உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    تیرتھ سنگھ کے پھٹی جینس والے بیان پر خواتین نے دئے ایسے رد عمل، بولیں سی ایم صاحب سوچ بدلو، تبھی۔۔۔

    وزیر اعلی تیرتھ سنگھ راوت نے کہا تھا کہ نوجوانوں نے عجیب و غریب فیشن کرنا شروع کردیا ہے

    وزیر اعلی تیرتھ سنگھ راوت نے کہا تھا کہ نوجوانوں نے عجیب و غریب فیشن کرنا شروع کردیا ہے

    اتراکھنڈ (Uttarakhand) کے وزیر اعلی تیرتھ سنگھ راوت (Tirath Singh Rawat) کے ذریعے نوجوانوں کے پھٹی جینس پہننے کے سلسلے میں بیان پر اپوزیشن جماعتوں نے شدید رد عمل کا اظہار کیا ہے۔ پارٹیوں کا مطالبہ ہے کہ وزیر اعلی خواتین سے معافی مانگیں۔

    • Share this:
      نئی دہلی: اتراکھنڈ (Uttarakhand) کے وزیر اعلی تیرتھ سنگھ راوت (Tirath Singh Rawat) کے ذریعے نوجوانوں کے پھٹی جینس پہننے کے سلسلے میں بیان پر اپوزیشن جماعتوں نے شدید رد عمل کا اظہار کیا ہے۔ پارٹیوں کا مطالبہ ہے کہ وزیر اعلی خواتین سے معافی مانگیں۔ سی ایم تیرتھ راوت کے بیان پر ترنمول کانگریس کے لیڈر اور لوک سبھا ممبر پارلیمنٹ مہوا موئترا (Mahua Moitra) نے تبصرہ کیا ہے۔ ایک ٹویٹ میں راوت پر حملہ کرتے ہوئے موئترا نے لکھا ، "کیا آپ اتراکھنڈ کے سی ایم-این جی او چلاتے ہو اور گھٹنے پھٹے نظر آتے ہیں؟" سی ایم ساب، آپ ریاست چلاتے ہیں اور دماغ پھٹے دکھتے ہیں۔ 'وہیں شیوسینا کی رکن اسمبلی پرینکا چترودی نے بھی تیرتھ سنگھ راوت کے اس بیان پر تبصرہ کیا۔ پرینکا چترویدی نے لکھا ہے کہ ملک کی ثقافت اور تہذیب پر ان آدمیوں سے فرق پڑتا ہے جو خواتین اور ان کے لباس کو جج کرتے ہیں۔ سوچ بدلو وزیر اعلی جی، تبھی ملک بدلے گا۔

      اتراکھنڈ کے سی ایم نے کیا کہا تھا؟
      دراصل منگل کو ایک پروگرام کے دوران وزیر اعلی تیرتھ سنگھ راوت نے کہا تھا کہ نوجوانوں نے عجیب و غریب فیشن کرنا شروع کردیا ہے اور گھٹنوں پر پھٹی جینس پہن کر خود کو بڑے باپ کا بیٹا سمجھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ لڑکیاں بھی اس طرح کے فیشن میں زیادہ پیچھے نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آج کل بچے گھٹنوں پر سے پھٹی ہوئی جینس خریدنے بازار جاتے ہیں اور اگر پھٹی جینس نہ ملے تو قینچی سے اسے کاٹ لیتے ہیں۔

      انہوں نے اس سلسلے میں ایک واقعے کا بھی ذکر کیا اور بتایا کہ ایک مرتبہ جب وہ ہوائی جہاز میں بیٹھے تو ان کے ساتھ ایک خاتون بیٹھی تھی جو گم بوٹ پہنے ہوئے تھی، ان کی جینس گھٹنوں پر سے پھٹی ہوئی تھی، ہاتھوں میں کئی چوڑیاں تھیں اور ان کے ساتھ دو بچے بھی تھے۔ راوت نے کہا کہ وہ این جی او چلاتی ہیں جو سماج کے درمیان جاتی ہیں اور خود ان کے دو بچے ہیں لیکن گھٹنے پھٹے ہوئے ہیں۔ تو ایسے میں وہ کیا تہذیب دیں گی۔

      اس سے پہلے اتراکھنڈ کانگریس ترجمان گریما دسونی نے کہا کہ سی ایم جیسے قد کے شخص کو کسی پہناوے پر ایسے تبصرے کرنا بالکل بھی شعبہ نہیں دیتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ راوت نے ایک ایک غیر مہذب اور گندہ تبصرہ کیا ہے۔ سی ایم ہونے سے آپ کو یہ حق نہیں مل جاتا کہ آپ کسی کے نجی پہناوے پر تبصرہ کریں۔ انہوں نے سی ایم کو ایسے بیانات سئ بچنے کی صلاح دی اور کہا کہ ان سے عوام کے جذبات کو ٹھیس پہنچتی ہے۔

      اتراکھنڈ میں پیر پسارنے کی کوشش کر رہی عام آدمی پارٹی نے بھی وزیر اعلی کے اس بیان کو 'بھدا تبصرہ' قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ چیف منسٹر کو لڑکیوں کو جینس پہننے پر اعتراض ہے۔ اتراکھنڈ اے اے پی نے سوشل میڈیا پر اپنے آفیشل پیج پر لکھا ہے ، 'یہ دیکھو بیٹیاں ، یہ ہیں آپ کے وزیر اعلی جنہوں نے آپ کے کپڑوں پرطنز کسنا ہے، لعنت ہے ایسے وزیر اعلی پر'

      (بھاشا ان پٹ کے ساتھ)۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: