உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    لاپتہ طیارہ کے بارے میں ابھی تک کوئی ثبوت نہیں ملا : منوہر پاریکر

    مسٹر پاریکر نے لوک سبھا میں لاپتہ طیارہ کے بارے میں اپنی طرف سے دئے گئے بیان میں کہا کہ طیارہ کا پتہ لگانے کے لئے بحریہ ، کوسٹ گارڈ اور فضائیہ مشترکہ طور پر مہم چلا رہی ہیں

    مسٹر پاریکر نے لوک سبھا میں لاپتہ طیارہ کے بارے میں اپنی طرف سے دئے گئے بیان میں کہا کہ طیارہ کا پتہ لگانے کے لئے بحریہ ، کوسٹ گارڈ اور فضائیہ مشترکہ طور پر مہم چلا رہی ہیں

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی : وزیر دفاع منوہر پاریکرنے آج کہا کہ فضائیہ کے لاپتہ طیارہ این این 32 کا پتہ لگانے کی ہر ممکن کوشش کی جارہی ہے لیکن ابھی تک اس سلسلے میں کوئی ٹھوس ثبوت نہیں ملا ہے۔ مسٹر پاریکر نے لوک سبھا میں لاپتہ طیارہ کے بارے میں اپنی طرف سے دئے گئے بیان میں کہا کہ طیارہ کا پتہ لگانے کے لئے بحریہ ، کوسٹ گارڈ اور فضائیہ مشترکہ طور پر مہم چلا رہی ہیں۔
      اس تلاشی مہم میں جاسوس طیاروں کے ساتھ ساتھ آبدوزوں کی مدد بھی لی جارہی ہے۔ اس مہم کے تحت اب تک 401گھنٹے میں 99پروازیں کی جاچکی ہیں ۔ اس کے علاوہ بحریہ کے پانچ ہیلی کاپٹروں ، ایک اے این 32طیارہ ، دو سی 130طیارہ اور فضائیہ کے دو ایم آئی 17ہیلی کاپٹروں کو بھی لگایا گیا ہے۔
      انہوں نے بتایا کہ طیارہ کا پتہ لگانے کے لئے کارٹو سیٹ سیٹلائٹ کی بھی مدد لی جارہی ہے ۔ تما م ذرائع سے موصول اطلاعات کی بنیاد پر تیل چکنائی والے تین علاقوں، پانچ آوازو ں اور 22تیرتی ہوئی چیزوں کی جانچ کی گئی ہے لیکن ابھی تک لاپتہ طیارے کے بارے میں کوئی ٹھوس ثبو ت نہیں ملا ہے۔
      اس سے قبل آج پارلیمنٹ نے اس طیارہ حادثے پر تشویش کااظہار کیا گیا ۔ لوک سبھا میں اراکین نے اس پر تشویش ظاہر کی اور حکومت سے بیان دینے کا مطالبہ کیا۔ بی جے ڈی کے بھرتری ہری مہتاب اور کانگریس کے دیپیندر ہوڈا نے وقفہ صفر میں یہ معاملہ اٹھایا۔
      First published: