ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ارون جیٹلی کے خلاف محاذ آرائی کی ملی سزا ، کیرتی آزاد بی جے پی سے معطل

نئی دہلی: دہلی اور ضلع کرکٹ ایسوسی ایشن (ڈی ڈی سی اے) میں مالی بے ضابطگیوں کے سلسلے میں وزیر خزانہ ارون جیٹلی کو کٹہرے میں کھڑا کرنے والے پارٹی کے ممبر پارلیمنٹ کیرتی آزاد کو بھارتیہ جنتاپارٹی نے آج معطل کردیا۔

  • UNI
  • Last Updated: Dec 23, 2015 08:10 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ارون جیٹلی کے خلاف محاذ آرائی کی ملی سزا ، کیرتی آزاد بی جے پی سے معطل
نئی دہلی: دہلی اور ضلع کرکٹ ایسوسی ایشن (ڈی ڈی سی اے) میں مالی بے ضابطگیوں کے سلسلے میں وزیر خزانہ ارون جیٹلی کو کٹہرے میں کھڑا کرنے والے پارٹی کے ممبر پارلیمنٹ کیرتی آزاد کو بھارتیہ جنتاپارٹی نے آج معطل کردیا۔

نئی دہلی: دہلی اور ضلع کرکٹ ایسوسی ایشن (ڈی ڈی سی اے) میں مالی بے ضابطگیوں کے سلسلے میں وزیر خزانہ ارون جیٹلی کو کٹہرے میں کھڑا کرنے والے پارٹی کے ممبر پارلیمنٹ کیرتی آزاد کو بھارتیہ جنتاپارٹی نے آج معطل کردیا۔ بی جے پی کے جنرل سکریٹری ارون سنگھ نے بتایا کہ مسٹر آزاد کو پارٹی مخالف سرگرمیوں کی وجہ سے معطل کردیا گیا ہے۔ یہ حکم فوری طور پر نافذ العمل ہوگیا ہے۔


بہار میں دربھنگہ سے پارٹی کے ممبر پارلیمنٹ اور سابق کرکٹر مسٹر آزاد گذشتہ کئی برسوں سے ڈی ڈی سی اے میں بے ضابطگیوں کی بات کررہے ہیں ، لیکن حال ہی میں دہلی کے وزیراعلی اروند کیجریوال کے ذریعہ مسٹر جیٹلی پر اس معاملے میں الزام لگائے جانے کے بعد انہوں نے پھر سے یہ معاملہ اٹھایا اور پارٹی قیادت کے منع کرنے کے باوجود گذشتہ اتوار کو ایک پریس کانفرنس کرکے وزیر خزانہ سے کئی سوالات پوچھے۔ مسٹرجیٹلی 13 سال تک ڈی ڈی سی اے کے صدر رہے تھے۔


مسٹر کیرتی آزاد کو پہلے بی جے پی کے آرگنائزیشن سکریٹری رام لال اور پھر پارٹی کے قومی صدر امت شاہ نے معاملے کو آگے بہ بڑھانے کا مشورہ دیا تھا ، لیکن انہوں نے مشورہ ماننے سے انکار کردیا اور پریس کانفرنس کی۔ انہوں نے پارلیمنٹ میں بھی اس معاملے کی انکوائری کے لئے ہائی کورٹ کی نگرانی میں ایس آئی ٹی کے قیام کا مطالبہ کیا تھا۔


مسٹر آزاد کا دعوی ہے کہ مسٹر جیٹلی کے ڈی ڈی سی اے کا صدر رہنے کے دوران ادارہ میں کئی مالیاتی بے ضابطگیاں ہوئیں ،  لیکن انہوں نے اس پر کوئی کارروائی نہیں کی۔


مسٹر آزاد کے پارٹی اعلی کمان کے منع کرنے کے باوجود پریس کانفرنس کرنے کے بعد یہ قیاس آرائی کی جارہی تھی کہ پارٹی مسٹر آزاد کے خلاف  کارروائی کرسکتی ہے اور آج پارلیمنٹ کا سرمائی اجلاس غیر معینہ مدت کے لئے ملتوی ہونے کے بعد انہیں پارٹی سے معطل کردیا گیا۔


کانگریس پارٹی نے پارلیمنٹ کے اندر اور باہر مسٹر جیٹلی کو کابینہ سے برطرف کرنے کا مطالبہ زور شورے اٹھایا جس سے حکومت اور بی جے پی کی کافی سبکی ہوئی۔ وزیراعظم نریندر مودی اور مسٹر شاہ نے مسٹر جیٹلی کے خلاف الزامات کو بے بنیاد قرار دیا ہے۔ مسٹر جیٹلی نے اپنے اوپر عائد الزامات کو لوک سبھا میں پوری طرح بے بنیاد قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ ایوان سے باہر یہ الزام لگانے والوں سے وہ اپنے طریقے سے نمٹ رہے ہیں لیکن انہوں نے مسٹر آزاد کے بارے میں کوئی تبصرہ نہیں کیا تھا۔


دہلی کے وزیراعلی اروند کیجریوال نے مسٹر آزاد کی معطلی پر سخت ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ اس سے بی جے پی کا یہ راز کھل گیا ہے کہ وہ پوری طرح بدعنوانی میں ملوث ہے۔ مسٹر آزاد کا قصور یہی ہے کہ انہوں نے بدعنوانی کے خلاف آواز اٹھائی ہے۔


کانگریس کے جنرل سیکریٹری دگ وجے سنگھ نے ٹوئٹ کرکے کہا کہ بی جے پی نے مسٹر آزاد کو اس لئے معطل کیا کہ انہوں نے بدعنوانی کے خلاف آواز اٹھائی ۔ کیا بی جے پی میں بدعنوانی کے خلاف آواز بلند کرنے والوں کا انجام یہی ہوگا۔ پہلے مسٹر رام جیٹھ ملانی اور اب کیرتی آزاد ، کیا اگلا نمبر شتروگھن سنہا کا ہے؟

First published: Dec 23, 2015 08:08 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading