உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    صف بندی سے عدم برداشت کا ماحول بنتا ہے اور لوگوں میں مایوسی جھلکنے لگتی ہے: کیری

    امریکہ کے وزیر خارجہ جان کیری نے آج کہا کہ کسی بھی جگہ پولرائزیشن [صف بندی] ٹھیک نہیں کیونکہ اس سے عدم برداشت پیدا ہوتا ہے اور لوگوں میں حکومت سے مایوسی کی جھلکنے لگتی ہے۔

    امریکہ کے وزیر خارجہ جان کیری نے آج کہا کہ کسی بھی جگہ پولرائزیشن [صف بندی] ٹھیک نہیں کیونکہ اس سے عدم برداشت پیدا ہوتا ہے اور لوگوں میں حکومت سے مایوسی کی جھلکنے لگتی ہے۔

    امریکہ کے وزیر خارجہ جان کیری نے آج کہا کہ کسی بھی جگہ پولرائزیشن [صف بندی] ٹھیک نہیں کیونکہ اس سے عدم برداشت پیدا ہوتا ہے اور لوگوں میں حکومت سے مایوسی کی جھلکنے لگتی ہے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی : امریکہ کے وزیر خارجہ جان کیری نے آج کہا کہ کسی بھی جگہ پولرائزیشن [صف بندی] ٹھیک نہیں کیونکہ اس سے عدم برداشت پیدا ہوتا ہے اور لوگوں میں حکومت سے مایوسی کی جھلکنے لگتی ہے۔ دہلی کے ہندستانی ٹیکنالوجیائی ادارے (آئی آئی ٹی) میں طالب علموں سے بات چیت میں مسٹر کیری نے کہاکہ ہمیں اپنے تمام شہریوں کے حقوق کا احترام کرنا چاہیے خواہ وہ کسی بھی طبقے کے ہوں اور انہیں بغیر کسی خوف کے مزاحمت کرنے کی اجازت دینی چاہیے۔ لوگوں کے دماغ میں یہ خوف نہیں ہونا چاہئے کہ منھ کھولنے کی سزا میں انہیں جیل ہو سکتی ہے۔
      مسٹر کیری نے کہا کہ ہندستان اور امریکہ کےے تعلق کا حسن ناممکن کو حقیقت بنانے کی تاریخ میں دیکھا جا سکتا ہے۔ ہندستان ایک منفرد ثقافتی، نسلی اور مذہبی تنوع والا ملک ہے۔ بہت سے لوگ سوچتے تھے کہ سب سے بڑا مڈل کلاس تیار کرنا ناممکن ہے لیکن ہمارے ہندستان اور امریکہ میں امکانات لامحدود ہیں ۔ امریکہ اور ہندستان کی مشترکہ کامیابیوں کا انتظار ہے۔ مسٹر کیری نے کہا کہ ان کا ملک چاہتا ہے کہ ہندستان دو شعبوں میں تیزی سے بڑھے۔اس کے لئے ہندستان کو ریگولیٹری نظام بہتر بنانا ہوگا جو بیوروکریسی کو مؤثر اور معقول بنا دے گا۔ بیوروکریسی کا فیصلہ شریک عمل کی حیثیت کا حامل ہونا چاہئے نہ کہ مانع عمل کا۔
      دہشت گردی کے معاملے پر انہوں نے پاکستان پر اس عفریت کے خلاف لڑنے کا دباؤ بڑھایااورر کہاکہ یہ واضح رہے کہ پاکستان کو اپنے ملک میں سرگرم تنظیموں پر سخت کارروائی کرنی ہوگی۔ امریکہ پاکستان سے مسلسل اصرار کرتا آرہا ہے کہ وہ دہشت گرد کیمپوں کو تباہ کرے۔ انہوں نے کہاکہ "ہم نے اس ملک میں (دہشت گردوں کی) پناهگاهوں کی بات کی ہے۔پاکستانیوں نے بھی دہشت گردی کی وجہ سے بہت نقصان اٹھایاہے. پچاس ہزار پاکستانی دہشت گردی کی وجہ سے مارے جا چکے ہیں. انہیں ہمارے ساتھ مل کر ان بُرے عناصر کی پناهگاهوں کو تباہ کرنے میں مدد کرنی ہوگی۔
      First published: