ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

آسام شہریت معاملہ پرعدالت میں سماعت امید افزا : مولانا ارشدمدنی

آج سپریم کورٹ میں جسٹس رنجن گگوئی اور جسٹس ایف نریمن پر مشتمل دورکنی بینچ کے سامنے آسام این آرسی مقدمات کی سماعت ہوئی۔

  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
آسام شہریت معاملہ پرعدالت میں سماعت امید افزا : مولانا ارشدمدنی
مولانا سید ارشد مدنی: فائل فوٹو

آج سپریم کورٹ میں جسٹس رنجن گگوئی اور جسٹس ایف نریمن پر مشتمل دورکنی بینچ کے سامنے آسام این آرسی مقدمات کی سماعت ہوئی۔ جمعیۃعلماء ہند ، آمسو، کی طرف سے سینئر وکیل اندراجے سنگھ اور سینئر ایڈوکیٹ سلمان خورشید وکیل آف آن ریکارڈ فضیل ایوبی کے ساتھ میں آسام ہائی کورٹ کے سینئر ایڈوکیٹ مصطفی خدام حسین اور ایڈوکیٹ عبدالصمد پیش ہوئے ، بینچ نے این آرسی پر سماعت کرتے ہوئے کہا کہ جو طریقہ کار کلیم اور آبجکشن کے لئے بھارت سرکار نے داخل کیا ہے اس سے متعلق مقدمہ میں شامل تمام فریقین اپنی رائے کااظہارکریں، قابل ذکر ہے کہ یہ طریقہ کار حکومت ہند ، حکومت آسام ، سپریم کورٹ کے نامزدکرہ اسٹیٹ کوآڈینیٹر پرتیک ہزیلااور رجسٹرارجنرل آف انڈیا نے مل کر پیش کیا ہے ۔

جمعیۃعلماء ہند کے صدر مولانا سید ارشدمدنی نے آج کی پیش رفت پر اطمینان کا اظہارکرتے ہوئے کہاکہ آج بہت امید افزابات یہ ہوئی ہے کہ فاضل عدالت نے این آرسی سے متعلق طریقہ کار تمام فریقین کو اپنی بات رکھنے اور رائے کا اظہار کرنے کا موقع فراہم کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس سے صاف ظاہر ہے کہ آسام شہریت کے معاملہ کولیکر عدالت بے حد سنجیدہ ہے ، مولانا مدنی نے کہا کہ ہمارے وکلاء طریقہ کارکے مسودہ کا گہرائی سے مطالعہ کرکے عدالت کے سامنے اپنا موقف رکھیں گے۔ امید کی جانی چاہئے کہ فریقین کی طرف سے جو اعتراضات ہوں گے ان کے مطابق عدالت کی ہدیت پر طریقہ کار کے متن میں تبدیلی لائی جائے گی ۔

انہوں نے کہا کہ آسام شہریت کا معاملہ بے حد حساس اور اہمیت کا حامل ہے اس لئے ملک کے تمام انصاف پسند بالخصوص اقلتیں سپریم کورٹ کی طرف امید بھری نظروں سے دیکھ رہی ہے ، کیونکہ انہیں اس بات کا مکمل یقین ہے کہ عدالت کے فیصلہ سے متاثرین کو راحت ملے گی اور وہ حقیقی شہری ہوتے ہوئے بے وطن ہونے سے بچ جائیں گے۔

واضح ہوکہ آج سماعت کے دوران جمعیۃعلماء صوبہ آسام کے صدرمولانا مشتاق عنفر اپنے رفقاء اور وکلاء کی ٹیم کے ساتھ عدالت میں موجودتھے ۔ انہوں نے بھی آج کی پیش رفت پر مسرت کا اظہا رکیا ہے ۔باور ہوکہ جمعیۃعلماء صوبہ آسام بھی اس معاملہ میں ابتداء ہی سے پورے اخلاص کے ساتھ سرگرم عمل ہے ۔

First published: Aug 16, 2018 09:32 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading