ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

چوٹالہ کو پیرول دینے کے معاملہ میں نجیب جنگ اوراروند کیجریوال ایک مرتبہ پھر آمنے سامنے

نئی دہلی۔ ٹیچروں کی بھرتی کے گھپلہ میں سزا کاٹ رہے ہریانہ کے سابق وزیر اعلی اوم پرکاش چوٹالہ کو پیرول دینے کے معاملہ میں لیفٹنٹ گورنر نجیب جنگ اور دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال ایک مرتبہ پھر اختیارات کو لے کر آمنے سامنے ڈٹ گئے ہیں۔

  • UNI
  • Last Updated: Oct 29, 2015 08:09 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
چوٹالہ کو پیرول دینے کے معاملہ میں نجیب جنگ اوراروند کیجریوال ایک مرتبہ پھر آمنے سامنے
نئی دہلی۔ ٹیچروں کی بھرتی کے گھپلہ میں سزا کاٹ رہے ہریانہ کے سابق وزیر اعلی اوم پرکاش چوٹالہ کو پیرول دینے کے معاملہ میں لیفٹنٹ گورنر نجیب جنگ اور دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال ایک مرتبہ پھر اختیارات کو لے کر آمنے سامنے ڈٹ گئے ہیں۔

نئی دہلی۔  ٹیچروں کی بھرتی کے گھپلہ میں سزا کاٹ رہے ہریانہ کے سابق وزیر اعلی اوم پرکاش چوٹالہ کو پیرول دینے کے معاملہ میں لیفٹنٹ گورنر نجیب جنگ اور دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال ایک مرتبہ پھر اختیارات کو لے کر آمنے سامنے ڈٹ گئے ہیں۔


میڈیا میں ایسی خبریں آئی تھیں کہ مسٹر کیجریوال نے چوٹالہ کو پیرول دینے والی فائل گورنر ہاؤس کو لوٹا دی اور مسٹر جنگ کی منشا پر ہی سوال اٹھائے۔ خبروں میں کہا گیا ہے کہ لیفٹنٹ گورنر کو بتانا چاہیے کہ وہ کس سیاسی دباؤ میں چوٹالہ کو پیرول دینا چاہتے ہیں۔ اتنا ہی نہیں مسٹر کیجریوال نے پچھلے سالوں میں چوٹالہ کو دی گئی پیرول کی جانچ کا حکم محکمہ داخلہ کو دیا۔ گورنر ہاؤس کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ چوٹالہ کو پیرول دیئے جانے کے حوالے سے میڈیا کی جانب سے کئی لوگوں نے معلومات طلب کی تھیں۔ اس تعلق سے واضح کیا جاتا ہے کہ چوٹالہ نے علاج کے لئے پیرول کی درخواست کی تھی۔


چیف سکریٹری (داخلہ) اور دہلی سرکار کے وزیر داخلہ نے اس بنیاد پر پیرول نہ دینے کی سفارش کی تھی کہ سزا یافتہ کی اس سال 4اپریل سے ایک ماہ کا پیرول دیاگیا جو 5 مئی تک تھا جسے بڑھاکر 28 مئی کیاگیا لیکن انہوں نے تین جون کو خود سپردگی کردی۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ لیفٹننٹ گورنر نے چوٹالہ کی پیرول کی عرضی کو 5 اکتوبر کو ہی نامنظور کردیاتھا اس کے لئے یہ وجہ بتائی گئی تھی کہ پچھلے پیرول اور نئے پیرول کے درمیان کم از کم چھ ماہ کا فاصلہ ہونا چاہیے اس کے بعد چوٹالہ کی جانب سے گورنر ہاؤس کو پیرول کی کوئی اور درخواست نہیں ملی۔


گورنر ہاؤس نے کہا کہ یہ واضح کیا جاتا ہے کہ محکمہ داخلہ کی طرف سے جو فائل سونپی گئی ہے اس کے حقائق کی بنیاد پر پیرول کی منظوری اور اس کو نامنظور کرنے کا اختیار انتظامیہ یعنی دہلی کے لیفٹنٹ گورنر کو ہے۔

First published: Oct 29, 2015 08:08 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading