اپنا ضلع منتخب کریں۔

    اومی کرون کے نئے ویرینٹس سے کئی لوگ متاثر، آخر کیسے ہوتی ہے اس کی پہچان اور کیسے بچا جائے؟

    کورونا کے نئے ویرینٹ کے ہندوستان میں کیس۔

    کورونا کے نئے ویرینٹ کے ہندوستان میں کیس۔

    ڈاکٹروں کے مطابق نئے اومی کرون کے ویرینٹس انتہائی قابل منتقلی ہیں کیونکہ وہ پچھلے انفیکشنز کی قوت مدافعت سے بچنے کے قابل ہیں اور مکمل طور پر ویکسین شدہ افراد بھی ان سے متاثر ہو سکتے ہیں۔ اس کا مطلب ہے کہ دوبارہ انفیکشن کے معاملات بھی بڑھ سکتے ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Mumbai | Jammu | Delhi Cantonment | Hyderabad | Lucknow
    • Share this:
      انتہائی متعدی وائرس اومی کرون (Omicron) کی ذیلی قسموں یعنی ویرینٹس کا ایک سلسلہ پورے ملک میں تیزی سے پھیل رہا ہے جس سے ہندوستان میں کورونا وائرس کی تازہ لہر سے لوگ خوفزدہ ہو رہے ہیں۔ اومی کرون ایکس بی بی کے دو ویرینٹس BA.2.10.1 اور BA.2.75 میں تازہ ترین اضافہ ہوا ہے۔ لگتا ہے کہ کورونا وائرس وقت کے ساتھ ساتھ شدت اختیار کرتا جارہا ہے اور نئے ویرینٹس کی علامات اصل اومی کرون سے قدرے مختلف ہیں۔

      انڈین سارس کو ۔2 جینومکس کنسورشیم (INSACOG) نے حال ہی میں نوٹ کیا ہے کہ کووڈ۔19 کے اومی کرون کے سب ویرینٹ ایکس بی بی سے متاثرہ ہندوستانی مریضوں میں ہلکی بیماری کی علامات ہیں اور اس کی شدت میں کوئی اضافہ نہیں ہوا ہے۔ اسی تناظر میں لوگوں کو کورونا سے متعلق احتیاط کا مشورہ دیا جاتا ہے۔

      ڈاکٹروں کے مطابق نئے اومی کرون کے ویرینٹس انتہائی قابل منتقلی ہیں کیونکہ وہ پچھلے انفیکشنز کی قوت مدافعت سے بچنے کے قابل ہیں اور مکمل طور پر ویکسین شدہ افراد بھی ان سے متاثر ہو سکتے ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں: 


      اس کا مطلب ہے کہ دوبارہ انفیکشن کے معاملات بھی بڑھ سکتے ہیں۔ سر درد، خشک کھانسی، بند ناک، تھکاوٹ، چکر آنا، جسم میں درد یہ تمام علامات اومی کرون کی مختلف حالتوں کی وجہ سے ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: