ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

کاس گنج میں پولیس پرحملہ کامعاملہ:پولیس انکاؤنٹرمیں ایک ملزم ہلاک،وزیراعلیٰ نے این ایس اے کے تحت کارروائی کا دیا حکم

کاس گنج میں ، شراب مافیا پر کارروائی کرنے جانے والی پولیس پر شرپسندوں نے حملہ کیا۔ اس میں ایک کانسٹیبل کو شرپسندوں نے پیٹ پیٹ کر ہلاک کردیا ، جبکہ ایک سب انسپکٹر شدید زخمی ہوگیا۔

  • Share this:
کاس گنج میں پولیس پرحملہ کامعاملہ:پولیس انکاؤنٹرمیں ایک ملزم ہلاک،وزیراعلیٰ نے این ایس اے کے تحت کارروائی کا دیا حکم
کاس گنج میں پولیس پر حملہ کا معاملہ: پولیس انکاؤنٹر میں ایک ملزم ہلاک

کاس گنج : منگل کے روز ضلع کاس گنج میں ، شراب مافیا پر کارروائی کرنے جانے والی پولیس پر شرپسندوں نے حملہ کیا۔ اس میں ایک کانسٹیبل کو شرپسندوں نے پیٹ پیٹ کر ہلاک کردیا ، جبکہ ایک سب انسپکٹر شدید زخمی ہوگیا۔ اس کے بعد ،حرکت میں آئی ، پولیس نے بدھ کی صبح سویرے ایک پولیس انکاؤنٹر میں کانسٹیبل کے قتل کےاہم ملزم موتی کے بھائی الکر سنگھ(Elkar Singh) کو ہلاک کردیا جب کہ دوسرے ملزمین کی گرفتاری کے لیے تلاشی مہم جاری ہے ۔ ہلاک شدگان الکر سنگھ بھی ایک عادی مجرم تھا اور کئی بار جیل میں قید رہا۔


بتادیں کہ پورا واقعہ سدھ پورہ تھانہ علاقہ کے ایک گاؤں ناگلہ دھیمر کا ہے ، جہاں سب انسپکٹر اشوک پالاور کانسٹیبل دیویندر شراب مافیا پر کارروائی کرنے گاؤں پہنچے تھے۔۔ گاؤں پہنچنے پر شراب مافیا نے پولیس پر حملہ کیا اور انہیں یرغمال بنا لیا۔ شرپسندوں نے اس کانسٹیبل کو زدوکوب کیا۔ اسی دوران پولیس اہلکار کو بے دردی سے مارا پیٹا گیا۔ اس پورے معاملے میں ، پولیس کی جانب سے بہت زیادہ غفلت برتی گئی ہے۔ بیکرو اسکینڈل سے سبق نہیں لیتے ہوئے ، غیر قانونی شراب مافیا کے خلاف کارروائی کرنے کے لئے صرف چند پولیس اہلکار پہنچے تھے۔ جب اعلی ٰحکام کو اس معاملے کے بارے میں معلومات ملی تو وہ بھی موقع پر پہنچ گئے۔ کافی دیر تک تلاشی مہم چلانے کے بعد ، گاؤں سے ڈیڑھ کلومیٹر دور کھیت میں سب انسپکٹر زخمی حالت میں ملے وہیں جبکہ اسی دوران مہلوک کانسٹبل کی لاش بھی برآمد کرلی گی ہے۔



اس معاملے میں شراب مافیا موتی کا نام سامنے آرہا ہے۔ پولیس ٹیم پر خطرناک حملہ کرنے کے ملزم کی تلاش تیز کردی گئی ہے۔ پورا گاؤں پولیس اور پی اے سی کے چاروں طرف سے گھرا ہوا ہے۔ یہ خیال کیا جاتا ہے کہ مافیا موتی اور اس کے درجنوں ساتھی کانسٹیبل اور انسپکٹر پر حملہ کرنے میں ملوث تھے۔ آگرہ کے اے ڈی جی اجے آنند نے بتایا کہ 6 ٹیموں کی تلاش کرکے پولیس تشکیل دی جارہی ہے۔ یہ ایک انتہائی سنگین نوعیت کا جرم ہے۔ کسی بھی صورت میں مجرموں کو نہیں بخشا جائے گا۔ ملزمین کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔


وزیر اعلی یوگی نے سخت کارروائی کرنے کی دی ہدایت

اتر پردیش کے وزیر اعلی ٰیوگی آدتیہ ناتھ نے کاس گنج کے سدھ پورہ تھانہ علاقے کے گاؤں ناگلہ دھیمر میں پولیس کانسٹیبل کی ہلاکت کی مذمت کی ہے۔ انہوں نے اس واقعے میں ملوث مجرموں کے خلاف سخت کارروائی کرنے کی ہدایت کی ہے۔ سی ایم یوگی نے کہا کہ ریاستی حکومت جرائم اور مجرموں کے خلاف صفر رواداری کی پالیسی پر کام کر رہی ہے۔ امن و امان کے سلسلے میں کسی سمجھوتہ اور کسی تاخیر کے بغیر اس واقعہ میں ملوث ملزمین کے خلاف کارروائی کی جائے۔ یوگی آدتیہ ناتھ نے تمام ملازمین کے خلاف نیشنل سیکورٹی ایکٹ یعنی این ایس اے کے تحت مقدمات درج کرکے کارروائی کرنے کی ہدایت دی ہے۔ وزیراعلیٰ نے اس واقعے میں زخمی پولیس اہلکاروں کے مناسب علاج کی ہدایت کی ہے۔ یوگی آدتیہ ناتھ نے شہید پولیس اہلکار کے خاندان کے ایک فرد کو سرکاری نوکری اور 50 لاکھ روپئے کا معاوضہ دینے کا اعلان کیاہے۔
Published by: Mirzaghani Baig
First published: Feb 10, 2021 08:26 AM IST