உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سی جے آئی بولے، اپنے ہاتھوں پر خون نہیں چاہتے، آپ قانون نافذ کرنے سے روکیں گے یا ہم اٹھائیں قدم

    چیف جسٹس نے کہا کہ جس طرح سے حکومت اس معاملے کو ہینڈل کر رہی ہے، ہم اس سے خوش نہیں ہیں۔

    چیف جسٹس نے کہا کہ جس طرح سے حکومت اس معاملے کو ہینڈل کر رہی ہے، ہم اس سے خوش نہیں ہیں۔

    Farmers Protest 47 Day : چیف جسٹس نے کہا کہ جس طرح سے حکومت اس معاملے کو ہینڈل کر رہی ہے، ہم اس سے خوش نہیں ہیں۔ ہمیں نہیں پتہ کہ آپ نے قانون پاس کرنے سے پہلے کیا کیا۔ گزشتی سماعت میں بھی بات چیت کے بارے میں کہا گیا، کیا ہو رہا ہے۔

    • Share this:
      کسان زرعی قوانین کو منسوخ (New Agriculture Law 2020)  کرنے کے اپنے مطالبے پر قائم ہیں جبکہ مرکز نے بھی صاف کردیا ہے کہ وہ زرعی قوانین واپس نہیں لے گا۔مرکز نے قوانین میں ترمیم کرنے کی بات کہی ہے۔ ملک بھر میں کسانوں کے مظاہرے کا آج  46 واں دن ہے۔ مرکزی حکومت اور کسانوں کے درمیان اب تک صرف دو باتوں پر اتفاق رائے بنی ہے۔ قانون کو واپس لیکر کسانوں کے سخت رخ کے چلتے مسئلہ حل نہیں ہو پا رہا ہے۔ کسان یہ بھی چاہتے ہیں کہ حکومت کسی بھی طرح کی خرید میں کم سے کم سپورٹ قیمت یعنی ایم ایس پی کی ضمانت دے۔ اس درمیان کسان آندولن اور زرعی قانون سے جڑے سبھی معاملوں کی سپریم کورٹ میں سماعت ہوئی۔

      سرکاری کی طرف سے عدالت میں کہا گیا کہ دونوں فریق  میں حال ہی میں ملاقات ہوئی جس میں طے ہوا ہے کہ چرچا چلتی رہے گی۔ چیف جسٹس نے کہا کہ جس طرح سے حکومت اس معاملے کو ہینڈل کر رہی ہے، ہم اس سے خوش نہیں ہیں۔ ہمیں نہیں پتہ کہ آپ نے قانون پاس کرنے سے پہلے کیا کیا۔ گزشتی سماعت میں بھی بات چیت کے بارے میں کہا گیا، کیا ہو رہا ہے۔



      چیف جسٹس نے کہا کہ ہمارے پاس ایسی ایک بھی دلیل نہیں آئی جس میں اس قانون کی تعریف ہوئی ہو۔ عدالت نے کہا کہ ہم کسان معاملے میں ایکسپرٹ نہیں ہیں لیکن کیا آپ ان قوانین کو روکیں گے یا ہم ہم قدم اٹھائیں۔ حالات مسلسل بدتر  ہوتے جا رہے ہیں، لوگ مر رہے ہیں اور ٹھنڈ میں بیٹھے ہیں۔ وہاں کھانے، پینے کا کون خیال رکھ رہا ہے؟

      چیف جسٹس نے کہا کہ ہمیں اندیشہ ہے کہ کسی دن وہاں تشدد بھڑک سکتا ہے۔ اس کے بعد سالوے نے کہا کہ کم از کم یقین دہانی ہونی چاہئے کہ آندولن ملتوی ہوگا۔ سب کمیٹی کے سامنے جائیں گے۔ اس پر سی جے آئی نے کہ یہی ہم چاہتے ہیں لیکن سب کچھ ایک ہی حکم سے نہیں ہو سکتا۔ ہم ایسا نہیں کہیں گے کہ کوئی آندولن نہ کرے۔ یہ کہہ سکتے ہیں کہ اس جگہ پر نہ کریں۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: