ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

دہلی میں ٹریکٹر ریلی کے دوران تشدد کے بعد کیا کسان تحریک کمزور ہوگی؟

اس دوران کسان آندولن (Kisaan Andolan) بھی دو حصوں میں بٹتا نظر آرہا ہے۔ راشٹریہ کسان مزدور سنگھ نے احتجاج ختم کرنے کا اعلان کردیا ہے۔ کل کے تشدد (Protest Violence) کے بعد وی ایم سنگھ نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ہم اپنا آندولن یہیں ختم کرتے ہیں۔

  • Share this:

دہلی میں کل یوم جمہوریہ ( Republic Day 2021) کے موقع پر کسان ٹریکٹر ریلی (Kisan Tractor Rally ) میں جو ہوا اسے کوئی صحیح نہیں ٹھرا رہا ہے۔ درجنوں پولیس اہلکار زخمی ہوئے، ایک کسان کی جان گئی لیکن سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ کیا کل کے واقعے کے بعد تحریک (Kisaan Andolan) کمزور پڑے گی یا اس میں شدت دیکھنے کو ملے گی۔ اس دوران کسان آندولن (Kisaan Andolan) بھی دو حصوں میں بٹتا نظر آرہا ہے۔ راشٹریہ کسان مزدور سنگھ نے احتجاج ختم کرنے کا اعلان کردیا ہے۔ کل کے تشدد (Protest Violence) کے بعد وی ایم سنگھ نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ہم اپنا آندولن یہیں ختم کرتے ہیں۔ میں ہٹ رہا ہوں میرے ساتھ لوگ بھی ہٹیں گے۔ ہم ملک کو بدنام کرنے کےلئے نہیں آئے ہیں۔ وی ایم سنگھ نے راکیش ٹکیت پر بھی حملہ بولا۔ انہوں نے کہا کہ ٹکیت کی انٹری سرکاری ہے۔


اس دوران چھبیس جنوری (26 January ) کو ٹریکٹر ریلی (Kisan Tractor Rally ) کے دوران ہوئے تشدد Violence کا جائزہ لینے کے لیے وزارت داخلہ کی میٹنگ ہوئی۔ اس میٹنگ میں دہلی کے پولیس کمشنر اور انٹیلی جنس بیورو کے چیف بھی موجود رہے۔ ذرائع کے مطابق اس میٹنگ میں تشدد برپا کرنے والوں کے خلاف سخت کاروائی کرنے پر غوروخوض کیا گیا ۔


اس بیچ دہلی پولیس کی کاروائی جاری ہے۔ کئی مقدمات درج کیے گیے ہیں۔ اُن میں کچھ کسان لیڈروں کے بھی نام ہیں ۔ اس بیچ پولیس نے کاروائی کرتے ہوئے سیکڑوں افراد کو گرفتار کیا ہے۔ پولیس ان سے پوچھ تاچھ کررہی ہے۔ قصوروار پائے جانے پر ان کے خلاف عوامی املاک کو نقصان پہنچانے اور پولیس پر حملہ کرنے کا معاملہ درج کیا جائے گا۔



یوم جمہوریہ کے موقع پر کسان ٹریکٹر ریلی کے دوران ہوئے تشدد کو لے کر جہاں انتظامیہ حرکت میں ہے اور سخت کارروائی کی تیاری کررہی ہے وہیں بیان بازی کا دور بھی جاری ہے ۔ تشدد میں دیپ سدھو کا نام آنے کے بعد کسان لیڈر راکیش ٹکیٹ نے کہا کہ دیپ سدھو سکھ نہیں ہے اور اس کا بی جے پی کے ساتھ تعلق ہے ۔


Published by: Sana Naeem
First published: Jan 27, 2021 07:48 PM IST