உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہلی حکومت بنام ایل جی : سپریم کورٹ نے کہا : دہلی کابینہ کے مشورہ پر کام کریں لیفٹیننٹ گورنر

    دہلی حکومت بنام لیفٹیننٹ فورنر کے اس معاملے میں سپریم کورٹ میں 11 عرضیاں داخل ہوئی تھیں۔

    دہلی حکومت بنام لیفٹیننٹ فورنر کے اس معاملے میں سپریم کورٹ میں 11 عرضیاں داخل ہوئی تھیں۔

    نئی دہلی: مرکز کے زیراقتدار دہلی حکومت میں منتخب کیجریوال حکومت یا لیفٹیننٹ گورنر میں سے کون ٹاپ پر ہوگا

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی: سپریم کورٹ نے بدھ کو حکم دیا کہ دہلی کے لیفٹیننٹ گورنر کابینہ کی صلاح ماننے کے پابند ہیں۔ چیف جسٹس دیپک مشرا کی قیادت والی پانچ رکنی آئینی بنچ نے الگ الگ لیکن اتفاق رائے والے فیصلہ میں کہا کہ لیفٹیننٹ گورنر آئین کے آرٹیکل 239اے اے کے التزاموں کو چھوڑ کر دیگر ایشوز پر منتخب سرکار کی صلاح ماننے کیلئے پابند ہیں۔
      جسٹس مشرا نے ساتھی جج جسٹس اے کے سیکری اور جسٹس اے ایم کھانولکر کی جانب سے فیصلہ پڑھا، جبکہ جسٹس ڈی وائی چندر چوڑ اور جسٹس اشوک بھوشن نے اپنا اپنا فیصلہ الگ سے سنایا۔
      عدالت نے کہا کہ دہلی کی پوزیشن مکمل ریاست سے الگ ہے۔ اور لیفٹیننٹ گورنر لااینڈ آرڈر ،پولیس اور اراضی سے متعلق معاملوں کیلئے خاص طور سے ذمہ دار ہیں لیکن دیگر معاملوں میں انہیں کابینہ کی صلاح ماننی پڑے گی۔
      آئینی بنچ نے کہا کہ لیفٹیننٹ گورنر کابینہ کے ہر ایک فیصلہ کو صدر جمہوریہ کے پاس نہیں بھیج سکتے۔عدالت عظمیٰ نے واضح کیا کہ لیفٹیننٹ گورنر کو منتخب سرکار کے کام کاج میں ر خنہ نہیں ڈالنا چاہئے۔
      First published: