ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

جاٹ تحریک میں نرمی ، پرتشدد واقعات میں 16 افراد ہلاک

چندی گڑھ ۔ ہریانہ حکومت نے آج دعوی کیا کہ سرکاری ملازمتوں میں ریزرویشن کے مطالبے کے سلسلے میں ریاست میں مشتعل جاٹ تحریک اب نرم پڑنے لگی ہے لیکن ریاست میں ہونے والے تشدد کے واقعات اور فائرنگ میں اب تک 16 افراد کی موت ہو چکی ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Feb 22, 2016 07:37 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
جاٹ تحریک میں نرمی ، پرتشدد واقعات میں 16 افراد ہلاک
چندی گڑھ ۔ ہریانہ حکومت نے آج دعوی کیا کہ سرکاری ملازمتوں میں ریزرویشن کے مطالبے کے سلسلے میں ریاست میں مشتعل جاٹ تحریک اب نرم پڑنے لگی ہے لیکن ریاست میں ہونے والے تشدد کے واقعات اور فائرنگ میں اب تک 16 افراد کی موت ہو چکی ہے۔

چندی گڑھ ۔ ہریانہ حکومت نے آج دعوی کیا کہ سرکاری ملازمتوں میں ریزرویشن کے مطالبے کے سلسلے میں ریاست میں مشتعل جاٹ تحریک اب نرم پڑنے لگی ہے لیکن ریاست میں ہونے والے تشدد کے واقعات اور فائرنگ میں اب تک 16 افراد کی موت ہو چکی ہے۔

ریاست میں ابھی بھی کئی شہروں میں کرفیو نافذ ہے اور وہاں فوج اور پولیس مشترکہ طور پر فلیگ مارچ کر رہی ہے۔ کچھ علاقے میں فسادیوں اور فوج کے درمیان تصادم ہونے کی اطلاعات ہیں۔ سونی پت میں ایسا ہی ایک واقعہ کے دوران فسادیوں کو بھگانے کے لیے کی گئی فائرنگ میں تین افراد کی موت ہو گئی۔


دریں اثنا ریاست میں جاٹ تحریک کی وجہ سے پیدا شدہ حالات کا جائزہ لینے کے لئے آج یہاں وزیر اعلی منوہر سنگھ کھٹر کی صدارت میں کابینہ کی میٹنگ ہوئی۔ میٹنگ کے بعد وزیر تعلیم رام ولاس شرما نے صحافیوں کو بتایا کہ جاٹ تحریک کے دوران اب تک 16 افراد کی موت ہو چکی ہے۔ انهوں نے دعوی کیا کہ جاٹ اور کھاپ رہنماؤں کے ساتھ مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ کی رہائش گاہ پر کل منعقدہ میٹنگ میں جاٹ ریزرویشن کے بارے میں مرکزی وزیر ایم وینکیا نائیڈو کی صدارت میں ایک کمیٹی کی تشکیل کے فیصلے کے بعد پارٹی کے مرکزی رہنماؤں اور جاٹ اور کھاپ رہنماؤں کی طرف سے کی گئی اپیلوں کا اثر نظر آنے لگا ہے۔ ریاست میں تشدد کے واقعات میں کمی آئی ہے۔


First published: Feb 22, 2016 07:37 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading