ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ڈاکٹر کا قتل : کیجریوال کا مجرموں کے خلاف سخت کارروائی کا پولس کو حکم

نئی دہلی۔ دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے مغربی دہلی کے وکاس پوری علاقے میں ایک ڈاکٹر کو پیٹ پیٹ کر بے رحمی سے قتل کئے جانے والے واقعہ کو انتہائی ہولناک واقعہ سے تعبیر کرتے ہوئے کہا کہ اس کی جتنی بھی مذمت اور افسوس کی جائے وہ کم ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Mar 26, 2016 12:56 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ڈاکٹر کا قتل : کیجریوال کا مجرموں کے خلاف سخت کارروائی کا پولس کو حکم
نئی دہلی۔ دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے مغربی دہلی کے وکاس پوری علاقے میں ایک ڈاکٹر کو پیٹ پیٹ کر بے رحمی سے قتل کئے جانے والے واقعہ کو انتہائی ہولناک واقعہ سے تعبیر کرتے ہوئے کہا کہ اس کی جتنی بھی مذمت اور افسوس کی جائے وہ کم ہے۔

نئی دہلی۔ دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے مغربی دہلی کے وکاس پوری علاقے میں ایک ڈاکٹر کو پیٹ پیٹ کر بے رحمی سے قتل کئے جانے والے واقعہ کو انتہائی ہولناک واقعہ سے تعبیر کرتے ہوئے کہا کہ اس کی جتنی بھی مذمت اور افسوس کی جائے وہ کم ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس واقعے سے انہیں بہت تکلیف پہنچی ہے اور وہ صدمے میں ہیں۔


وزیر اعلی نے کہا کہ انہوں نے پولس کمشنر آلوک ورما سے خاطیوں کے خلاف سخت کاروائی کے لئے کہا ہے اور ایسے کسی بھی واقعے کے خلاف سخت کاروائی ناگزیر ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ ایک معاشرتی جرم ہے جسے روکا جانا ضروری ہے۔


مائکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر انہوں نے کہا’’یہ انتہائی افسوس ناک ہے۔ میں مقتول ڈاکٹر کے اہل خانہ سے رابطہ کرنے کی کوشش کر رہا ہوں۔ ابھی وہ صدمے میں ہیں۔ وہ کسی سے بات نہیں کرنا چاہتے۔ میں ان کے ساتھ ہوں۔ یہ بہیمانہ قتل ہے اور قصورواروں کو کسی بھی صورت میں بخشا نہیں جائے گا‘‘۔ وزیر صحت ستیندر جین نے آج کناٹ پلیس میں کہا کہ ہم قصورواروں کے خلاف سخت کاروائی کریں گے۔ اس میں کسی بھی طرح کی نرمی نہیں برتی جائے گی اور نہ ہی اس طرح کے واقعے کودہرانے کی اجازت دی جائے گی۔ یہ بہت ہی افسوسناک ہے۔اب تک 9افراد کو اس واقعے کے تعلق سے گرفتار کیا جا چکا ہے اور پولس تیزی سے اپنا کام کر رہی ہے۔


Pakistani policemen stand guard during S


واضح رہے کہ کل وکاس پوری کے ڈاکٹر پنکج نارنگ کو مبینہ طور پر بری طرح لاٹھی ڈنڈوں سے پیٹا گیا جس سے ان کی موقع پر ہی موت ہوگئی۔اس ہولناک قتل سے دارالحکومت

میں خوف و ہراس کی لہر پھیل گئی ہے۔ معمولی تنازع میں چند لوگوں نے ڈاکٹر نارنگ کو زدوکوب کیا جس میں چار نابالغ افراد بھی شامل ہیں جو فی الوقت پولس کی حراست میں ہیں۔


ایک سینئر پولس اہلکار نے بتایا کہ یہ واقعہ بدھ کی رات کا ہے جب ڈاکٹر نارنگ اپنے بیٹے اور بھتیجے کے ساتھ کرکٹ کھیل رہے تھے۔ہندوستان۔ بنگلہ دیش کے درمیان ہونے والے میچ کے آخری گیند میں ہندوستان کی جیت سے خوش ہوکر وہ بچوں کے ساتھ خوشیاں منا رہے تھے۔کرکٹ کھیلنے کے دوران گیند دور چلی گئی جسے لینے کے لئے انکا بیٹا دوڑنے لگا اور اسی درمیان ایک موٹر سائیکل تیزی سے وہاں سے گزری۔ ڈاکٹر نارنگ نے موٹر سائیکل سوار کو گاڑی آہستہ چلانے کو کہا اس خوف سے کہ کہیں بچے کو چوٹیں نہ آ جائیں۔ اسی بات پر موٹر سائیکل پر سوار نصیر سے ان کی کہا سنی ہوگئی اور دونوں میں زبردست تکرار ہونے لگی۔


نصیر تھوڑی دیر بعد وہاں سے چلا گیا اور اپنے چند ساتھیوں کے ساتھ پھر وہیں واپس آیا اور لاٹھی ۔ڈنڈوں اور لوہے کی راڈ سے ان کی پٹائی شروع کر دی۔ نصیر کے ساتھ کئی افراد تھے جنہوں نے بری طرح ڈاکٹر کی پٹائی کی اور زخموں کی تاب نہ لاکر ان کی موقع پر ہی موت ہوگئی۔ان لوگوں نے ڈاکٹر کے گھر میں گھس کر پٹائی کی اور اس وقت تک پیٹتے رہے جب تک ان کی موت نہیں ہوگئی۔ ان لوگوں نے ڈاکٹر نارنگ کا بچاؤ کرنے والوں کے ساتھ بھی لڑائی کی اور انہیں بھی چوٹیں آئیں۔


اس معاملے میں پولس نے 9 افراد کو گرفتار کیا ہے جس میں چار نابالغ ہیں۔کلیدی ملزم نصیر اور ایک خاتون میسر کو بھی پولس نے گرفتار کر لیا ہے۔

First published: Mar 26, 2016 12:42 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading