ہوم » نیوز » No Category

کپل سبل نے کانگریسی امیدوار کے طور پر راجیہ سبھا کے لئے داخل کئے کاغذات نامزدگی

لکھنؤ۔ سابق مرکزی وزیراور سپریم کورٹ کے جانے مانے وکیل کپل سبل نے کانگریس کے امیدوار کے طور پر راجیہ سبھا کی رکنیت کے لئے آج یہاں کاغذات نامزدگی داخل کئے۔

  • UNI
  • Last Updated: May 30, 2016 08:45 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
کپل سبل نے کانگریسی امیدوار کے طور پر راجیہ سبھا کے لئے داخل کئے کاغذات نامزدگی
لکھنؤ۔ سابق مرکزی وزیراور سپریم کورٹ کے جانے مانے وکیل کپل سبل نے کانگریس کے امیدوار کے طور پر راجیہ سبھا کی رکنیت کے لئے آج یہاں کاغذات نامزدگی داخل کئے۔

لکھنؤ۔ سابق مرکزی وزیراور سپریم کورٹ کے جانے مانے وکیل کپل سبل نے کانگریس کے امیدوار کے طور پر راجیہ سبھا کی رکنیت کے لئے آج یہاں کاغذات نامزدگی داخل کئے۔ مسٹر سبل کے ساتھ ہی ریاستی قانون ساز کونسل کے لئے دیپک سنگھ نے بھی پرچہ داخل کیا۔ امیٹھی کے رہنے والے مسٹر سنگھ کو کانگریس نائب صدر راہل گاندھی کا قریبی آدمی سمجھا جاتا ہے۔ اترپردیش سے راجیہ سبھا کے لئے 11 ممبران اور قانون ساز اسمبلی کے لئے 13 ارکان کے انتخاب ہونے ہیں۔  راجیہ سبھا کے لئے مسٹر سنگھ سے پہلے 11 امیدوار اپنے کاغذات نامزدگی داخل کرچکے ہیں۔


اسمبلی کے چیف سکریٹری پردیپ کمار دوبے کے مطابق مسٹر سبل اور مسٹر سنگھ نے دو دو سیٹوں کے لئے پرچہ بھرا ہے۔ مسٹر سبل کے نامزدگی داخل کرنے کے وقت ریاست کے جیلوں کے وزیر اور سماج وادی پارٹی (ایس پی) کے سینئر لیڈر بلونت سنگھ رامو والیہ کی موجودگی سے واضح ہوگیا ہے کہ کانگریس امیدوار کو ایس پی کی حمایت مل سکتی ہے حالانکہ مسٹر رامو والیہ نے کہا کہ وہ ذاتی تعلقات کی بنا پر مسٹر سبل سے ملنے آئے ہیں۔

اس انتخابات میں اسمبلی کے ارکان ووٹر ہوتے ہیں ۔ کانگریس کے پاس محض 29 ووٹ ہیں، قانون ساز کونسل کے امیدوار کو کانگریس اپنے بل بوتے پر کامیاب کرالے گی لیکن مسٹر سبل کی جیت کے لئے پانچ فاضل ووٹوں کی ضرورت ہوگی۔ کونسل کے چناؤ میں جیت کے لئے 29 اور راجیہ سبھا کی رکنیت کی لے 34 ووٹوں کی ضرورت ہوگی۔


مسٹر سبل کی سماج وادی صدر ملائم سنگھ یادو سے نزدیکی کی وجہ سے یہ مانا جارہا ہے کہ کانگریس امیدوار کو پانچ ووٹوں کا انتظام سماج وادی یا چھوٹی پارٹیوں سے ہوسکتا ہے۔ دوسری جانب اتراکھنڈ کے وزیراعلی ہریش راوت کے اعتماد کا ووٹ حاصل کرتے وقت بہوجن سماج پارٹی کانگریس کا ساتھ دینے سے ماہرین کا خیال ہے کہ محترمہ مایاوتی بھی کپل سبل کو فاضل ووٹ دے کر راجیہ سبھا میں پہنچاسکتی ہیں۔


First published: May 30, 2016 08:45 PM IST