ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے زیر اہتمام اٹھارہواں کل ہند مسابقہ حفظ وتجوید وتفسیرقرآن کریم اختتام پذیر

اگرہم قرآن کی تعلیمات کوصحیح معنوں میں اپنالیں توانسانیت کی کایا پلٹ سکتی ہے او رپوری انسانیت اس کی برکتوں سے مستفید ہوسکتی ہے : امیر مولانا اصغر علی امام مہدی سلفی

  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے زیر اہتمام اٹھارہواں کل ہند مسابقہ حفظ وتجوید وتفسیرقرآن کریم اختتام پذیر
مولانا اصغر علی امام مہدی سلفی پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے ۔

دہلی : اگرہم قرآن کی تعلیمات کوصحیح معنوں میں اپنالیں توانسانیت کی کایا پلٹ سکتی ہے او رپوری انسانیت اس کی برکتوں سے مستفید ہوسکتی ہے۔ قرآن کریم کی تلاوت کرلینا یااس کو حفظ کرلیناسعادت کی بات ہے مگریہ کافی نہیں ہے بلکہ اس کو اپنی رگ وپے میں بسانے اور اس کی تعلیمات کے مطابق زندگی گزارنے ہی سے اس کا حق ادا ہوسکتاہے۔ اس کی انسانیت نواز تعلیمات اور امن وشانتی کے پیغام کو پوری انسانیت کے سامنے اللہ کے لیے پیش کرنے کی ضرورت ہے۔کیونکہ اس کا پیغام اورتعلیمات کسی خاص قوم ونسل یا خطہ ارضی کے باشندوں کے ساتھ مخصوص نہیں ہیںبلکہ پوری انسانیت کے لیے عام ہیں۔ان خیالات کا اظہار مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے امیر مولانا اصغر علی امام مہدی سلفی نے اپنے صدارتی خطاب میں کیا۔وہ 18 ویں آل انڈیا مسابقہ حفظ تجویدوتفسیر قرآن کریم کے اختتامی اجلاس سے خطاب کررہے تھے۔

مولانا نے اپنے صدارتی خطاب میں شرکائے مسابقہ سے کہا کہ آپ لوگوںنے اپنے سینوںمیں قرآن کریم کی دولت کومحفوظ کیا ہے اس کے لیے آپ مبارکباد کے مستحق ہیں ۔آپ حضرات اپنے مقام ومرتبے کو پہچانیں اور اللہ جل شانہ کے انسانیت کے نام پیغام ودستور یعنی قرآن کریم سے وابستگی پرفخر محسوس کریں۔ہم جملہ ذمہ داران جمعیت آپ تمام شرکاء مسابقہ وحکم حضرات کا تہہ دل سے اس میں شرکت کے لیے شکریہ ادا کرتے ہیں اوربارگاہ رب دوعالم میںدست بدعا ہیں کہ وہ ہم سب کو قرآن کریم کی تعلیمات پرعمل کرنے والا اورکماحقہ اس کی خدمت انجام دینے والا بنادے۔

مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے ناظم عمومی مولانا محمد ہارون سنابلی نے صوبائی جمعیتوں وملی تنظیموں کے ذمہ داران سے اظہار تشکر کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند یہ مسابقہ علماء اورعوام کے اندر حوصلہ وجذبہ پیدا کرنے کے لئے منعقد کرتی رہی ہے۔ انہوںنے کہا کہ ہرمسلمان کو قرآن کے مقام ومرتبہ کو جاننا اورپہچانناچاہیے ۔ انہوںنے قرآن کی روشنی میں زندگی سنوارنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ اس دورمیں جب کہ لوگوں کے اندر مختلف قسم کی غلط فہمیاں پھیلی ہوئی ہیں اوردشمنان اسلام ماحول کو مزیدخراب کرنے کی کوشش کررہے ہیں ایسے میںقرآن کریم کا تعارف کرانے اور اس کی تعلیمات کو پھیلانے اوران کو اپنی زندگیوں میں نافذ کرنے کی شدیدضرورت ہے۔


پروگرام میں شرکا کا ایک منظر
پروگرام میں شرکا کا ایک منظر


مسابقہ میں امتیازی پوزیشن لانے والے سبھی چھ زمروں کے جملہ شرکاء کو تشجیعی نقدانعام، بیش قیمت کتابوں کا تحفہ اورتوصیفی اسناد سے نوازاگیا۔ اس مسابقہ میںہندوستان کے طول وعرض سے تقریبا 800 طلبہ متعدد اداروں کی نمائندگی کرتے ہوئے شریک ہوئے۔مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے خازن الحاج وکیل پرویزنے آحر میں جملہ شرکاء مسابقہ،حکم حضرات، طلبہ، مقررین، مہمانان گرامی کاشکریہ اداکیا اوررات گیارہ بجے اسی پر اس نورانی محفل کا اختتام ہوا۔
First published: Jul 30, 2018 07:51 PM IST