ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

شمس الدین ماب لنچنگ کیس میں جھارکھنڈ عدالت کے فیصلہ کا مولانا سید ارشد مدنی نے کیا خیر مقدم

جمعیۃ علماء ہند کے صدر مولانا سید ارشد مدنی نے ہجومی تشدد اور قتل کے ایک معاملے میں جھارکھنڈ کی ایک مقامی عدالت کے ذریعہ دےئے گئے فیصلہ کا نہ صرف خیر مقدم کیا ہے بلکہ اسے ایک تاریخی فیصلہ قرار دیا ہے ۔

  • Share this:
شمس الدین ماب لنچنگ کیس میں جھارکھنڈ عدالت کے فیصلہ کا مولانا سید ارشد مدنی نے کیا خیر مقدم
جمعیۃ علما ہند کے صدر مولانا ارشد مدنی: فائل فوٹو۔

نئی دہلی : جمعیۃ علماء ہند کے صدر مولانا سید ارشد مدنی نے ہجومی تشدد اور قتل کے ایک معاملے میں جھارکھنڈ کی ایک مقامی عدالت کے ذریعہ دےئے گئے فیصلہ کا نہ صرف خیر مقدم کیا ہے بلکہ اسے ایک تاریخی فیصلہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ قانون اورانصاف میں لوگوں کا یقین بنائے رکھنے کے لئے اس طرح کے بہیمانہ واقعہ میں اسی طرح کے سخت فیصلے کی اشد ضرورت تھی۔


قابل ذکر ہے کہ جھارکھنڈ کے ایک گاؤں میں شمس الدین انصاری نامی ایک شخص کو ایک ہجوم نے محض افواہ کی بنیاد پر انتہائی بے دردی سے پیٹ پیٹ کر ہلاک کردیاتھااس معاملے میں جن دس لوگوں کو ملزم بنایاگیا تھا انہیں عدالت نے عمر قید کی سزا سنائی ہے۔ مولانا مدنی نے کہا کہ یہ فیصلہ اس طرح کے دوسرے معاملوں میں بھی ایک نظیر بن سکتا ہے۔اس لئے کہ ملک بھر میں کئی مقامات پر افواہوں کی بنیاد پر متعدد بے گناہوں کو ہجومی تشدد کی شکار بنایاگیا ہے۔


انہوں نے کہا کہ ہندوستان جیسے ملک میں جہاں صدیوں سے مختلف مذاہب کے لوگ شیروشکرہوکر رہتے آئے ہیں ہجومی تشدد ایک خطرناک رویہ ہے۔مولانا مدنی نے کہا کہ جھارکھنڈ کی عدالت کے اس فیصلے سے انصاف کا سربلند ہواہے۔ ہم اس کا تہہ دل سے خیرمقدم کرتے ہیں اور امید کرتے ہیں کہ دوسرے معاملوں میں بھی مجرموں کو اسی طرح قانون کے کٹہرے میں کھڑا کرکے قانون و انصاف کو سر بلند کیا جائے گا۔

First published: Apr 26, 2018 01:18 AM IST