ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

جموں وکشمیرمیں حکومت سازی کے لئے ہوگیا معاہدہ، الطاف بخاری ہوں گے وزیراعلیٰ: ذرائع

جموں وکشمیرمیں نئی حکومت کی تشکیل کے آثارہیں۔ ذرائع کے مطابق نیشنل کانفرنس، پی ڈی پی اورکانگریس میں اتحاد پراتفاق رائے بھی ہوگیا۔ 

  • Share this:
جموں وکشمیرمیں حکومت سازی کے لئے ہوگیا معاہدہ، الطاف بخاری ہوں گے وزیراعلیٰ: ذرائع
انہوں نے کہا تھا کہ ہمیں بتایا گیا ہے کہ اگر کسی ریاست یا یونین ٹریٹری کو ڈومیسائل قانون کے تحت 19 معاملات میں اختیارات ہیں تو جموں وکشمیر کو 20 معاملات میں اختیارات دیے جائیں گے۔

جموں وکشمیر میں نئی حکومت کی تشکیل کو لے کر محبوبہ مفتی کی پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی (پی ڈی پی)، عمرعبداللہ کی صدارت والی نیشنل کانفرنس (این سی) اورکانگریس میں معاہدہ ہونے کی خبرہے۔ ذرائع سے ملی اطلاعات کے مطابق ریاست کی سیاست میں سخت مخالف تصورکی جانے نیشنل کانفرنس اورپی ڈی پی نے بی جے پی کوروکنے کے لئے ساتھ آنے کا فیصلہ کیا ہے۔


ذرائع نے ساتھ ہی بتایا کہ تینوں پارٹیوں کی میٹنگ میں وزیرالعیٰ عہدہ کے لئے الطاف بخاری کے نام پراتفاق رائے بھی ہوگیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ تینوں پارٹیوں کے لیڈرجلد ہی گورنرستیہ پال ملک سے مل کرحکومت سازی کا دعویٰ پیش کریں گے۔


وہیں الطاف بخاری نے میڈیا سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ تینوں پارٹی کے لیڈروں نے پالیسی کی بنیاد پراتحاد کافیصلہ کیا ہے۔ فی الحال میں اس بارے میں زیادہ اطلاعات نہیں دے سکتا۔


قابل غورہے کہ پی ڈی پی کے پاس 28 ممبران اسمبلی ہیں جبکہ نیشنل کانفرنس کے پاس 15 اورکانگریس کے 12 ممبران اسمبلی ہیں۔ تینوں پارٹیوں کے پاس کل ملاکر45 ممبران اسمبلی ہیں جو کہ اکثریت سے کافی زیادہ ہے۔

واضح رہے کہ ریاست میں پی ڈی پی - بی جے پی اتحاد ٹوٹنے کے بعد فی الحال گورنرراج نافذ ہے۔ آئندہ 19 دسمبرکوگورنرراج کی 6 ماہ کی میعاد مکمل ہورہی ہے اوراسے مزید نہیں بڑھایا جاسکتاہے۔ اس طرح سے دونوں پارٹیوں کے


First published: Nov 21, 2018 04:42 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading