اپنا ضلع منتخب کریں۔

    جشن یوم جمہوریہ کےدوران طاقت و قوت کا شاندار مظاہرہ، ہندوستان و مصر کی فوج کاعظیم الشان پریڈ

    ان مظاہروں کے دوران ہندوستان کی فوجی طاقت اور تنوع کو ظاہر کیا جاتا ہے۔

    ان مظاہروں کے دوران ہندوستان کی فوجی طاقت اور تنوع کو ظاہر کیا جاتا ہے۔

    اس بار اولین دستوں میں کئی ریاستوں کے دستوں کو بھی جگہ دی گئی ہے۔ سینٹرل ریزرو پولیس فورس کا ایک آل ویمن مارچنگ دستہ بھی شامل رہا۔ مصری مسلح افواج کا ایک مشترکہ بینڈ اور مارچ کرنے والا دستہ 105 ملی میٹر ہندوستانی فیلڈ گن کے ساتھ رسمی سلامی میں شریک رہا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      Republic Day 2023: ٹینک، میزائل، مارچنگ دستے اور ثقافتی ٹیب ٹیبلوکس نے ہندوستان کی فوجی طاقت اور تنوع کو ظاہر کیا۔ یوم جمہوریہ کی پریڈ کے کلپس نے ملک کے عوام میں ایک نیا جوش و خروش پیدا کیا ہے۔ دہلی میں یوم جمہوریہ کی تقریبات کا آغاز صدر دروپدی مرمو نے روایت کے مطابق قومی پرچم لہرانے کے ساتھ کیا، جس کے بعد 21 توپوں کی سلامی کے ساتھ قومی ترانہ گایا گیا۔

      اس بار کے بہت سے اولین دستوں میں سینٹرل ریزرو پولیس فورس کا ایک آل ویمن مارچنگ دستہ، مصری مسلح افواج کا ایک مشترکہ بینڈ اور مارچ کرنے والا دستہ، 105 ملی میٹر ہندوستانی فیلڈ گن کے ساتھ رسمی سلامی اور پہلی کھیپ کے اگنیور شامل رہے۔جنھوں نے شاندار پیمانے پر اپنی کارکردگی دکھائی ہے۔ مصری صدر عبدالفتاح السیسی ہندوستان کے یوم جمہوریہ کی تقریبات میں شرکت کے لیے عالمی رہنماؤں کے ایک منتخب گروپ میں شامل ہوئے۔ سیسی نے یوم جمہوریہ کی تقریبات میں مہمان خصوصی کے طور پر صدر دروپدی مرمو، وزیر اعظم نریندر مودی اور دیگر لیڈروں کے ساتھ شاندار کارتویہ پاتھ پر رنگا رنگ پریڈ کو دیکھا۔

      فوجی طاقت کا مظاہرہ:

      جیسے ہی ہندوستان نے جمعرات کو اپنا 74 واں یوم جمہوریہ منایا، دہلی کے کارتاویہ پاتھ میں دیسی ساختہ ہائی ٹیک آلات سے لیس مسلح افواج کی صلاحیتوں کا مشاہدہ کیا گیا۔ جمہوریہ پریڈ 2023 کا آغاز مصری مسلح افواج کے ایک دستے کے مارچ سے ہوا۔ 61 کیولری کی وردی میں پہلے دستے کی قیادت کیپٹن رائزادہ شوریہ بالی نے کی۔

      یہ بھی پڑھیں: 

      وہیں 61 کیولری دنیا کی واحد فعال ہارس کیولری رجمنٹ ہے، جس میں تمام اسٹیٹ ہارس یونٹس کا امتزاج ہے۔

      اس سال یوم جمہوریہ کی پریڈ میں صرف میڈ ان انڈیا ہتھیاروں کی نمائش کی گئی جس میں گولہ بارود کے تحت ہندوستان کی دیسی بنانے کی طاقت کا مظاہرہ کیا گیا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: