உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Gyanvapi mosque: گیانواپی کمپلیکس کےویڈیو سروےکاحکم، جج کو دھمکی کا موصول ہواخط!

     ہندو فریق نے دعویٰ کیا کہ شیولنگ "وضوخانہ" کے قریب پایا گیا۔

    ہندو فریق نے دعویٰ کیا کہ شیولنگ "وضوخانہ" کے قریب پایا گیا۔

    جج کو مخاطب کیے گئے مبینہ خط کے مطابق آپ نے بیان دیا ہے کہ گیانواپی مسجد کمپلیکس کا معائنہ ایک عام عمل ہے۔ آپ بت پرست ہیں، آپ مسجد کو مندر قرار دیں گے۔ کوئی بھی مسلمان ان سے صحیح فیصلے کی توقع نہیں کر سکتا۔

    • Share this:
      جج روی کمار دیواکر جنہوں نے وارانسی میں گیانواپی مسجد کمپلیکس کے ویڈیو سروے کا حکم دیا تھا، نے منگل کو اتر پردیش کے حکام کو مطلع کیا کہ انہیں ہاتھ سے لکھا ہوا دھمکی آمیز خط ملا ہے۔

      ایڈیشنل چیف سکریٹری (ہوم)، ڈائرکٹر جنرل آف پولیس (ڈی جی پی) اور وارانسی پولیس کمشنریٹ کو لکھے گئے خط میں، دیواکر نے کہا کہ انہیں یہ خط موصول ہوا ہے، جو مبینہ طور پر اسلامی آغاز موومنٹ کی جانب سے کاشف احمد صدیقی نے رجسٹرڈ ڈاک کے ذریعے لکھا ہے۔

      وارانسی کے پولس کمشنر اے ستیش گنیش نے جج کے ذریعہ خط کی وصولی کی تصدیق کی۔ گنیش نے کہا کہ ڈپٹی کمشنر آف پولیس ورون اس معاملے کی تحقیقات کر رہے ہیں۔

      پولیس افسر نے بتایا کہ جج کی حفاظت کے لیے کل نو پولیس اہلکار تعینات کیے گئے ہیں۔ خط کی ایک مبینہ کاپی سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئی ہے۔

      جج کو مخاطب کیے گئے مبینہ خط کے مطابق آپ نے بیان دیا ہے کہ گیانواپی مسجد کمپلیکس کا معائنہ ایک عام عمل ہے۔ آپ بت پرست ہیں، آپ مسجد کو مندر قرار دیں گے۔ کوئی بھی مسلمان ان سے صحیح فیصلے کی توقع نہیں کر سکتا۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Al Qaeda Threat:دہشت گرد تنظیم القاعدہ نے دی ہندوستان میں خودکش حملے کی دھمکی

      26 اپریل کو سول جج (سینئر ڈویژن) دیواکر نے گیانواپی کمپلیکس کے ویڈیو گرافی سروے کا حکم دیا تھا۔ سروے کی رپورٹ 19 مئی کو عدالت میں پیش کی گئی۔ ہندو فریق نے دعویٰ کیا ہے کہ گزشتہ ماہ گیانواپی مسجد شرینگر گوری کمپلیکس کے ویڈیو گرافی سروے کے دوران ایک شیولنگ ملا تھا۔

      مزید پڑھیں:BJP Leader Nupur Sharma News:مشتعل خلیجی ممالک سعودی عرب اور UAE کو کیسے منائے گا ہندوستان؟کیا ہے ماہرین کی رائے

      اس دعوے پر مسجد کمیٹی کے ارکان نے اختلاف کیا جنہوں نے کہا کہ یہ وضوخانہ کے ذخیرے میں پانی کے چشمے کے طریقہ کار کا حصہ ہے، جسے عقیدت مند نماز کی ادائیگی سے قبل رسمی وضو کرنے کے لیے استعمال کرتے ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: