உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    لوک سبھا میں تین طلاق بل پیش کرنے کی تیاری میں این ڈی اے حکومت، جے ڈی یو کرے گی مخالفت

    بھارتیہ جنتا پارٹی نے وہپ جاری کرکے اپنے ارکان پارلیمنٹ کو پارلیمنٹ میں پیش ہونے کی ہدایت جاری کی ہے۔

    بھارتیہ جنتا پارٹی نے وہپ جاری کرکے اپنے ارکان پارلیمنٹ کو پارلیمنٹ میں پیش ہونے کی ہدایت جاری کی ہے۔

    بھارتیہ جنتا پارٹی نے وہپ جاری کرکے اپنے ارکان پارلیمنٹ کو پارلیمنٹ میں پیش ہونے کی ہدایت جاری کی ہے۔

    • Share this:
      لوک سبھا کے مانسون سیشن میں جمعرات کو طلاق ثلاثہ بل پیش کیا جائے گا۔ بی جے پی نے وہپ جاری کرکے اپنے اراکین پارلیمنٹ کو پارلیمنٹ میں پیش ہونے کا ہدایت نامہ جاری کیا ہے۔ دوسری جانب کانگریس پارٹی نے بھی اس کے مدنظرلوک سبھا اورراجیہ سبھا میں اراکین پارلیمنٹ کے لئے آئندہ دو دن حاضررہنے کے لئے وہپ جاری کردیا ہے۔ اس سے قبل پارلیمنٹ میں بجٹ سیشن کے دوران پانچویں دن 21 جون کو ہی اس بل کا مسودہ پیش کیا گیا تھا، جس پر اپوزیشن پارٹیوں نے سخت اعتراض ظاہر کیا ہے۔
      بتایا جارہا ہے کہ اس مرتبہ بھی نتیش کمار کی پارٹی جے ڈی یو تین طلاق بل کی مخالفت کرے گی۔
      بل پرحکومت نے کیا ہے یہ دعویٰ
      حکومت نے اس بل کو لے کر دعویٰ کیا ہے کہ طلاق ثلاثہ بل مسلم خواتین کومساوی حقوق فراہم کرے گا اورانصاف کو یقینی بنائے گا۔ یہ بل شادی شدہ خواتین کے حقوق کی حفاظت میں مدد کرے گا اوران کے شوہروں کے ذریعہ 'طلاق بدعت' دینے سے روکے گا۔
      تین طلاق بل کے تحت جس مسلم خواتین کو طلاق دیا گیا ہے۔ اس کی اطلاع کی بنیاد پر مجسٹریٹ کی اجازت سے جرم کوسخت بنایا گیا ہے۔ بل میں مجسٹریٹ کو ملزم کوضمانت پر رہا کرنے سے قبل اس شادی شدہ مسلم خاتون کی بات سننے کا التزام کیا گیا ہے جسے طلاق دیا گیا ہے۔



      تین طلاق بل میں اس شادی شدہ خاتون اوران کے بچوں کوگزارا بھتہ دینے کی سہولت ہے۔ اس بل میں جرم کو سنگین بنانے کا التزام ہے۔ اگر پولیس تھانہ کے انچارج کو اس شادی شدہ خاتون یا اس کے کسی قریبی رشتہ دارکے ذریعہ جرم ہونے سے متعلق اطلاع دی جاتی ہے، جسے طلاق دیا گیا ہے۔ تین طلاق بل کے مطابق تین طلاق کی روایت کو ختم اورغیرقانونی اعلان کیا گیا ہے۔ اسے تین سال کی قید کی سزا اورجرمانے کے ساتھ مجرمانہ جرم تسلیم کیا گیا ہے۔

      First published: