ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

جاٹ تحریک : حکومت ریزرویشن دینے کیلئے تیار ، کمیٹی کی تشکیل

چندی گڑھ: ہریانہ میں ریزرویشن کے مطالبہ پر جاری جاٹ تحریک کے پرتشدد ہونے کے بعد کئی حصوں میں صورتحال آج بھی کشیدہ ہے اور سیکورٹی اہلکاروں نے متاثرہ علاقوں میں فلیگ مارچ کیا ہے۔ ہریانہ کے وزیر اعلی منوہر لال کھٹر سمیت کئی سیاسی رہنماؤں نے جاٹوں سے امن برقرار رکھنے کی اپیل کی ہے ۔ اس کے باوجود رات کو ریاست کے مختلف حصوں میں تشدد اور آگ زنی کے واقعات پیش آئے۔ روہتک، جیند، بھیوانی، جھجھر، سونی پت، حصار میں عام زندگی متاثر ہے۔ تشدد میں اب تک 8 لوگوں کی موت ہو گئی ہے۔

  • Pradesh18
  • Last Updated: Feb 21, 2016 08:35 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
جاٹ تحریک : حکومت ریزرویشن دینے کیلئے تیار ، کمیٹی کی تشکیل
چندی گڑھ: ہریانہ میں ریزرویشن کے مطالبہ پر جاری جاٹ تحریک کے پرتشدد ہونے کے بعد کئی حصوں میں صورتحال آج بھی کشیدہ ہے اور سیکورٹی اہلکاروں نے متاثرہ علاقوں میں فلیگ مارچ کیا ہے۔ ہریانہ کے وزیر اعلی منوہر لال کھٹر سمیت کئی سیاسی رہنماؤں نے جاٹوں سے امن برقرار رکھنے کی اپیل کی ہے ۔ اس کے باوجود رات کو ریاست کے مختلف حصوں میں تشدد اور آگ زنی کے واقعات پیش آئے۔ روہتک، جیند، بھیوانی، جھجھر، سونی پت، حصار میں عام زندگی متاثر ہے۔ تشدد میں اب تک 8 لوگوں کی موت ہو گئی ہے۔

نئی دہلی : ہریانہ میں ریزرویشن کی مانگ کو لے کر جاری جاٹ تحریک کو ختم کرنےکے لئے حکومت نے بڑی پہل کی ہے۔حکومت نے ایک کمیٹی تشکیل دی ہے ، جو ریزرویشن کے معاملہ کو دیکھے گی۔ وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے اس کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ اس کمیٹی کی سربراہی مرکزی وزیر وینکیا نائیڈو کریں گے۔


 اس سے قبل مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ اور جاٹ لیڈروں سے بات کرنے کے بعد بی جے پی کے جنرل سکریٹری انیل جین نے کہا تھا کہ ریاستی حکومت جاٹ ریزرویشن دے گی۔ ہم لوگوں سے امن برقرار رکھنے کی اپیل کرتے ہیں۔


انل جین نے کہا کہ جاٹوں کی تحریک کو دیکھتے ہوئے ہریانہ حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ جاٹوں کو اسی سیشن میں ریزرویشن دیا جائے گا۔ اس معاملے پر مرکز ایک اعلی سطحی کمیٹی بنائے گی جو ریزرویشن پر فیصلہ کرے گی۔


ہریانہ کے بی جے پی لیڈروں کے علاوہ ہریانہ کے جاٹ اور کھاپ لیڈر آج وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ سے ملے۔ اس فیصلے سے ملاقات میں موجود جاٹ لیڈر مطمئن نظر آئے۔


जाट आंदोलन : रोहतक में हुई लूट, हिंसा और दहशत की सच्‍ची कहानी, सुनें चश्मदीद की जुबानी


ادھر ہریانہ میں ریزرویشن کے مطالبہ پر جاری جاٹ تحریک کے پرتشدد ہونے کے بعد کئی حصوں میں صورتحال آج بھی کشیدہ ہے اور سیکورٹی اہلکاروں نے متاثرہ علاقوں میں فلیگ مارچ کیا ہے۔ ہریانہ کے وزیر اعلی منوہر لال کھٹر سمیت کئی سیاسی رہنماؤں نے جاٹوں سے امن برقرار رکھنے کی اپیل کی ہے ۔ اس کے باوجود رات کو ریاست کے مختلف حصوں میں تشدد اور آگ زنی کے واقعات پیش آئے۔ روہتک، جیند، بھیوانی، جھجھر، سونی پت، حصار میں عام زندگی متاثر ہے۔ تشدد میں اب تک 10  لوگوں کی موت ہو گئی ہے۔


روہتک میں کرفیو کے باوجود حالات بے قابو ہیں۔ روہتک شہر کی دکانوں میں رات کو لوٹ مار کے بعد آگ لگادی گئی ۔ جاٹ ریزرویشن تحریک کے نام پر فساد یوں نے روہتک کی مارکیٹ اور دکانوں کو آگ کے حوالے کر دیا۔ شہر میں اب بھی کشیدگی اور دہشت کا ماحول ہے۔ کرفیو نافذ ہونے کے باوجود صورت حال بے قابو ہے۔



گڑگاؤں میں مظاہرین نے سڑک کو جام کر دیا ہے، تاہم حالات قابو میں ہیں۔ کئی مقامات پر اضافی پولیس کی تعیناتی کی گئی ہے اور فوج کی ایک ٹکڑی بھی اسٹینڈ بائی کے طور پر رکھی گئی ہے۔


فسادیوں نے بھوانی کے منڈھال گاؤں کی پولیس چوکی کو آگ کو حوالے کردیا۔ اس واقعہ میں تھانہ انچارج زخمی ہوگئے اور انہیں اسپتال میں داخل کرایا گیا۔



شمالی ریلوے کے سی پی آر او نیرج شرما نے بتایا کہ 15 تاریخ سے ٹرین کی آمد و رفت متاثر ہے۔ کل سے ریواڑی اور جے پور روٹ بند ہے۔ کئی جگہوں پر اسٹیشنوں کو جلادیا گیا ہے۔ تقریبا 10 اسٹیشنوں کو جلایا گیا ہے۔ ایک اسٹیشن کو کل رات جلادیا گیا۔ دو مقامات پر ٹریک کو بھی جلانے کی کوشش کی گئی ہے اور کچھ جگہوں پر ٹریک اکھاڑ دئے گئے۔ کل تک 750 سے زیادہ ٹرینیں کینسل ہو جائیں گی ۔ لوگ ٹرین اسٹیٹس دیکھ کر ہی نکلیں۔200 مال گاڑیاں بھی متاثر ہوئی ہیں۔


ادھر دہلی کے جنتر منتر پر ہریانہ کے سابق وزیر اعلی بھوپندر ہڈا دھرنے پر بیٹھ گئے ہیں۔ ان کے ساتھ صوبے کے کانگریسی کارکنان بھی بھوک ہڑتال پر بیٹھے ہیں۔

First published: Feb 21, 2016 12:36 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading