے باہر بھی جن گروپوں سے کشمیری جڑے ہیں، ان میں سے بھی ان کے نام باہر ہوتے جا رہے ہیں۔

اب اس پر واٹس ایپ کی طرف سے وضاحت آئی ہے۔ کمپنی کی طرف سے کہا گیا ہے کہ واٹس ایپ پر جو اکاؤنٹ 120 دن تک ایکٹیو نہیں رہتا ہے اسے اس وقت کے بعد ڈی ایکٹیویٹ کر دیا جاتا ہے۔ سیکورٹی بنائے رکھنے اور ڈیٹا رٹینشن کو محدود کرنے کے لئے واٹس ایپ اکاؤنٹ 120 دنوں کی غیر فعالیت کے بعد ختم ہو جاتے ہیں۔

سوشل میڈیا پر اسکرین شاٹ شئیر کر رہے لوگ


اب سوشل میڈیا پر کئی لوگ ایسے اسکرین شاٹ شئیر کر رہے ہیں جن میں نظر آ رہا ہے کہ کس طرح کئی نمبر ایک کے بعد ایک گروپ سے لیفٹ ہوئے۔ بتا دیں کہ 120 دنوں کے بعد بھی کشمیر میں اب تک موبائل خدمات شروع نہیں ہو سکی ہیں۔ حالانکہ دوسری خدمات شروع کر دی گئی ہیں۔ اسکولوں اور کالجوں کے علاوہ سرکاری دفاتر بھی معمول طور پر کام کر رہے ہیں۔ لیکن حکومت کا کہنا ہے کہ اس نے سیکورٹی کے مدنظر ابھی موبائل خدمات شروع نہیں کی ہیں۔

First published: Dec 05, 2019 06:28 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading