ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ایکسکلوزیو: دہلی فساد زدگان کے لئے کیجریوال سرکار  نے خرچ کیے محض 22 کروڑ 85 لاکھ روپے

فساد میں مارے گئے 53 افراد کے تمام کنبوں کو اب تک معاوضہ نہیں مل سکا ہے۔

  • Share this:
ایکسکلوزیو: دہلی فساد زدگان کے لئے کیجریوال سرکار  نے خرچ کیے محض 22 کروڑ 85 لاکھ روپے
دہلی فسادات کی فائل فوٹو

نئی دہلی۔ سال کے شروع میں دہلی میں ہوئے فسادات میں لوگوں کا کافی جانی ومالی نقصان ہوا تھا جس کے بعد دہلی حکومت نے متاثرین کے لواحقین کو اموات اور ہونے والے نقصانات کا معاوضہ دینے کا اعلان کیا تھا لیکن گزشتہ دنوں دہلی اقلیتی کمیشن کی جانب سے پیش کی گئی فیکٹ فائنڈنگ رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ متاثرین کو معاوضہ نہیں پہنچا ہے اور اب دہلی حکومت کے افسران نے دہلی اسمبلی کی مائنارٹی ویلفیئر کمیٹی کے سامنے اعتراف کیا ہے کہ اب تک دہلی حکومت میں فساد زدگان کی امداد اور معاوضہ کی مد  میں 22 کروڑ 85 لاکھ بائیس ہزار روپے ہی خرچ کیے ہیں۔


ہلاک شدگان کے تمام کنبوں کو بھی نہیں دیا جا سکا معاوضہ


فساد میں مارے گئے 53 افراد کے  تمام کنبوں کو اب تک معاوضہ نہیں مل سکا ہے۔ 47 افراد کے لواحقین اور وارثین کو تقریبا 6کروڑ 32لاکھ روپئے کا معاوضہ دیا گیا ہے۔ افسران کے مطابق 372 زخمیوں کی تصدیق ہوسکی جن میں سے صرف 244کو اب تک کل 1کروڑ44لاکھ روپیہ معاوضہ دیا گیا۔کل 1327گھروں کو نْقصان پہنچا جس میں سے 552کو 7کروڑ30لاکھ معاوضہ دیا گیا ہے۔1529کمرشیل جائدادوں کو نقصان پہونچا جس میں سے 816کو 7کروڑ 49لاکھ روپیہ معاوضہ دیا گیا جبکہ کل 27منقولہ جائدادوں کو نقصان پہونچا جس میں سے اب تک 10منقولہ جائدادوں کو ہوئے نقصان کا معاوضہ 4لاکھ 72ہزار روپیہ دیا گیا ہے۔سرکاری افسران نے مزید بتایا کہ 5اسکولوں کو نقصان پہونچا جس میں سے 3اسکولوں کو 20لاکھ معاوضہ اب تک دیا گیا۔اس کے علاوہ 22جھگیوں کو نقصان پہنچا جنکو 5لاکھ 50ہزار معاوضہ اب تک دیا گیا۔


دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال کی فائل فوٹو


صورتحال کے جائزے کے لیے بنائی گئی ذیلی کمیٹی

حالات کے مدنظر کمیٹی کی طرف سے ایک سب کمیٹی بنائی گئی ہے۔ کمیٹی کے چیئرمین اور اوکھلا سے عام آدمی پارٹی کے رکن اسمبلی امانت اللہ خان  نے ذیلی کمیٹی کو فساد متاثرین کی راحت رسانی کے کاموں کا جائزہ لینے اور سروے و تصدیق کرکے صحیح اعداد وشمار مہیا کرنے کی ہدایت دی ہے۔ ذیلی کمیٹی کی میٹنگ میں مصطفی آباد سے رکن اسمبلی حاجی یونس، سیلم پور سے عبد الرحمن، چاندنی چوک سے پرہلاد سنگھ ساہنی و دیگر ممبران نے شرکت کی۔ دہلی اسمبلی کی اقلیتی فلاح و بہبود کمیٹی کے صدر امانت اللہ خان نے فساد متاثرین کی راحت رسانی کے کام کا جائزہ لینے کے لئے بنائی گئی ذیلی کمیٹی کے ممبران کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ کمیٹی دہلی وقف بورڈ کے افسران کا تعاون لیکر جلد سے جلد یہ رپورٹ پیش کرے کہ اب تک کتنے متاثرین کو معاوضہ دیا گیا ہے اور کسے نہیں ملا ہے؟معاوضہ صحیح بنیاد پر دیا گیا ہے یا نہیں؟متاثرین کو ملنے والا معاوضہ ان کے نقصان کے مطابق ہے یا نہیں؟ اور کوئی فساد متاثر معاوضہ ملنے سے چھوٹ تو نہیں گیا ہے؟ساتھ ہی کمیٹی فساد متاثرین کی موجودہ صورت حال کا جائزہ لے اور جو متاثرین راحت رسانی سے بچے ہوئے ہیں ان تک معاوضہ پہونچائے اور ان کی باز آبادکاری میں تیزی لائے۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Aug 08, 2020 09:10 AM IST