உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    الہ آباد: ایک صدی پرانا گمنام امام باڑہ دوبارہ ہوا آباد

    الہ آباد: ایک صدی پرانا گمنام امام باڑہ دوبارہ ہوا آباد

    الہ آباد: ایک صدی پرانا گمنام امام باڑہ دوبارہ ہوا آباد

    شعیب عباس کا کہنا ہے کہ وقف وزیر جان کا اندراج شیعہ وقف بورڈ میں کرا دیا گیا ہے اور اس امام باڑے میں باقاعدہ عزاداری کی شروعات بھی کر دی گئی ہے۔

    • Share this:
    الہ آباد۔ ملک کی تقسیم نے مسلمانوں کو ثقافتی اور مذہبی اعتبار سے کافی  نقصان پہنچایا ہے ۔ اس تقسیم نے مسلم آبادی سے باہر واقع بہت سی  مساجد، درگاہوں  اور امام  باڑوں کو  گم نامی کا شکار بنا دیا ہے۔ یو پی میں ایسے کئی امام باڑے ہیں جو آج بھی گمنامی کے پردے میں پوشیدہ ہیں ۔ انہیں امام باڑوں میں سے ایک  الہ آباد کا قدیم ’’ امام باڑہ وزیر جان ‘‘ بھی ہے ۔ امام باڑہ وزیرجان کئی دہائیوں تک گمنامی کے اندھیرے میں رہنے کے بعداب محبان حسین  نے اس کو از سر نو آباد کر دیا ہے۔

    امام باڑہ وزیر جان نہ  صرف آج گمنامی کے اندھیرے سے نکل کر منظر عام پر آ چکا ہے ،  بلکہ ایام اعزا  کے دوران  اس کی رونق میں بھی  اضافہ ہو جاتا ہے ۔ یہ امام باڑہ الہ آباد شہر کے قدیم ترین محلہ  ’’ میر گنج ‘‘ میں واقع ہے۔ تقسیم سے پہلے محلہ میر گنج  مسلم اکثریتی علاقہ ہوا کرتا تھا ۔ خاص طور سے یہاں شیعہ فرقے سے تعلق  رکھنے والے  افراد بڑی تعداد میں آباد  تھے۔ یہی وجہ ہے کہ اس علاقے میں کئی بڑے عزا خانے ہوا کرتے تھے ۔ لیکن ان میں سے کئی عزا خانے آج معدوم ہو چکے ہیں۔ علاقے میں گمنام عزاخانوں میں وزیر جان کے امام باڑے کو از سر  نو آباد کیا گیا ہے۔

    ایک صدی سے زیادہ  پرانا ’’امام باڑہ وزیر جان‘‘ محرم کا مہینہ شروع ہوتے ہی اب مجالس سے آباد ہونے لگا ہے۔ امام باڑے کی بانیہ وزیر جان کے پاکستان ہجرت کر جانے کی وجہ سے کئی دہائیوں تک یہ امام باڑہ گمنامی کا شکار رہا ہے ۔ دوسرے فرقے سے تعلق رکھنے والے بعض افراد نے اس امام باڑے کی رجسٹری  اپنے نام کرا لی تھی ۔لیکن شہر میں اوقاف کے تحفظ کے لئے کام کرنے والے افراد نے امام باڑہ وزیر جان کو غیر قانونی قبضے سے اب آزاد کرا لیا ہے ۔ امام باڑہ وزیر جان کے موجودہ متولی  اور وقف تحفظ کے کارکن  شعیب عباس خان کا کہنا ہے کہ امام باڑہ وزیر جان کی یازیابی کے لئے ایک طویل اور صبر آزما لڑائی لڑنی پڑی ہے۔

    شعیب عباس کا کہنا ہے کہ وقف وزیر جان کا اندراج شیعہ وقف بورڈ میں کرا دیا گیا ہے اور اس  امام باڑے میں باقاعدہ عزاداری کی شروعات بھی کر دی گئی ہے۔ کورونا کی گائڈ لائن کے چلتے اس سال  امام باڑہ وزیر جان میں مجالس کے سلسلے کو محدود کر دیا گیا ہے ۔ سماجی فاصلے کو بر قرار رکھتے ہوئے دس روزہ مجالس کا آغاز ہو گیا ہے۔ امام باڑہ وزیر جان آج میر گنج علاقے کا ایک اہم امام باڑہ شمار کیا جاتا ہے ۔ ماہ محرم کے علاوہ یہاں ہر مہینے ایک مجلس عزا منعقد کی جاتی ہے ۔ تاکہ اس امام باڑے میں عزاداری سے متعلق سر گرمیاں جا ری رکھی جا سکیں۔
    Published by:Nadeem Ahmad
    First published: